باہر سے خوفناک دکھائی دینے والا “ ماؤنٹین ہاؤس “ اندر سے انتہائی دلچسپ

 
ایرانی آرکیٹیکٹ اور ڈیزائنر Milad Eshtiyaghi نے حال ہی میں ایک فیملی کے لیے "ماؤنٹین ہاؤس" کا ڈیزائن بنایا ہے- یہ گھر کینیڈا کے علاقے برطانوی کولمبیا میں کواڈرا جزیرے پر واقع ہے۔ اس گھر کا ڈیزائن تیار ہوچکا ہے لیکن اس پر تعمیراتی کام ابھی بھی جاری ہے-
 
Milad کا کہنا ہے کہ “ اس ڈیزائن کی بنیاد پہلے سے ہی 4 پرانے درختوں کی صورت میں اس مقام پر موجود تھی، اور ہم اپنے منصوبے کو بغیر درختوں کو کاٹے ہوئے آگے بڑھانا چاہتے تھے- لہٰذا ہم نے اپنا منصوبہ درختوں کے گرد اور اس کے درمیان کی جگہ پر بنایا۔ درختوں کے سامنے ہم نے ایک صحن بنایا“۔
 
 
“ ہم نے کلائنٹ کی ضرورت کے مطابق پروجیکٹ کو تین منزل میں تقسیم کیا- ایک منزل خاندان میں موجود بوڑھے والدین کے لیے تیار کی گئی دوسری منزل ان کے بیٹے اور اس کی بیوی کے لیے جبکہ تیسری منزل انڈور گیمز کے لیے ڈیزائن کی گئی ہے“-
 
 
ماؤنٹین ہاؤس جزیرے پر موجود ایک بلند چٹان پر واقع ہے اور اس گھر کے نیچے سمندر ہے- بظاہر یہ گھر اپنے اس انوکھے مقام کی وجہ سے انتہائی خوفناک لگتا ہے لیکن درحقیقت یہ دلچسپ بھی ہے-
 
اس گھر کی کھڑکیوں وادی کی جانب کھولا اور بند کیا جاسکتا ہے جس کی وجہ سے کھڑکیاں ٹیرس میں تبدیل ہوسکتی ہیں یا ٹیرس کھڑکیوں میں تبدیل ہوسکتا ہے- اور اس جدید سسٹم کا اسٹرکچر ایک کیبل اسٹرکچر ہے-
 
 
اس گھر میں ایک ایسا سسٹم بھی موجود ہے کہ جس کی مدد سے رہائشی جب سورج کی کرنیں گھر میں داخل کروا سکتے ہیں اور جب چاہیں ان کرنوں کو گھر میں داخل ہونے سے روک سکتے ہیں-
 
 
اس گھر کے نیچے ایک آبشار بھی بہتا ہے جبکہ اس بڑے گھر کے ساتھ چند اور گھر بھی تعمیر ہیں جن میں جم٬ ٹیرس اور بالکونیاں موجود ہیں- یہاں ایک سوئمنگ پول بھی موجود ہے جس میں تیراکی کرتے ہوئے آپ نیچے سمندر کو دیکھ سکتے ہیں-
 
 
یہ گھر باہر سے تو ایک خطرناک مقام پر بنا معلوم ہوتا ہے جبکہ اس کا اندرونی ڈیزائن جیمز بانڈ کی فلم کی مانند ہے- گھر کے رنگ اور فرنیچر سے لے کر کافی ٹیبل اور کتابوں تک ہر چیز یہاں پرکشش اور دلچسپ ہے-
 
 
یہ گھر دیہات اور جدت کا حسین امتزاج ہے جہاں سہولیات بھی ایک مناسب تعداد بھی موجود ہیں- تاہم اس گھر کو مکمل ہونے میں ابھی 7 ماہ لگیں گے اور ابھی اس گھر کے بعض حصے سے صرف کمپیوٹر سے ڈیزائن کردہ ہیں-
 
 
 
 
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
27 Sep, 2020 Views: 3280

Comments

آپ کی رائے