سچ تویہ ہے (۲۲واں حصہ )

(Muhammad Siddique Prihar, Layyah)

 منظر۱۶۷
احمدبخش، عبدالرحیم اورسلطانہ سکول جانے کے لیے تیارکھڑے ہیں۔
عبدالرحیم۔۔۔۔امی میں نے دونوٹ بک خریدنی ہیں ایک سوروپے دے دیں
راشدہ۔۔۔۔گھرکے اخراجات اورتمام آمدنی تمہارے ابوکے پاس ہوتی ہے ابوسے مانگ لو
عبدالرحیم ۔۔۔۔اپنے باپ سے۔۔۔۔ابو میں نے دونوٹ بک خریدنی ہیں ایک سوروپے دے دیں
عبدالمجید۔۔۔۔نہیں ہیں میرے پاس ایک سوروپے
عبدالرحیم۔۔۔۔ابودے دیں
عبدالمجید۔۔۔۔تمہیں فضول خرچیوں کی عادت ہوگئی ہے
احمدبخش۔۔۔۔ابویہ فضول خرچی نہیں ہے نوٹ بک عبدالرحیم کی ضرورت ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔توتوخاموش ہوجا
راشدہ۔۔۔۔۔جیب خرچ تو توبچوں کودیتانہیں یہ فضول خرچیوں کے عادی کیسے ہوگئے
عبدالمجید۔۔۔۔کتابیں تواس کے پاس ہیں نوٹ بک کی کیاضرورت ہے
عبدالرحیم۔۔۔۔کتابوں سے سبق یادکرتے ہیں اورنوٹ بک پرلکھتے ہیں
راشدہ۔۔۔۔روزانہ تویہ بہن بھائی لکھ رہے ہوتے ہیں
عبدالمجید۔۔۔اس سے پہلے تیرے پاس جونوٹ بک تھیں وہ کہاں گئیں
عبدالرحیم۔۔۔۔وہ ختم ہوگئی ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔اتنازیادہ کیوں لکھتے ہو
احمدبخش۔۔۔۔ہم اپنی طرف سے نہیں لکھتے جوسبق سکول سے لکھنے کے لیے ملتاہے وہی لکھتے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔توبھربولنے لگ گیاہے
راشدہ۔۔۔۔احمدبخش آپ کوبتارہاہے ایک سوروپے کے لیے اتنے بہانے کیوں بنارہے ہو دے دو بچے کوایک سوروپے
عبدالمجید۔۔۔۔نہیں ہیں میرے پاس
راشدہ۔۔۔۔آج نہیں توکب تک دے دیں گے
راشدہ۔۔۔عبدالرحیم سے۔۔۔۔بیٹا آج سکول چلے جاؤ دو چاردن میں ابوتجھے دے دیں گے
عبدالرحیم۔۔۔۔استادصاحب نے کہاتھا آج نوٹ بک ضرورلے آنا ورنہ سزاملے گی
راشدہ کمرے میں جاتی ہے اورایک کپڑے میں گندم باندھ کرلے آتی ہے اورکہتی ہے بیٹا یہ گندم لے جاؤ اسے بیچ کراپنی نوٹ بک لے لینا
عبدالمجید۔۔۔۔یہ کیاکررہی ہے تو
راشدہ۔۔۔۔۔آپ کے پاس توایک سوروپے بھی نہیں ہیں اس کے علاوہ چارہ بھی توکوئی نہیں
تینوں بہن بھائی گندم لے کرگھرسے باہرچلے جاتے ہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۱۶۸
اریبہ۔۔۔سلطانہ کی ماں میرااس بات سے تعلق نہیں کہ کس نے کب اورکہاں جاناہے میں نے کہہ دیا آج تجھے ناشتہ نہیں بنانے دوں گی۔
راشدہ۔۔۔۔بشیراحمدکی طرف منہ کرکے۔۔۔۔۔یہ آپ کابھائی ہے اوریہ بھتیجے یہ کہتی ہیں اس کاتعلق نہیں
بشیراحمد۔۔۔۔تعلق ہے مذاق کررہی ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔یہ ناشتہ بھی تونہیں بنانے دے رہی
بشیراحمد۔۔۔۔اس بارے میں کچھ نہیں کرسکتا
راشدہ۔۔۔۔مجھے بتائیں مجھے ناشتہ کیوں نہیں بنانے دیاجارہا
اریبہ۔۔۔فیاض اورسمیراسے۔۔۔۔۔تھال مجھے دے دو
