کُنبہ ایک تحفط

(Mehreen Fatima, )

International Family day 15 may 2020
کُنبہ(family) خاندانی تعلقات کا ایک ایسا نیٹ ورک ہے جس میں والدین بچوں سے جڑے ہوتے ہیں ، بچے والدین سے جڑے ہوتے ہیں اور بہن بھائی محبت اور نگہداشت کی مضبوط تار کے ذریعہ ایک دوسرے سے جڑے ہوتے ہیں۔ جب ہم کنبے کے بارے میں سوچتے ہیں تو ہمارے ذہن میں ایک میٹھا اور محفوظ احساس آجاتا ہے۔ محبت ایک خوش کن خاندان کی بنیاد ہے اور نگہداشت ایک مضبوط رشتہ ہے جو ایک کنبے کے ممبروں کے مابین روابط برقرار رکھتا ہے۔ اس رشتے کا ایک اور لازمی حصہ وقت ہے۔ ایک دوسرے کے لئے وقت خاندان کے ممبروں کو ایک دوسرے کے قریب رکھتا ہے اس طرح ایک مضبوط خوش کن خاندان بنتا ہے۔

جدید دنیا میں ہم میں سے بیشتر کی زندگی بہت تبدیل ہوگئی ہے۔ انٹرنیٹ کیذریعہ ٹیکنالوجی کی ترقی ، ثقافتی معیار ، نئی ترجیحات اور مواصلات کی نئی شکلوں میں اضافے کے بعد ، یہ تعجب کرنا فطری ہے کہ کنبے کی اہمیت کیا ہے۔ کیا یہ ایک مرنے والا ادارہ ہے جس کی جدید زندگی میں کوئی جگہ نہیں ہے؟ بالکل نہیں۔ کُنبہ اتنا ہی متعلقہ ہے جتنا پہلے کبھی تھا ۔ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ مستقبل میں زندگی میں کتنا ہی بدلاؤ آتا ہے ، شاید اس کی ضرورت کسی نہ کسی شکل میں جاری رہے گی۔خاندان معاشرے اور لوگوں کی زندگی کے بہت اہم حصہ ہے۔ کُنبہ ہمیں زندگی اور تعلقات کے بارے میں بہت کچھ سکھاتا ہے ۔ ہماری خود اعتمادی کو فروغ دیتا اور ہمیں قابل قدر محسوس کرواتا ہے۔

ایک خاندان یا کُنبہ ایک سب سے بڑا تحفہ ہے خدا کا ،خوش کن خاندان کا حصول اعزاز کی بات ہے کیوں کہ دنیا میں ہر ایک کے پاس ایسا نہیں ہوتا ہے۔اپنے والدین کے ساتھ رہنے کی خوشی ، اپنے بہن بھائیوں کے ساتھ چھوٹی چھوٹی لڑائی پر لڑنے سے آپ صرف اسی لمحے مسکرا سکتے ہیں۔ ایک کُنبہ ہی اقدار کو منتقل کرتا ہے معاشرہ تشکیل دیتا ہے۔

کُنبہ کے عالمی دن کا پس منظر یہ ہے کہ1980 کی دہائی کے دوران ، اقوام متحدہ نے کُنبہ سے متعلق امور پر توجہ مرکوز کرنا شروع کی۔ 1983 میں ، اقتصادی اور سماجی کونسل کی سفارشات کی بنیاد پر ، کمیشن برائے سوشل ڈویلپمنٹ نے ترقیاتی عمل میں خاندانی کردار کے بارے میں اپنی قرارداد (1983/23) میں سیکرٹری جنرل سے درخواست کی کہ وہ فیصلہ سازوں میں شعور اجاگر کرے اور اہل خانہ کی مشکلات اور ضروریات کے ساتھ ساتھ ان ضروریات کو پورا کرنے کے موثر طریقوں سے بھی آگاہی۔
29 مئی 1985 کی قرارداد 1985/29 کے اجلاس میں ، کونسل نے جنرل اسمبلی کو دعوت دی کہ وہ اپنے اڑتالیس اجلاس کے عارضی ایجنڈے میں "ترقیاتی عمل میں گھرانوں" کے عنوان سے کسی شے کو شامل کرنے کے امکان پر غور کرے ، جس کے تحت اس پر غور کیا جائے۔

1993 میں ، جنرل اسمبلی نے ایک قرارداد (A / RES / 47/237) میں فیصلہ کیا کہ ہر سال 15 مئی کو اہل خانہ کا عالمی دن منایا جانا چاہئے۔ یہ دن خاندانوں سے متعلق امور کے بارے میں شعور اجاگر کرنے اور خاندانوں کو متاثر ہونے والے معاشرتی ، معاشی اور آبادیاتی عمل کے علم میں اضافہ کرنے کا ایک موقع فراہم کرتا ہے۔

ٰInternational Family day پہلی بار 15 مئی 1994 کو منایا گیا تھا۔1994 کا سال اقوام متحدہ کے ذریعہ فیملیوں کا بین الاقوامی سال تھا۔اس دن کا مقصد لوگوں کو خاندانی نظام کے فوائد کے بارے میں آگاہ کرنا ہے۔فیملی ڈے فیملی کو متاثر کرنے والے مسائل کو حل کرنے کا ایک موقع فراہم کرتا ہے۔

اس دن کی علامت/لوگو:
کُنبہ کے عالمی دن (International Family day)کی نمائندگی دل کی علامت ہے جو اوپر کی طرف بڑھتی ہے اور مکان کی چھت بن جاتی ہے۔ یہ عام طور پر سرخ رنگ میں کھینچا جاتا ہے اور اسے یا تو تنہا استعمال کیا جاسکتا ہے یا اسے سبز دائرے میں رکھا جاسکتا ہے۔ یہ علامت دل اور گھر کی نمائندگی کرتی ہے -

کُنبہ کاعالمی دن منانے کا بنیادی مقصد ایک خاندان میں فرد کے حقوق کے بارے میں شعور اجاگر کرنا ، والدین اور بچوں میں دوستانہ ماحول پیدا کرنا ، اور خوشحال خاندانی رشتے کی اہمیت کو تسلیم کرنا ہے۔
ایک مکمل کنبے کے بارے میں شعور اجاگر کرنا وقت کی ضرورت ہے ، کیوں کہ بہت سارے بچے ، لڑکے اور لڑکیاں ہیں جو ٹوٹے ہوئے خاندانی رشتے کا شکار ہیں اور اس کے نتیجے میں وہ غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہیں اور مجرمانہ سرگرمیاں کرنے میں اپنی زندگیوں کو تباہ کررہے ہیں۔ لوگوں کو سمجھنے کی ضرورت ہے کہ علیحدگی اور غصہ مسئلہ کا حل نہیں ہے ، صبر ، محبت ، نگہداشت اور گفتگو مسئلے کا حل ہے۔

ہماری زندگی میں کُنبہ کی اہمیت بہت زیادہ ہے ، کیوں کہ یہ ایک بنیادی تعلیمی گروہ ہے جہاں ایک بچہ معاشرتی اتحاد کے لئے ضروری مہارت حاصل کرتا ہے۔ یہ اب بھی والدین ہی ہیں جو بچے کو دنیا کے ساتھ تعامل کرنے کے لئے پہلے آلات کی تعلیم دیتے ہیں: زبان ، حفظان صحت ، شائستگی۔ وہ اقدار جو بچے کو پڑھائی جاتی ہیں وہ معاشرے میں موروثی ہوتی ہیں

ایک کنبے کی اہمیت کو یاد دلانے اور اس کی پہچان کے لئے، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے ہر 15 مئی کو عالمی / عالمی یوم خاندانی دن منانے کی تجویز پیش کی ، یہ فیصلہ 1993 میں لیا گیا تھا اور 1994 سے لے کر آج تک ، یہ دن پوری دنیا میں منایا جاتا ہے۔

امریکہ ،جاپان، کوریا، چائنہ سمیت دنیا بھر کے بیشتر ممالک میں کُنبہ کے عالمی دن کے مو قع پر مختلف سرگرمیوں کا انعقاد کیا جاتا ہےاور مختلف ممالک میں مختلف طریقوں سے منایا جاتا ہے یا تسلیم کیا جاتا ہے۔ کچھ کمیونٹیز عوامی نمائشوں یا ان خیالات پر گفتگو کرنے کے لئے مباحثہ کر کے اس دن کے اعزاز کا انتخاب کرسکتی ہیں جو اس سال کے مرکزی موضوع سے براہ راست مطابقت رکھ سکتے ہیں۔سرکاری اہلکار خاندان کو متاثر کرنے والی پالیسیوں کے بارے میں مزید تفصیل کے لئے سیمینار کا انعقاد کرتے ہیں۔عالمی یوم خاندانی دن کی اسکول اسمبلی میں سرگرمیوں کا انعقاد کیا جاتا ہے۔کُنبہ کے عالمی دن کے موقع پر ، اسکول کا سربراہ یا اساتذہ یا طالب علم خاندانی نظام کے فوائد کے بارے میں اسمبلی میں تقریر کرتے ہیں۔ مغرب میں یہ دن لوگوں کے لئے اپنے اہل خانہ کے ساتھ وقت گزارنے کا ایک بہترین موقع ہے۔

دیگر معاملات کی طرح عالمی یوم خاندان (international Family day)کے موقع پر COVID-19 وبائی امراض کے اثرات مرتب ہوئے ہیںجہاں تک یہ وبائی مرض ہمارے معاشرتی نظام میں تباہی لایا ہے ، اس نے ہمیں جدیدیت کے ہنگامے میں کھوئے ہوئے کُنبہ کی قدر کے بارے میں بھی سوچنے پر مجبور کیا ہے۔ ۔ اگرچہ 20 ویں صدی ہمارے کُنبہ کے نظام میں بہت سی تبدیلیاں لا چکی ہے، ہماری اخلاقیات ، ہماری انفرادی موجودگی اور ہمارے پیار ے ان تبدیلیوں میں بہہ چکے ہیں ۔ مگر اب جب ساری دنیا معاشرتی دوری کی پابند ہے اور ہم سب اب تنہائی کی حالت میں ہیں ، صرف ایک کُنبہ کو ہم سے دور نہیں رکھا گیا ہے۔ ہمارے خون کے رشتے ہمیں راحت فراہم کررہے ہیں ، انہوں نے یہاں تک کہ ہمیں اس وقت بھی گلے لگا لیا ۔ اس لئے یہ وبائی مرض اگرچہ ہم میں سے بہت سوں کے لئے تباہی ہے کیوں کہ یہ ہمارے عزیزوں کو ہم سے مسلسل چھین رہا ہے اس کے باوجود کُنبہ کی اہمیت سمجھنے میں یہ ایک نعمت ثابت ہوئی کہ اس سے پہلے کہ بہت دیر ہوجائے اس سے پہلے ہم اپنےکُنبہ کی اہمیت کا اندازہ کریں۔ COVID-19 وبائی مرض کی وجہ سے ، جہاں دنیا کے گھروں کے اندر رہائش پذیر ہے ، اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹر نیویارک میں سال 2020 کے یوم فیملی کے سالانہ منانے کو آن لائن کیا جائے گا۔
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Mehreen Fatima

Read More Articles by Mehreen Fatima: 6 Articles with 2391 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
15 May, 2020 Views: 347

Comments

آپ کی رائے