درد جدائی .....قسط 33

(Shafaq kazmi, Karachi)

درد جدائی ۔۔۔۔قسط 33 .......مصنفہ شفق کاظمی

نوٹ رائیٹر کی اجازت کے بغیر پوسٹ کرنا منع ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

چلو عدن ایئر پورٹ آگیا ہے ۔۔۔۔عدن گہری سوچ میں بیٹھی تھی ادھر ادھر سے لا تعلق تھی ۔۔۔۔۔۔باپ تو باپ ہوتا ہے نہ انسان جتنا بھی بہادر بن جاۓ ۔۔لیکن کبھی کبھی ہار جاتا ہے۔۔۔نہ جانے کیوں قسمت عدن کو ہر وقت امتحان میں ڈال دیتی تھی۔۔۔

عدن بیٹا ایئر پورٹ آگیا ہے عفاف نے عدن کو جھنجھوڑا عدن بوکھلا گئی ۔۔

ک۔ ۔۔کیا ۔۔۔۔۔۔عدن نے گاڑی کے باہر دیکھا۔۔۔ایئر پورٹ آگیا تھا ۔۔۔ عدن کچھ کہے بغیر خاموشی سے اتر گئی ۔۔۔۔۔۔۔ جب انسان اندر سے بے حد اداس ہو ۔۔۔۔تب اس کا دل نہیں کرتا کوئی کچھ بولے اس سے۔۔۔۔۔ وہ بہت خاموش ہو جاتا ہے۔۔۔۔۔۔۔

جہاز میں جانے کا اعلان ہو رہا تھا ۔۔۔۔کچھ دیر بعد عدن جہاز میں آگئی ۔۔۔۔۔۔

خوش آمدید میڈم ۔۔۔۔اپنی ٹکٹ دیکھائیں ۔۔۔۔۔عدن نے غور ہی نہیں کیا ایئر ہوسٹس پر ۔۔۔۔۔وہ اتنی الجھنوں کا شکار تھی اسے سمجھ نہیں آرہی تھی کیا ہو رہا ہے یہ سب ۔۔۔۔ایئر پورٹ میں بھی عفاف نے عدن کی انگلی ایسے پکڑی تھی جسے چھوٹی سی بچی ہو ۔۔۔۔۔


عدن ٹکٹ دیکھاوّ ۔۔۔۔۔۔

اوہ اوہ ہاں ۔۔۔۔۔۔ی۔۔۔۔یہ لیں ٹیکٹ ۔۔۔۔عدن بوکھلا کر بولی ۔۔۔اور ایئر ہوسٹس کے ہاتھ میں ٹیکٹ تھما دی ۔۔۔۔۔


میم ٹھیک ہے ۔۔۔۔۔وہ سامنے والی آپ لوگوں کی سیٹ ہے ۔۔۔۔۔۔۔ایئر ہوسٹس نے سیٹ کی طرف اشارہ کرتے ہوۓ کہا ۔۔۔۔۔۔۔

ہممم شکریہ۔۔۔۔۔۔۔عدن کھڑکی والی سائیڈ پر بیٹھ گئی ۔۔۔۔خاموشی سے ۔۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔
معزز مسافرین فلائٹ 44890 میں خوش آمدید برائے مہربانی اپنی سیٹ بیلٹس باندھ لیجئے ۔۔۔۔۔ایئر ہوسٹس نے اعلان کیا ۔۔۔۔۔عدن کا چہرہ لال سرخ ہوگیا تھا ۔۔۔۔۔عدن کا دم گھوٹنے لگا ۔۔۔۔۔عدن نے کھڑکی کی طرف اپنا منہ کرکے آنکھوں سے بہتے آنسو بے دردی سے صاف کئے ۔۔۔عدن کی آنکھیں اتنی لال ہو رہی تھیں جسے بس ابھی آنکھوں سے خون ٹپکنے لگے گا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔جہاز آہستہ آہستہ رینگنے لگا ۔۔۔۔۔عدن بے بسی سے دیکھتی رہی ۔۔۔۔۔کچھ منٹوں بعد ہی جہاز فضاوّں کی بلندی پر تھا ۔۔۔۔عدن نیچے دیکھ رہی تھی چھوٹی چھوٹی سی گاڑیاں نظر آرہی تھیں ۔۔۔۔۔۔ایسے لگ رہا تھا جسے چوٹھے چوٹھے کھلونے چل رہے ۔۔۔۔۔۔۔۔
ماما جتنی یہ چھوٹی چھوٹی سی گاڑیاں نظر آرہی ہیں ۔۔۔۔اتنا چھوٹا سہ ہی کاش کوئی کسی کے لئے درد رکھتا اتنا سہ ہی کاش کوئی کسی کے لئے سوچتا

ہمممم ۔۔۔۔۔۔عفاف خاموش ہوگئی تھی ۔۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔ . .
عدن کے مامو ایئر پورٹ پر عدن اور عفاف کو لینے آتے ۔۔۔۔۔۔

السلام عليكم ماموں جان ۔۔۔۔

وعلیکم السلام ماموں کی جان کسی ہو ۔۔۔۔۔۔مزمل نے عدن کو سینے سے لگا لیا ۔۔۔۔


ٹھیک ہوں ماموں۔۔۔۔۔۔آپ سنائیں ۔۔۔کیسے ہیں ۔۔۔۔۔

میں بھی ٹھیک ہوں بچہ ۔۔۔۔شمس بیٹا یہ سارا سامان گاڑی میں رکھو مزمل نے سرونٹ کو کہا ۔۔۔۔ آجاؤ آپ دونو میرے ساتھ یہ سامان یہ لڑکا لے آئے گا ۔۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
السلام عليكم مامی جان کسی ہیں آپ ۔۔۔۔۔۔۔عدن گاڑی سے اتری مامی استقبال کے لئے باہر کھڑیں تھیں ۔۔۔۔۔

وعلیکم السلام بیٹا میں ٹھیک ہوں تم کسی ہو ۔۔۔۔۔۔مامی نے عدن کو پیار کرتے ہوۓ کہا ۔۔۔۔۔۔

میں بھی ٹھیک ہوں ۔۔۔۔

عفاف باجی آپ ٹھیک ہیں ۔۔۔۔۔؟

جی جی بھابھی میں بھی ٹھیک ہوں ۔۔۔۔

ساری باتیں باہر کرلو گی اندر تو آنے دو ان کو ۔۔۔۔مزمل نے مسکراتے ہوۓ کہا ۔۔۔۔۔

آئیں اندر آئیں ۔۔۔۔فرح مامی نے ہنستے ہوۓ کہا ۔۔۔۔۔
آپ لوگ فریش ہوجائیں میں آپ لوگوں کے لئے کھانا لگاتی ہوں ۔۔۔۔۔۔

نہیں مامی بھوک بلکل نہیں ہے ۔۔۔۔۔

ارے ایسے کیسے بھوک نہیں ۔۔۔تم فریش ہو کر آؤ میں کھانا لگا رہی ہوں سمجھی ۔۔۔۔جاؤ شاباش ۔۔۔۔۔۔

ہممم اوکے ٹھیک ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عدن نے ٹی وی اون کیا تو نیوز چینل لگ گیا ۔۔۔۔۔۔
ناظرین آپ کو ایک ہم خبر سے آگاہ کریں ۔۔۔۔بریگیڈیئر عریب جنہوں نے راء کے ایجنٹس کو ملک کے اہم راز بتا دیئے ۔۔۔۔۔بریگیڈیئر عریب کے خلاف آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت کاروائی کی جارہی ہے اور اس کے ایک فوجی ہونے کی وجہ سے اس کے خلاف آرمی ایکٹ کے تحت کورٹ مارشل کا مقدمہ کیا جا رہا ہے ۔۔۔۔۔مزید تفصیلات کے لئے ہمارے نمائندہ یوسف ہمارے ساتھ ہے ۔۔۔۔۔۔جی بتائیے گا یوسف کیا معاملہ ہے ۔۔۔۔۔۔

جی بریگیڈیئر عریب جو کہ پاک فوج میں کئی اہم عہدوں پر فائز تھے گزشتہ دن انھیں تحویل میں لے لیا گیا۔۔۔۔۔۔کہا جا رہا ہے کہ ۔۔۔بریگیڈیئر عریب ملٹری اتاشی کی ذمہ داریاں نبھا رہے تھے ۔۔۔۔اوراسی دوران اس کا رابطہ بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ سے ہوا۔ بتایا گیا ہے کہ بھاری رقوم کے عوض ملکی راز بیچے البتہ ذرائع کا کہنا ہے کہ فوج میں موجود تحقیقاتی ادارے کو اس بات کا علم ہوگیا تھا اسی لیے برگیڈیئر عریب کی نگرانی مزید سخت کردی گئی۔ فوجی ذرائع کے مطابق خوش قسمتی سے برگیڈیئر عریب کی جانب سے دشمن کو بیچے گئے رازوں کا پاکستان کو نقصان نہیں پہنچا لیکن غلطی کی سزا اسے ملے گی ۔۔۔۔۔

جی بہت بہت شکریہ یوسف آپ کا ۔۔ناظریں بریگیڈیئر عریب نے بھاری رقوم کے عوض ملکی راز بیچے ۔۔۔۔عدن نے ٹی وی بند کردیا ۔۔۔۔۔۔

عدن کا دل کر رہا تھا زمین پھٹ جاۓ اور وہ اس میں سما جائے ۔۔۔۔۔۔۔بابا کیوں ۔۔۔۔۔کیوں آپ نے ایسا کیا محض چند پیسوں کے عوض آپ نے وطن سے غداری کردی کیوں بابا کیوں ۔۔۔۔۔۔عدن دل ہی دل میں بابا سے مخاطب تھی ۔۔۔۔۔۔بابا آج سے آپ مر گئے میرے لیئے ۔۔۔۔۔۔بابا کہہ دیں نہ پلیز کے یہ جھوٹ ہے بابا آپ ایسا نہیں کر سکتے ۔۔۔۔۔عدن مسلسل روئے جا رہی تھی ۔۔۔۔۔۔۔

(جاری ہے )
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 259 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Shafaq kazmi

Read More Articles by Shafaq kazmi: 78 Articles with 27479 views »
میرا نام شفق کاظمی ہے ۔۔۔۔میں کراچی سے ہوں ۔۔۔۔میں آفیشل۔ لیکھاری ہوں ۔۔۔نیوز پیپر میں بھی لکھ رہی ہوں ۔۔۔اس کے ساتھ ساتھ میں شاعری بھی کرتی ہوں .. View More

Comments

آپ کی رائے
Language: