دنیا بھر میں ہونے والے تباہ کن دھماکے

لبنانی دارالحکومت بیروت میں دھماکوں نے اس شہر بلکہ پورے ملک ہی کو لرزا کر رکھ دیا۔ آئیے دنیا بھر میں حالیہ کچھ عرصے میں ہوئے مختلف دھماکوں پر نظر ڈالتے ہیں۔
 
امونیم نائٹریٹ کا ’لاوارث گودام‘
بیروت میں ہونے والے اس خوفناک اور غیرمعمولی دھماکے کی شدت اتنی زیادہ تھی کہ یہ دو سو کلومیٹر دور تک سنائی گئی۔ اس کی وجہ سے شہر کا ایک بڑا حصہ تباہ ہوا۔ اس دھماکے کی وجہ 2750 ٹن امونیم نائیٹریٹ تھی، جو بیروت کی بندرگاہ پر گزشتہ چھ برسوں سے ذخیرہ تھی۔
 
دھماکے کی چھتری
بیروت میں ہونے والے دھماکے کی شدت کا اندازہ اس بات سے لگائیے کہ یہ ہیروشیما پر گرائے گئے ایٹم بم سے فقط دس گنا کم تھی۔ یہ دھماکا اتنا شدید تھا کہ چند ہی لمحوں میں شہر کا ایک وسیع حصہ ملبے کا ڈھیر بن گیا۔
 
ہیوسٹن کی آگ
رواں برس 24 جنوری کو امریکی شہر ہیوسٹن میں واٹسن گرائنڈنگ ایند مینوفیکچرنگ کا پلانٹ دھماکے سے پھٹ پڑا۔ اس دھماکے کی وجہ سے ملبے کے ٹکڑے ڈیڑھ میل دور تک اڑتے ہوئے پہنچے۔ اس واقعے میں جائے حادثہ کے قریب واقع دو سو مکانات اور کاروباری مراکز کو نقصان پہنچا۔
 
شیانگ شوئی کیمیکل پلانٹ دھماکا
گزشتہ برس 21 مارچ کو چین کے صوبے جیانگسو کے علاقے چینگیگانگ کے ایک کیمیائی پلانٹ میں دھماکا ہوا۔ اس دھماکے کے نتیجے میں 78 افراد ہلاک جب کہ چھ سو سے زائد زخمی ہوئے۔یہ دھماکا اتنا شدید تھا کہ اس کی نتیجے میں کئی میل دور تک عمارتوں کو نقصان پہنچا۔ اس پلانٹ میں دھماکے کے ساتھ پھیلنے والی زہریلی گیس کی وجہ سے بھی درجنوں افراد متاثر ہوئے۔
 
میکسیکو پائپ لائن دھماکا
گزشتہ برس جنوری ہی میں میکسیکو کی ہیڈالگو کی ریاست میں پیٹرول کی ایک پائپ لائن پھٹ گئی۔ حکام کے مطابق تیل چوری کرنے کی کوشش کرنے والوں نے کسی جگہ پر اس پائپ لائن کو ٹھیک سے بند نہیں کیا تھا۔ یہ واقعہ اور بھی زیادہ خون ریز اس لیے ہوا کیوں کہ دھماکے کے وقت عام افراد اس پائپ لائن سے پیٹرول حاصل کرنے کی کوشش میں مصروف تھے۔ اس واقعے میں 137 افراد ہلاک جب کہ دیگر درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔
 
بہاولپور کا آئل ٹینکر دھماکا
پاکستانی صوبے پنجاب کے علاقے بہاولپور میں اس وقت ہر طرف موت کا رقص شروع ہو گیا، جب ایک تیل کے ٹینکر کے حادثے کے بعد مقامی افراد کی ایک بڑی تعداد بہنے والا تیل چرا رہی تھی کہ دھماکا ہو گیا۔ اس واقعے میں مجموعی طور پر دو سو سے زائد افراد لقمہ اجل بنے تھے۔
Partner Content: DW
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
06 Aug, 2020 Views: 2241

Comments

آپ کی رائے