درد_زندگی - قسط_نمبر_12

(Aiman Shah Bangash, Islamabad)

مناہل او کینٹین چلے آج ہم کوئی کلاس نہیں لینگے بس صرف مستی کرینگے ۔۔۔۔۔

حیا مناہل کو زبردستی کینٹین لیکے گئی ۔۔۔۔۔

السلام عليكم۔۔۔!! نکامیوں حیا، نینا اور جیا کو تنگ کرتے ہوئے بولی ۔۔۔۔۔۔
وعلیکم السلام ۔۔۔۔!!

آج تم لوگوں کو میں نے بہت ہی خاص بات بتانی ہے ۔۔۔۔۔ایک مہینے کے بعد میری شادی ہے ۔۔۔۔

حیا نظریں جکا کے بولی ۔۔۔۔

واہ ۔۔۔۔جیا ،نینا دونوں ایک ساتھ بولی جب کے مناہل نے نظریں جکا لی ۔۔۔۔

کیا ہوا مناہل تم خوش نہیں ہوئی ۔۔۔۔جیا مناہل سے پوچنے لگی ۔۔۔۔۔

تبھی اس نے آنکھوں سے آنسوں صاف کرتے ہوئے بولا ۔۔۔۔اویس نے بھی کہا تھا کے مجھ سے ایک مہینے کے بعد شادی کرے گا ۔۔۔۔۔۔

یار مناہل تمہیں سمجھ کیوں نہیں آتی وہ جھوٹا تھا اور سب بوائز اسے ہی ہوتے ہیں ۔۔۔۔

جیا اور نینا دونوں اسے سمجھانے لگی ۔۔۔۔۔

فکر نہ کرو اس اویس کو بھی چھوڑونگی نہیں میں اس نے میری فرینڈ کا دل تھوڑا ہے ۔۔۔۔۔

حیا کچھ سوچتے ہوئے بولی ۔۔۔۔

یار تم تو بس کرو آب تمہاری شادی ہونے والی ہے اپنے لئے پرابلم نہ بناؤ ۔۔۔۔

نینا نے حیا کو جواب دیا ۔۔۔۔
میں تم لوگوں کی طرح ڈرپوک نہیں ہوں ۔۔۔۔

کچھ لوگ آپ کی زندگی میں بس یہ بتانے کیلئے داخل ہوتے ہیں ۔۔۔۔

کہ وہ پارسائی کے لباس میں گھٹیا پن کا سڑا ہوا وجود لیے معاشرے کی دھتکار کا بدلہ ہر فرد سے لینے کی تمنا دل و دماغ میں بسائے منافقت کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔۔۔۔

اور اپنی ان خصلتوں کو ثابت کرنا ہی انکی زندگی کا مقصد ہوتا ہے

سمیر بھی بلکل اسی طرح ہے ۔۔۔حیا دانتوں میں ہونٹ چبا کے بولی ۔۔۔۔

لیکن مناہل آب بھی رو رہی تھی ۔۔۔۔

مناہل ادر دیکھو ۔۔۔۔رونا بند کرو پلز ۔۔۔۔۔حیا مناہل کا رخ اپنی طرف کرتے ہوئے بولی ۔۔۔۔

کچھ لوگ ہماری قسمت میں نہیں لکھے ہوتے ۔۔۔۔

لیکن انکی طلب ہماری قسمت میں لکھ دی جاتی ہے اور پھر اس طلب کی بربادی انسان کو اللہ کر در پر گھسیٹ کر لے جاتی ہے ۔۔۔۔۔

اور جب بندہ اس در پر پہنچ جاتا ہے تو خالی ہاتھ نہیں لوٹتا بلکہ بہترین لے کر لوٹتا ہے۔۔۔

اور وہ بہترین سکون ، کسی انسان کا ساتھ ، اللہ سے محبت ، یا اللہ کی رضا پر راضی رہنے والے دل کی صورت ہوتا ہے کہ طلب کا غم باقی نہیں رہتا ۔۔۔۔۔

بس اللہ‎ سے دعا مانگو ۔۔۔۔

مناہل آب مسکراو ورنہ حیا ہمیں ٹریٹ نہیں دیگی ۔۔۔۔۔جیا مناہل کو تنگ کرتے ہوئے کہنے لگی ۔۔۔جس پر نینا اور حیا ہنس پڑھی ۔۔۔

‏تمہیں کیا خبر آنکھوں میں بھرے آنسووں کو واپس حلق تک اتارنا اور پھر مسکرانا،کس قدر اذیت ناک ہے...!!

جب کے مناہل نے پھیکا سا جواب دیا ۔۔۔۔

آب تینو مناہل کی طرف غصے سے دیکھنے لگی ۔۔۔۔۔

اچھا بابا اسے تو نہ دیکھو مسکرا رہی ہوں ۔۔۔۔

ہاہا ۔۔گڈ میری جان ۔۔۔۔حیا ، جیا اور نینا تینو مناہل کو کس کرتے ہوئے ہنسنے لگی ۔۔۔۔

چلو آب بتاؤ ٹریٹ میں کیا لوگی ۔۔۔۔

پیزا تینو نہ ایک ساتھ جواب دیا جس پر سب پھر سے ہنس پڑھی ۔۔۔۔

اوکے تم لوگ بیٹھو میں ابھی پانچ منٹ میں لیکے آتی ہوں ۔۔۔۔

حیا اپنا موبائل ٹیبل پر رکھتے ہوئے کینٹین میں جانے لگی ۔۔۔۔

۔۔۔۔۔۔جی مم کیا چاہیے ۔۔۔۔

ویٹر حیا سے پوچنے لگا ۔۔۔
پیزا ۔۔۔۔اوکے مم آپ ویٹ کریں

جی سر آپ کو کیا چاہیے ویٹر آب سمیر سے پوچنے لگا ۔۔۔۔

مجھے بھی پیزا ۔۔۔۔سمیر حیا کی طرف دیکھتے ہوئے بولا ۔۔۔۔

واہ لوگ تو مجھے کاپی کرنے لگی ہے اٹس مین فیمس ہونے لگی ہوں میں ۔۔۔۔

حیا شرارتی انداز میں ویٹر سے کہنے لگی ۔۔۔۔

جس پر سمیر کو غصہ آگیا ۔۔۔۔

ویسے لڑکیوں کو زیادہ پیزا نہیں کھانا چاہیے کیوں کے موٹی وائف اچھی نہیں لگتی ہسبنڈ کو ۔۔۔۔آب سمیر حیا کے ہی انداز میں اسے کہنے لگا ۔۔۔۔

جس پر حیا مسکرائی ۔۔۔۔تمھیں اسکی فکر کرنے کی ضرورت نہیں پہلی بات میں موٹی نہیں اور دوسری بات جیسے بھی ہوں شہری کو پسند ہوں ۔۔۔۔۔

سمیر شہری کا نام سن کے ہی اگ بگولا ہونے لگا ۔۔۔۔
کون شہری ۔۔حیرانی سے پوچنے لگا ۔۔۔۔۔

میرا ہونے والا ہسبنڈ ۔۔۔۔۔حیا نے ابھی ہسبنڈ لفظ بولا نہیں تھا کے سمیر نے اس کا ہاتھ پکڑ کے اس کو اپنے قریب کیا ۔۔۔۔۔

شہری کا نام دوبارہ نہ لینا سمجھی ۔۔۔۔۔سمیر غصے سے دیکھتے ہوئے بولا ۔۔۔۔۔

کیوں نہ لوں نام ہونے والا ہسبنڈ ہے میرا ۔۔۔۔تمھیں کیا تکلیف ۔۔۔۔چھوڑو مجھے ۔۔۔۔حیا اسے اپنا ہاتھ چھڑوا نے لگی ۔۔۔۔

لیکن سمیر نے اپنی گریفت اور بھی مضبوط کرلی ۔۔۔۔۔

ہونے والا ہسبنڈ تمہارا کون ہے یہ تو تمھیں وقت ہی بتا یگا ۔۔۔۔۔

سر پیزا ریڈی ۔۔۔۔ویٹر کی آواز سن کے سمیر نے حیا کا ہاتھ چھوڑا ۔۔۔۔۔

پھلے میں آیی ہوں تو پہلے مجھے پیزا ملنا چاہیے ۔۔۔۔۔حیا سمیر کے پیزا کو دیکھتے ہوئے بولی ۔۔۔۔۔

