کیا واقعی بارش کے پانی میں کینسر کا علاج ہے۔۔۔بارش کے پانی کے فوائد

 
بارش ﷲ کی رحمت ہے اور جب بارش کا پانی برستا ہے تو بہت ساری برائیوں کو اور آلودگیوں کو اپنے ساتھ لے جاتا ہے۔۔۔ایک دور تھا جب بارش کا پانی بہت سارے لوگوں کے لئے واحد ذریعہ تھا پینے کے پانی کا۔۔۔پرانے زمانے میں لوگ اسے محفوظ کرتے تھے اور اسی سے اپنا گزارا کیا کرتے تھے۔۔۔اس کے بارے میں کئی باتیں ہیں اور کئی حقائق جن کا جاننا بہت ضروری ہے
 
بارش کا پانی شفاف ہوتا ہے
بارش کا پانی کسی بھی قسم کے کیمیکلز سے پاک ہوتا ہے ۔۔۔اس میں الکلائن پی ایچ شامل ہوتا ہے جو جسم میں خون کو صاف کرتا ہے اور نظام ہضم کو بہترین کرتا ہے۔۔۔۔اس سے جسم کی کئی بیماریوں کا قدرتی طور پر علاج ہوجاتا ہے -
 
کلورائڈ اور فلورائڈ سے پاک
نلکے کے پانی میں جراثیم کو ختم کرنے کے لئے کلورین شامل کیا جاتا ہے تاکہ پانی کو صاف بنایا جاسکے اور زمین سے نکالے جانے کی وجہ سے اس میں فلورائڈ شامل ہوجاتا ہے۔۔۔پانی کو صاف کرنے کے لئے بعض دفعہ کلورین کی اتنی مقدار شامل کی جاتی ہے کہ وہ باقاعدہ اپنی بدبو سے محسوس ہوتی ہے۔۔۔بارش کے پانی میں کوئی بھی کیمیکل شامل نہیں ہوتا۔۔۔یوں بھی کلورین اور فلورائڈ جسم میں مدافعتی نظام کو کمزور کرتے ہیں اور گیس ، سر کا درد جیسی تکالیف کو زندگی کا حصہ بنا دیتے ہیں تو بارش کا پانی ان بیماریوں کو پیدا نہیں ہونے دیتا-
 
کینسر کے سیلز کو ختم کرتا ہے
بارش کے پانی میں الکلائن پی ایچ کی مقدار شامل ہوتی ہے جو اینٹی آکسیڈینٹ ہے اور کینسر کے سیلز کو ختم کرتی ہے۔۔۔کئی ممالک میں کینسر کے مریضوں کو علاج کی غرض سے بارش کا پانی پینے کے لئے بھی کہا جاتاہے۔۔۔مون سون کی پہلی بارش صحت کے لئے بہترین ہے اور خاص طور پر کینسر کو ختم کرنے کے لئے۔۔۔
 
بالوں کو مضبوط اور گھنا بناتا ہے
وہ لوگ جن کے بال بہت کمزور ہوتے ہیں انہیں بارش کے پانی سے لازمی نہانا چاہئے۔۔۔اس کی ایک بہت سادی اور آسان وجہ یہ ہے کہ بالوں کو ہلکا اور شفاف پانی چاہپے ہوتا ہے جو انہیں کسی بھی قسم کے نقصان سے بچائے اور بارش کا پانی اس معیار پر سو فیصد پورا اترتا ہے۔۔۔
 
کیل مہاسوں کا علاج
بارش کا پانی جسم میں شامل ہونے والے تیزابی کیمیکلز کو بھی پاک کرتا ہے ۔۔۔جب یہ جلد پر آتا ہے تو اس کا عمل شروع ہوجاتا ہے اور یہ نا صرف کیل مہاسوں سے جنگ لڑتا ہے بلکہ جلد کو صحتمند بھی بناتا ہے
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
06 Aug, 2020 Views: 2150

Comments

آپ کی رائے