”عالمی یوم قلب“ کے دن جانئے ، گھر پر رہتے ہوئے دل کا خیال کیسے رکھنا ہے ؟

 
آج دنیا بھر میں یوم امراض قلب منا یا جا رہا ہے ۔ اس دن ماہرین قلب کی جانب سے خصوصی تقاریب کا اہتمام کیا جاتا ہے ، تاکہ لوگوں کو دل کے مختلف امراض کے بارے میں آگاہی دی جاسکے ۔ ساتھ ہی ان تقاریب میں دل کے امراض سے بچاؤ کا شعور پھیلانے کے بارے میں آگاہی فراہم کی جاتی ہے ۔
 

اس دن منعقدہ خصوصی تقاریب میں لوگوں کو دل کے امراض کی وجوہات، اس کی تشخیص کے طریقے ، علاج ، علامات اور احتیاطی تدابیر سے آگاہ کیا جاتا ہے ۔ آج کے دن کو دنیا بھر میں امراض ِقلب اور کرونا وائرس کے تعلق سے منایا جانے کا اعلان پہلے سے ہی کردیا گیا تھا ۔ کیونکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ دل کے امراض میں مبتلا افراد کورونا وائرس کا آسان شکار بن سکتے ہیں ۔ لہذا اس سال خصوصی طور پر کورونا اور دل کے امراض کو ایک دوسرے سے جوڑکر اس کے بارے میں احتیاطی تدابیر اور ریسرچز بتائی جارہی ہیں ۔ آئیے جانئے کہ روزمرہ زندگی کے دوران دل کا خیال کیسے رکھنا ہے ۔

 
گھر کا کھانا ، صحت کا خزانہ
ایک مشہور کارڈیولوجسٹ نکول سنگھ کے مطابق آج کل لوگ باہر کا کھانا زیادہ کھارہے ہیں ، باہر کی غذائیں بھی انسانی صحت کو خراب کررہی ہیں ، دل کے امراض میں مبتلا لوگوں کو میدے سے بنی اشیا کا کم استعمال کرنا چاہئے ، انہیں چکی کا آٹا اور چھلکے والی دالیں زیادہ استعمال کرنی چاہئیں ۔ ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ ”گھر کا کھانا، صحت کا خزانہ“ ہوتے ہیں اسلئے گھرکا ہی کھانا کھائیں اور دل کو امراض سے بچائے رکھیں ۔
 
نمک کا کم استعمال:
 ڈاکٹرز کا کہناہے کہ دل کے امراض میں مبتلا لوگوں کو چاہئے کہ اپنے لئے جب کھانا پکوائیں تو کہیں کہ سبزیوں کو زیادہ نہ تلا جائے ، فیٹ اور چکنائی والی غذائیں کم سے کم کھائیں ۔ کم نمک کے ساتھ غذا کا استعمال کریں ، گھر میں تیار کردہ چٹنی کھائیں لیکن اس میں بھی نمک کم رکھیں۔
 
 
پھل، سبزیوں کا استعمال:
 سلاد کھائیں،موسم کے پھل کھائیں ۔ دن میں کم سے کم پانچ حصہ کھانے کا پھل اور سبزیوں پر مشتمل رکھیں ۔ پوٹاشیم والی غذائیں کھائیں ، کیونکہ یہ بلڈ پریشر کو کم کرتا ہے ۔ سبزیوں اور پھلوں کا استعمال کرنے سے جسم کو وٹامنز، منرلز اور فائبرز حاصل ہوں گے ۔ یہ غذائیں دل کو صحت مند رکھنے اور جسم کے کولیسٹرول کو کم رکھنے میں مددگار ہوں گی۔
 
 
 
چینی کا استعمال کم کریں:
زیادہ میٹھی غذائیں نہ کھائیں ۔ چینی کا کم استعمال کریں ۔ اگر کچھ میٹھا کھانے کا موڈ ہو تو چینی کے بجائے اس میں شہد ڈالیں ۔خشک میوے، بیریز اور ایواکاڈو کھانے پر زیادہ زورد یں۔
 
 
مچھلی کھائیں:
مچھلی میں اومیگا تھری اور فیٹی ایسڈ موجود ہوتے ہیں ، جوکہ کولیسٹرو ل لیول کو ٹھیک رکھتے ہیں ۔ جو مچھلی نہیں کھانا چاہتے وہ پھر خشک میوے جیسے اخروٹ وغیرہ کا استعمال زیادہ کریں۔
 
 
ذہن کو پرسکون رکھیں ، مراقبہ کریں :
دل کے امراض سے بچنے کیلئے ضروری ہے کہ بلڈ پریشر کے مسائل پیدا نہ ہوں ، آج کے جدید دور میں سب کے سر پر ٹینشن سوار رہتی ہے ۔ اس لئے دماغ کو پُرسکون رکھنے کیلئے مراقبہ کریں ۔ جب ذہن سکون میں ہوگا تو آپ کا بلڈ پریشر بڑھنے اور دل کے امراض میں مبتلا ہونے کے خدشات کم رہیں گے۔
 
 
سگریٹ، شراب اور تمباکو نوشی نہ کریں:
جو سگریٹ نوشی اور شراب پیتے ہیں ، ان میں دل کے امراض ہوجانے کا خدشہ بڑھ جاتاہے ، لہذا سگریٹ نوشی اور تمباکو نوشی کرنے سے پرہیز کریں ۔ کیونکہ سگریٹ پینے سے خون کی شریانوں کو نقصان پہنچتا ہے ۔ یہ خون میں آکسیجن کے لیول کو کم کرتی ہے ، جس سے دل کی کارکردگی پر منفی اثر پڑتا ہے اور بلڈ پریشر بڑھ جاتا ہے ۔
 
ورزش کریں:
خود کو متحرک رکھیں ، ورزش کریں ۔ ہفتے میں کم سے کم 150 منٹ ورزش ضرور کریں ۔ ابتدا میں دن میں 10 منٹ کی ورزش شروع کریں اور پھر آہستہ آہستہ وقت بڑھائیں ۔ پیدل چلیں ، اس طرح دل کے امراض سے بچنے میں مدد ملے گی ۔
 
 
وزن نہ بڑھائیں :
زیادہ وزن بڑھ جانے کی وجہ سے بلڈ پریشر بڑھ جاتاہے ، سا تھ ہی کولیسٹرول لیول بھی بڑھنے لگتا ہے ۔ جوکہ دل کیلئے نقصان دہ ہے ، اس لئے وزن کو حد سے زیادہ نہ بڑھنے دیں ۔ کھانے پینے میں احتیا ط کریں۔
 
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
28 Sep, 2020 Views: 904

Comments

آپ کی رائے