سوری مم ۔۔۔۔لیکن میں ا یسا نہیں کر سکتا ۔۔۔۔۔

جنگلی ویٹر کو بھی ڈرآیا ہوا ہے ۔۔۔۔حیا سمیر کو دیکھتے ہوئے بولی ۔۔۔۔

جس پر سمیر اپنی ہنسی نہیں روک پایا ۔۔۔۔۔۔
ابھی جنگلی پن دیکھا ہی کہا ہے شادی کے بعد دیکھ لوگی ۔۔۔

سمیر ایک آنکھ مرتے ہوئے وہاں سے جانے لگا ۔۔۔۔

حیا بس اسے خاموشی سے دیکھ رہی تھی شاید وہ اس کی بات کا مطلب نہیں سمجھی تھی ۔۔۔۔۔

یہ لے مم ویٹر حیا سے کہنے لگا ۔۔۔۔

جس پر حیا کا د یھان سمیر سے ہٹ کر ویٹر پر ہوا ۔۔۔۔

شکریہ بہت اگر اور کوئی بھی رہ گیا تھا اسے بھی دیتے پھر مجھے دے دیتے ۔۔۔۔

حیا ویٹر کو سنا کے وہاں سے چلی گئی ۔۔۔

اہو ۔۔۔اتنا ٹائم کیوں لگایا نینا واچ کو دیکھتے ہوئے پوچنے لگی ۔۔۔۔

جنگلی مل گیا تھا ۔۔۔حیا نے ٹیبل پے پیزا رکھتے ہوئے جواب دیا ۔۔۔۔

جس پر نینا ،مناہل ،اور جیا ۔۔۔تینو ہنس پڑھی۔۔۔

چلو آب شروع بھی کرو ۔۔۔۔

***

شہری بیٹا آج مجھے شاپنگ پے لے جاؤگے شادی کے لئے تھوڑے سے ہی دن رہ گئے ابھی اتنے زیادہ تیاری رہتی ہے ۔۔۔۔

صوفیہ انٹی اپنے بیٹے سے پوچنے لگی ۔۔۔۔

ہاں ماما ضرور ۔۔۔۔۔میں بس تھوڑی دیر میں اتا ہوں پھر نکلتے ہے ۔۔۔۔

اوکے بیٹا خوش رہو صوفیہ اپنے بیٹے شہری کو پیار کرتے ہوئے دعا دینے لگی ۔۔۔۔۔

***

حیا آج تو کوئی کلاس نہیں چلو نہ شاپنگ پے چلے مجھے کچھ ضروری چیزے لینی ہے جیا حیا سے کہنے لگی ۔۔۔۔

لیکن ۔۔۔۔وہ ۔۔۔

لیکن ، وكین کچھ نہیں جیا حیا کی بات کاٹ کر اس کا ہاتھ پکڑ کے اسے زبردستی اپنے ساتھ لیکے جانے لگی ۔۔۔۔

اوکے بابا ۔۔۔۔!!

***

شہری بیٹا یہ دیکھو کیسا ہے حیا پے اچھا لگے گا نہ ۔۔۔۔

جی ماما اچھا ہے آپ شاپنگ کریں میں تھوڑی دیر میں اتا ہوں ۔۔۔۔۔

***

حیا یہ والا ڈریس کتنا پیارا ہے ۔۔۔جیا حیا کو ڈریس دکھانے لگی ۔۔۔۔

ہاں بہت پیارا ہے تم یہ دیکھو مجھے پیاس لگی ہے میں پانی پی کے آتی ہوں ۔۔۔

اوکے جلدی آنا ۔۔۔۔۔۔جیا حیا کو حکم دیتے ہوئے بولی ۔۔۔۔
*

اوہ مائے گوڈ ۔۔۔ حیا پانی پینے باہر نکلی تو اسکی نظر شہری پے پڑھی جو ایک لڑکی کے ساتھ بیٹھا ہوا باتیں کرنے میں مصروف تھا ۔۔۔۔

( ناول :- جاری ہے )

اگر آپ کیسی کو موقع نہیں دوگے تو کوئی آپ کو دھوکہ بھی نہیں دیگا یو آر آیگری ۔۔۔؟؟
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 181 Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Aiman Shah Bangash

Read More Articles by Aiman Shah Bangash: 14 Articles with 3479 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Comments

آپ کی رائے
Language: