یہ عشق دردِ دوا(پہلی قسط)

(Zainab Arshad, Mandi bahaulddin)

عشق

بارش اور تیز آندھی نے اس کا چلنا بھی محال کر رکھا تھا، ۔۔۔۔۔۔۔ آج اسے اپنے اٹھتے قدم بھاری لگ رہے تھے۔

کتنی بے دردی سے اس کے سامان کو ایک پھٹے پرانے بیگ میں ڈال کر اس کے منہ پہ مار کر دھتکار دیا گیا تھا اور آج وہ اس سامان کو برستی بارش میں رات کے پچھلے پہر پناہ کے لیے جگہ ڈھونڈ رہی تھی۔

اپنے سن ہو تے وجود کے ساتھ وہ مسلسل چلتی جا رہی تھی کیونکہ۔۔۔۔۔۔۔۔ اس کے لیےپچھلے سارے راستے بند تھے اور کوئی نہیں تھا جو اس کو پیچھے سے تھام لے اس لئے اسے صرف آگے چلنا ہی نظر آ رہا تھا کافی وقت چلنے کے بعد اسے دور اس ویرانے میں ایک چھوٹا سا مکان نظر آیا

اس کے نزدیک جانے پر اسے اندازہ ہوا کہ وہ چھوٹا سا دربار ہے جو شایدزیر تعمیر تھا، جگہ جگہ لکڑی سیمنٹ اور بجری وغیرہ رکھے ہوئے تھے اس نے اپنے لرزتے وجود, اورٹوٹےہویے جوتے کے ساتھ دربار کی چوکھٹ پر قدم رکھا اسامنے سر اٹھا کر دیکھنے پراسے کچھ فاصلے پر ایک دیا جلتا دکھائی دیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اندھیرے میں اس کے لئے دیا ہی بہت بڑی روشنی تھی۔ اس نے اسی دیے کی جانب جاتی ہوئی راہداری پر چھوٹے چھوٹے قدم اٹھانے شروع کر دیے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور دیے کے قریب جا کر اسے کچی پکی دیوار پر اپنا ہی ٹوٹا پھوٹا ہوا عکس نظر آیا جو کسی بیھانک سایہ کی مانند دکھائی دے رہا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔وہ بغیر کسی وجہ سے مسلسل دیے کی جلتی ہوئی آگ کو دیکھ رہی تھی
اس کی آنکھوں کی تپش ، دیے میں جلتی ہوئی آگ کی تپش سے کہیں زیادہ تھی جو شاید غصے کی، بے بسی کی، اور جذبات کے رد کئے جانے کی تھی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جو اسے اس تیز بارش میں سرد ہوا کے ساتھ بھی گرم کیے ہوئے تھی اس کے بالوں کی سیاہ زلفیں اس کے آدھے چہرے کا احاطہ کیے ہوئے تھیں۔۔۔۔ اس 22 سالانہ جوان لڑکی کو دیکھ کر اس کی حالت کا اندازہ کوئی بھی لگا سکتا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اچانک اسے اپنے ساے کے ساتھ کوی اور سایہ بھی حرکت کرتا محسوس ہوا

انشاءاللہ باقی اگلے شمار میں
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zainab Arshad

Read More Articles by Zainab Arshad: 4 Articles with 1066 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
31 May, 2020 Views: 365

Comments

آپ کی رائے