صرف تین اجزا سے بنا قہوہ..... فلو بھگائے اور مدافعتی نظام کو اتنا مضبوط بنائے کہ پھر بیماریاں قریب بھی نہ آئیں!

 
مون سون بارشوں کے بعدجب موسم تبدیل ہوتا ہے تو اکثر لوگ بیمار ہونے لگتے ہیں۔ ایک طرف کئی لوگوں کو بدلتے ہوئے موسم کی وجہ سے جہاں فلو ہوجاتاہے، وہیں ان کے بیمار ہوجانے کے پیچھے یہ وجہ بھی ہوتی ہے کہ ان کا مدافعتی نظام اچھا نہیں ہوتا۔ اسی لئے وہ بدلتے موسم کے اثرات کا جلد شکارہوجاتے ہیں اور بیماریاں انہیں جلدی اپنے گھیرے میں لے لیتی ہیں۔ پھر انہیں ڈاکٹر کے جانا پڑتاہے اور دواؤں کا سہارا لے کر وہ ٹھیک ہوتے دکھائی دیتے ہیں۔ چونکہ اکثر دواؤں کے سائڈ افیکٹس بھی بہت ہوتے ہیں، لہذا انہیں استعمال کرتے ہوئے ڈر بھی لگتا ہے۔ اسی طرح مدافعتی نظام کو بہترکرنے کیلئے بھی وٹامنز پر مشتمل سپلمنٹ کا استعمال کرناپڑتاہے۔
 
ممبئی کے ایک اسپتال میں بطور چیف ڈائٹریشن کام کرنے والی دلناز کا کہنا ہے کہ اچھا مدافعتی نظام انسان اس وقت تشکیل دے سکتاہے جب وہ غذائیت سے بھرپور کھانے کھاتا ہے۔ کھانے اور مدافعتی نظام کا ایک دوسرے سے گہرا تعلق ہوتا ہے، انسان جو کھاتا ہے، وہ اس کے مدافعتی نظام پر اثر انداز ہوتا ہے، اگر انسان کا مدافعتی نظام اچھا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ اس کی غذا ہے۔ اگر اس کا مدافعتی نظام کمزور ہے تو پھراسے متوازن غذا کے استعمال کی ضرورت ہے۔
 
پہلے زمانے میں لوگ کچن میں موجود چند اجزاکو استعمال کرتے ہوئے فلو اور،مدافعتی نظام سے بچنے کیلئے قہوے بناتے تھے، یہی وجہ ہے کہ وہ صحت مند بھی رہتے تھے اور ان کا مدافعتی نظام بھی بہترین ہوتا تھا۔ ہلدی، کالی مرچ اور زیرہ دیکھنے میں چھوٹے سے اجزاہیں، جو روزمرہ کے کھانوں کو ذائقہ دار اور خوشبودار بناتے ہیں۔ یہ اجزا دیکھنے میں سادہ سے ضرور ہیں، تاہم ان کی افادیت جادوئی ہے۔
 
 
 کالی مرچ:
کالی مرچ دراصل اینٹی بیکٹیریل خاصیت رکھتی ہے،یعنی جراثیم کے خلاف جسم کو مزاحمت کی طاقت فراہم کرتی ہے، اس میں وٹامن سی بڑی وافر مقدار میں موجود ہوتاہے، جوکہ مدافعتی نظام کو مضبوط بناتا ہے۔
 
 
 ہلدی:
 ہلدی میں بھی جراثیم سے بچاؤ کی طاقت ہوتی ہے۔ اسے مناسب مقدار میں استعمال کیا جائے تو یہ اینٹی بیکٹیریل اور اینٹی وائرس کے طور پر کام کرتی ہے، ساتھ ہی فلو کے دوران ہونے والی بے چینی میں جسم کو آرام و راحت فراہم کرتی ہے۔
 
 
زیرہ:
ثابت زیرہ کو بھی مدافعتی اور نظام انہضام کیلئے بہترین مانا جاتاہے، ساتھ ہی یہ وزن کم کرنے میں بھی مدد فراہم کرتا ہے۔
 
 
لہذا وہ لوگ جو ان دنوں کمزور قوت مدافعت کی شکایت کررہے ہیں، یا جنہیں بدلتے ہوئے موسم کی وجہ سے فلو کی شکایت ہوگئی ہے، ان کیلئے یہاں ان تین اجزا سے قہوہ تیار کرنے کا طریقہ بتایاجارہاہے، یہ قہوہ انہیں کورونا سے بھی محفوظ رکھے گا، کیونکہ کورونا سے بچنے کیلئے بھی قوت مدافعت اچھی ہونی چاہئے، اس قہوے کے استعمال سے جب قوت مدافعت بہتر ہوگی تو کوروناسے بچت بھی خود بخود ہوجائے گی۔
 
 
قہوہ بنانے کے اجزا:
کالی مرچ، ایک چائے کا چمچ۔ ہلدی، ایک چائے کا چمچ۔ زیرہ، آدھا چائے کا چمچ۔ لونگ، 2سے3عدد
 
قہوہ بنانے کاطریقہ:

ایک گلاس پانی کو اُبال لیں، جب اس میں اُبال آنے لگے تو ہلدی، کالی مرچ، زیرہ اور لونگ ڈال دیں۔اسے ڈھکن ڈھک کر4منٹ تک پکنے دیں۔ جب اچھی طرح قہوہ پک جائے تو اسے چھان کر کپ یا پیالے میں نکال لیں اور پھر مٹھاس کیلئے اس میں شہد شامل کرلیں۔شہد میں کھانسی ختم کرنے کی قدرتی صلاحیت موجود ہوتی ہے۔ اس چائے کو فلو ہوجائے تو دن میں 2سے3مرتبہ پئیں،اس قہوے کو پینے کی وجہ سے فلو بھی ختم ہوجائے گااور مدافعتی نظام بھی مضبوط ہونا شروع ہوجائے گا۔

 
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
05 Sep, 2020 Views: 41859

Comments

آپ کی رائے