درد جدائی .....قسط ٣٢

(Shafaq kazmi, Karachi)

درد جدائی ۔۔۔۔قسط ۔٣٢ ....مصنفہ شفق کاظمی

نوٹ رائیٹر کی اجازت کے بغیر پوسٹ کرنا منع ہے ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔
عدن بیٹا بات سنو ۔۔۔۔ ہم لوگ انگلینڈ جا رہے ہیں ۔۔۔۔آج رات کو تیاری کر لو ۔۔۔۔۔

پر ماما انگلینڈ کیوں ؟؟ خیریت مامو تو ٹھیک ہے نہ ۔۔۔۔۔

جی بیٹا مامو ٹھیک ہے ۔۔۔۔بس کچھ ٹائم کے لئے ہم انگلینڈ چلے جاتے ہیں ۔۔۔۔ابھی تمہارے پیچھے بھی وہ لوگ لگے ہیں ۔۔بیٹا ۔۔۔میں نہیں چاہتی تم کسی مصیبت میں دوبارہ پڑھ جاؤ ۔۔۔۔۔

لیکن ماما بابا ۔۔۔۔۔۔۔۔

تمہارے بابا بہت جلد اپنے انجام تک پہنچ جائیں گے ۔۔۔بے فکر رہو عدن میں تمہارا دشمن۔ نہیں ہوں ۔۔میں جانتا ہوں تمہارے بابا نے راء کے لئے کام کیا وہ ایک غدار وطن ہے ۔۔۔۔معید نے عدن کو سمجھانے والے لہجے سے کہا ۔۔۔۔۔۔
لیکن میں تمہیں نہیں جانتی ۔۔۔۔اور تم بابا کے بارے میں کیسے جانتے ہو۔ اتنا سب کچھ ۔۔۔۔۔

عدن کہا نہ تمہارے بابا کا دوست ہوں ۔۔۔۔اور جب تمہارے بابا اپنے انجام تک پہنچ جائیں گے تب تمہیں میرے بارے میں بھی پتہ چل جاۓ گا ۔۔۔۔۔۔۔ابھی میں زیادہ کچھ نہیں بتا سکتا میرا بھروسہ کرو یہاں رہنا خطرے سے خالی نہیں ہے ۔۔تم لوگوں کا یہاں سے چلے جانا ہی بہتر ہے ۔۔۔۔۔۔جب تک حالات کچھ ٹھیک نہیں ہوتے تم لوگ انگلینڈ ہی رہو ۔۔۔،ابھی آستین کے سانپ پیچھے لگے ہیں جو بظاہر تمہارے نظر آتے ہیں پر در حقیقت ان حرام خوروں سے ملے ہوۓ ہیں۔۔۔

لیکن ماما غزان۔۔۔۔ماما غزان کو تو بتا دیں اس کو بغیر بتاۓ نہیں جانا میں نے ۔۔۔۔۔۔۔