اریبہ دونوں تھال لے کراپنے اورراشدہ کے درمیان رکھ دیتی ہے اورکہتی ہے سب لوگ آجائیں
بشیراحمد۔۔۔۔دوسرے کمرے چلتے ہیں اوروہاں ناشتہ کرتے ہیں
تمام افراددوسرے کمرے میں چلے جاتے ہیں
اریبہ۔۔۔۔آج ہم ناشتہ مل کرکریں گے
اریبہ۔۔۔۔دونوں تھال راشدہ کے سامنے رکھ کر۔۔۔۔اپنے ہاتھ سے ناشتہ ان سب میں بانٹ دو
عبدالمجید۔۔۔۔یہ کس خوشی میں ہورہاہے
بشیراحمد۔۔۔اس بات کورہنے دیں یہ کس خوشی میں ہے ہمارایہ متفقہ فیصلہ تھا کہ ناشتہ آپ کے ساتھ مل کرکریں اورساتھ لے کربھی جائیں
راشدہ۔۔۔۔آپ سب ناشتہ لیے بغیرآجاتے میں تیارکردیتی اورسب مل کرکرلیتے
بشیراحمد۔۔۔آج ہم لے آئے ہیں کسی دن آپ بھی لے آنا ہمارے گھر پھرہم وہاں بھی مل کرناشتہ کریں گے
راشدہ دونوں تھال میں دیکھتی ہے کہ ناشتہ میں کیاکیالائے ہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۱۶۹
رحمتاں چارپائی پرپڑی ہوئی چادروں میں سے ایک چادراٹھاکردونوں ہاتھوں پرپھیلاتی ہے ۔چادرکوغورسے دیکھتی ہے پھررکھ دیتی ہے۔ اس کے بعدایک اورچادراٹھاکردونوں ہاتھوں پرپھیلاکراسے بھی غورسے دیکھتی ہے اوررکھ دیتی ہے۔ صابراں اوراس کی دونوں بہنیں بھی ساتھ کھڑی ہیں۔
رحمتاں۔۔۔۔ان چادروں کواچھی طرح دوبہنیں کناروں سے پکڑکرجھاڑلو اس کے بعدگھی والے ٹین میں پانی ڈال کراس میں بھگوکررکھ دو
صابراں کی دونوں بہنیں چادروں کوجھاڑ تی ہیں۔ صابراں گھی والاخالی ٹین اٹھاکراسے اندرباہرسے صابن سے دھوتی ہے۔ پھراسی ٹین کوالٹاکرکے کھونٹے پررکھ دیتی ہے۔ بہنوں کے پاس آتی ہے تووہ تمام چادریں جھاڑ چکی ہیں۔
صابراں۔۔۔ایک بہن سے۔۔۔۔اس ٹین میں پانی بھرو
وہ چلی جاتی ہے
صابراں۔۔۔۔دوسری بہن سے۔۔۔۔۔جب وہ پانی بھرلے توان چادروں کوالگ الگ کرکے اس میں ڈال دینا
صابراں یہ کہہ کرصندوق سے نکالے گئے کپڑوں کے پاس پہنچ جاتی ہے۔وہاں سے کپڑے اٹھاکررسیوں پرپھیلانے لگتی ہے۔ ایک رسی پرکپڑے پھیلاچکی تھی کہ اس کی دونوں بہنیں بھی آجاتی ہیں۔
صابراں۔۔۔اپنی بہنوں سے۔۔۔۔۔تم وہ کپڑے اٹھاؤ اوردوسری رسی پرپھیلادو
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۱۷۰
ایک گھرکے صحن میں بیس چارپائیوں میں پرچارپائی پردوسے تین خواتین بیٹھی ہیں۔ ایک خاتون قرآن پاک کی تلاوت کرتی ہے اورایک خاتون ریاض الدین سہروردی کالکھاہوانعتیہ کلام سناتی ہے۔ اس کے بعدگفتگوکاسلسلہ شروع ہوتاہے۔
پہلی خاتون۔۔۔۔اس اجلاس میں ہم مشورہ کریں گی کہ کس گروپ میں کون کون سے مقابلے کرانے ہیں ۔سب سے پہلے بچیوں کے گروپ کے بارے میں مشورہ کرلیں
دوسری خاتون۔۔۔۔بچیوں میں قرآن پاک کی تلاوت، نعت خوانی کے مقابلے کرائے جائیں۔
تیسری خاتون۔۔۔۔۔بچیوں میں تحریری وتقریری مقابلے بھی کرائے جائیں
چوتھی خاتون۔۔۔۔۔بچوں میں وضواورنمازکامقابلہ بھی کرایاجارہاہے۔ یہ مقابلے بچیوں میں بھی کرائے جائیں
پانچویں خاتون۔۔۔۔۔بچیوں میں سجاوٹ کامقابلہ بھی ہوناچاہیے
پہلی خاتون۔۔۔۔بچیوں میں یہ سب مقابلے کرائے جائیں گے ۔اب مشورہ کریں لڑکیوں میں کون کون سے مقابلے کرائے جائیں
چھٹی خاتون۔۔۔۔بچیوں میں پکوان کامقابلہ کرائیں ۔گوشت، سبزی ،دالیں اورچاول بنانے کامقابلہ ہوناچاہیے
ساتویں خاتون۔۔۔۔چاول کی تین ڈشوں ،میٹھے، نمکین اورپلاؤ کامقابلہ ہوناچاہیے
تیسری خاتون۔۔۔۔ہاتھ سے بنی ہوئی چیزوں اورکپڑوں پرکڑھائی کامقابلہ بھی کرایاجائے
پانچویں خاتون۔۔۔۔لڑکیوں میں بھی تلاوت قرآن پاک اورنعت خوانی کامقابلہ ہوناچاہیے
پہلی خاتون۔۔۔۔۔لڑکیوں میں یہ سب مقابلے کرائے جائیں گے ۔آج کااجلاس اسی پرختم کرتی ہیں ۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۱۷۱
عبدالحق کھڑاہوجاتاہے
بشریٰ۔۔۔۔کہاں جارہاہے
عبدالحق۔۔۔۔لکڑیاں توآپ کوکاٹ دی ہیں اب اورکوئی کام ہے کیا
بشریٰ۔۔۔۔۔لکڑیاں توتونے کاٹ دی ہیں جوبات میں نے پوچھی ہے وہ تونہیں بتائی
عبدالحق۔۔۔۔میری سمجھ میں نہیں آرہا آپ مجھ سے کون سی بات پوچھ رہی ہیں
بشریٰ۔۔۔۔جب توبھائی کے ساتھ رکشے پرگیاتھا تم دونوں نے آپس میں کون سی باتیں کی تھیں
عبدالحق۔۔۔رکشے کاشورہوتاہے ہم نے رکشے پرخاموش رہے باتیں نہیں کیں
بشریٰ۔۔۔۔۔یہ توہونہیں سکتا تم نے باتیں نہ کی ہوں
عبدالحق۔۔۔۔۔یہ آپ کیسے کہہ سکتی ہیں
بشریٰ۔۔۔۔توبھائی کے ساتھ گیاہی اس لیے تھا توبھائی کے ساتھ وہ باتیں کرسکے جوتواس سے تنہائی میں کرناچاہتاتھا
عبدالحق۔۔۔۔یہ بات آپ کوکس نے بتائی ہے
بشریٰ۔۔۔۔اس بات کورہنے دے مجھے یہ کس نے بتایاہے وہ باتیں کیوں نہیں بتارہا جوتم دونوں بھائیوں نے ایک دوسرے سے کی ہیں۔
عبدالحق۔۔۔۔میں وہ باتیں بتابھی دوں توآپ یقین نہیں کریں گی آپ نے اورابونے بھائی کی بات پریقین کرناتودورکی بات اس کی بات کوتسلیم ہی نہیں کیا
بشریٰ۔۔۔۔۔وہ باتیں ایسی ہی کرتاہے کہ اس کی بات ماننے کودل ہی نہیں کرتا
عبدالحق۔۔۔۔۔آپ بھائی کوسمجھاتے رہے آپ نے اورابونے بھائی کواوراس کی بات کوسمجھنے کی کوشش ہی نہیں کی
بشریٰ۔۔۔۔توکیاکہناچاہتاہے۔
عبدالحق۔۔۔۔بھائی ٹھیک کہتے ہیں
بشریٰ۔۔۔۔لوجی پہلے ہم عارف کی وجہ سے پریشان تھے اب تم بھی اس کی حمایت کررہے ہو
عبدالحق۔۔۔۔میں بھائی کی حمایت نہیں کررہا میں تووہ بات بتارہاہوں جوسچ ہے
بشریٰ۔۔۔۔۔یہ توکیسے کہہ رہاہے کہ عارف ٹھیک کہتاہے تیرے پاس اس کی کوئی دلیل کوئی ثبوت ہے؟
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Siddique Prihar

Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 336 Articles with 151437 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
08 May, 2020 Views: 356

Comments

آپ کی رائے