صرف 36 سال کی عمر میں 44 بچے کیسے ہوگئے؟

Mariam Nabatanzi ایک ایسی نایاب جینیاتی بیماری کا شکار ہیں جس نے انہیں صرف 36 سال کی عمر میں ہی 44 بچوں کی ماں بنا دیا ہے-
 


افسوسناک بات یہ ہے کہ یوگینڈا سے تعلق رکھنے والی مریم اس وقت اپنے 44 بچوں کو اکیلے پال رہی ہیں کیونکہ ان کے شوہر 4 سال قبل ہی انہیں چھوڑ کر جاچکے ہیں-

مریم نے ایک ساتھ 3 بار چار بچوں کو٬ 4 بار 3 بچوں کو اور 6 بار جڑواں بچوں کو جنم دیا اور اب وہ اکیلی ان تمام بچوں کی دیکھ بھال کرتی ہیں-
 


مریم کی جب شادی ہوئی اس وقت ان کی عمر صرف 12 سال تھی جبکہ ان کے شوہر کی عمر 40 سال یعنی ان دونوں کے درمیان 28 سال کا فرق تھا-

اس وقت مریم اپنے 44 بچوں کے ساتھ 4 شکستہ گھروں میں رہنے پر مجبور ہیں جو کہ سیمنٹ کی اینٹوں سے تیار کردہ ہیں-
 


ان کی رہائش گاہ کافی کے کھیتوں سے گھری ہوئی ہے-

صرف 23 سال کی عمر میں مریم 25 بچوں کی ماں بن چکی تھیں اور وہ چاہتی تھیں کہ ڈاکٹر ان کے اس مسئلے کا حل تلاش کریں- لیکن اس کا کوئی ایسا حل موجود نہیں تھا-
 


مریم کا کہنا ہے کہ “ میرا سارا وقت اپنے بچوں کی دیکھ بھال اور ان کے لیے روزی روٹی کمانے میں گزرتا ہے“-

یوگینڈا کے Mulago Hospital اسپتال کے گائنالوجسٹ ڈاکٹر Charles Kiggundu کا کہنا ہے کہ “ مریم hyper-ovulate کی بیماری کا شکار ہیں جو کہ ایک جینیاتی بیماری ہوتی ہے“-

Reviews & Comments

Language:    
Mariam Nabatanzi suffers from a rare genetic condition and had given birth to 44 children by the age of 36. Tragically, Mariam has been left to raise her massive family alone after her husband walked out on her almost four years ago.