بیٹا میری غزان سے بات ہو گئی ہے ۔۔۔۔میں نے اسے سب کچھ بتا دیا ہے ۔۔۔۔۔۔

ماما غزان کو سب پتہ ہے ۔۔۔۔

جی بیٹا ۔۔۔۔۔۔

ہممم ۔۔۔۔

عدن رونے کا کوئی فائدہ نہیں ہمّت سے کام لو جانتا ہوں بہت مشکل وقت ہے آپ لوگوں کے لئے پر اللّه آپ لوگوں کو ہمّت دے آمین ۔۔۔۔میں آپ دونو کو ائیرپورٹ چھوڑ کر خود آؤں گا۔۔۔۔۔۔۔۔ ڈرائیور اور کسی پر بھی بھروسہ نہیں کرنا ہے ۔۔۔۔۔۔اور کسی کو فلحال نہیں بتاؤ کے انگلینڈ جا رہے ہیں ۔۔۔۔کچھ ٹائم کے لئے سب کی نظروں سے دور رہو ۔۔۔۔۔ جب تک آستین کے سانپ پکڑے نہیں جاتے۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔
وہ عجلت بھرے انداز میں گاڑی سے نکل کر ہسپتال میں داخل ہوا ۔۔۔کیپٹن حسین بلیو کیٹ اور بلیک ٹاٸیگر بھی اس کے ہمراہ تھے ۔۔۔۔۔سر کیا کرنے والے ہیں ۔۔۔میں کچھ سمجھا نہیں کیپٹن حسین ٹاٸیگر سے پوچھنے لگا ۔۔۔۔ٹاٸیگر نے گھور کر آنکھوں کے اشارے سے اسے خاموش رہنے کا کہا ۔۔۔۔۔جیسے ہی وہ عریب کے کمرے میں داخل ہوۓ ۔۔۔۔حسین نے فوراً برگیڈیٸر عریب کو سلیوٹ کیا ۔۔۔اور مٶدب انداز میں ایک طرف کھڑا ہو گیا ۔۔۔۔۔ٹاٸیگر اور غزان سپاٹ انداز میں کھڑے رہے ۔۔۔۔
کیا ہوا غزان بیٹے ۔۔۔۔؟ادھر آٶ میرے پاس ۔۔۔۔سب ٹھیک تو ہے نہ عریب کو غزان کا رویہ کھٹکا ۔۔۔تو غزان سے بولے ۔۔۔۔حسین تمہیں اس طرح ان کے احترام میں کھڑے ہونے کی ضرورت نہیں ۔۔۔۔ان کو یہ عزت راس نہیں آٸ ۔۔۔۔کیوں عریب عارف صیح کہا نہ میں نے ۔۔۔۔غزان زہریلے انداز میں عریب سے مخاطب ہوا ۔۔۔۔۔عریب کو شدید گڑبڑ کا احساس ہوا تو اپنا پسٹل اٹھانے کیلۓ ہاتھ بڑھایا ۔۔۔۔۔
ہم نے کبھی کچی گولیاں نہیں کھیلیں ۔۔۔۔تم جانتے ہو ۔۔۔غدار صرف غدار ہوتا ہے ۔۔۔۔تم آج سے صرف غدار ہو ۔۔۔اس دھرتی سے اور ہم سے تمہارا کوٸ رشتہ نہیں ۔۔۔۔یہی گن ڈھونڈ رہے تھے نہ تم ۔۔۔۔۔۔عریب اپنی گن غزان کے ہاتھ میں دیکھ کر بوکھلا گیا تھا ۔۔۔۔بلیو کیٹ ان کو آرام کی ضرورت ہے ۔۔۔۔میرا خیال ہے ان کو میڈیسن دے دو پہلے ۔۔۔غزان کیٹ سے مخاطب ہوا۔۔۔۔۔یہ کیا کر رہے ہو غزان ۔۔۔تمہیں یہ سب کچھ بہت مہنگا پڑے گا ۔۔۔۔کیٹ تم نے سنا نہیں ۔۔۔۔؟ غزان عریب کی آنکھوں میں دیکھتے ہوۓ غرایا تھا ۔۔۔
کیٹ نے پلک جھپکتے ہی عریب کے بازو میں نیلے محلول سے بھرے انجیکشن کی سرنج لگا دی تھی ۔۔۔۔پلک جھپکتے ہی ۔۔عریب بے ہوش ہوگیا تھا۔۔۔
اس کو بھی وہیں لے چلو ۔۔جہاں باقی سب ہیں ۔۔۔۔اور ہاں آج سے یہ مشن مکمل ہو گیا ۔۔۔۔
اب مجھے ڈاٸیریکٹ ڈاٸریکٹر جنرل صاحب کو مشن کے بارے رپورٹ کرنا ہے ۔۔۔۔۔۔غزان ان سب سے کہتے ہوۓ وہاں سے ۔۔۔عجلت بھرے انداز میں نکلتا چلا گیا ۔۔۔۔

)جاری ہے )

 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 275 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Shafaq kazmi

Read More Articles by Shafaq kazmi: 78 Articles with 27492 views »
میرا نام شفق کاظمی ہے ۔۔۔۔میں کراچی سے ہوں ۔۔۔۔میں آفیشل۔ لیکھاری ہوں ۔۔۔نیوز پیپر میں بھی لکھ رہی ہوں ۔۔۔اس کے ساتھ ساتھ میں شاعری بھی کرتی ہوں .. View More

Comments

آپ کی رائے
Language: