وسیلہ جائز ہے ---- امت کا متفقہ فیصلہ

(Muhammad Saqib Raza Qadri, Lahore)


Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Saqib Raza Qadri

Read More Articles by Muhammad Saqib Raza Qadri: 147 Articles with 243752 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
01 Jun, 2011 Views: 1566

Comments

آپ کی رائے
بابر صاحب اس کالم میں آپ کے اکابرین کے حوالے سے ثابت کیا گیا ہے اگر پھر بھی آپ وسیلہ کو شرک سمجھتے ہو تو اپنے بڑوں پر بھی فتوی لگاو
By: Muhammad Saqib Raza Qadri, Lahore on Jun, 07 2011
Reply Reply
1 Like
http://hamariweb.com/articles/article.aspx?id=13887
By: Baber Tanweer, Karachi on Jun, 06 2011
Reply Reply
0 Like

قرآن پاک کبھی سمجھنے کیلئے بار بار------------- پڑھ لیا ہوتا تو سمجھنا آسان ہے مگر ہر طرف صرف ثوابی طبقات نظر آتے ہیں، نمازیں رٹیں ہوئیں ہیں اور نہ پتہ ہے رب تعالٰی کی شان اور نہ پتہ ہے نبی آخرالزماں رحمتہ اللعالمین صلی الله علیہ وآلہ وسلم کی ذات اقدس کی شان کا بلکہ انکی ہوا بھی نہیں لگی اور بحث کے شوقین نظر آتے ہیں۔ اگر قرآن پاک کبھی سمجھ کر پڑھ لیا ہوتا تو نام نہاد علماء سے سوال کر سکتے ہو ورنہ ساری زندگی ایسی ہی راہ پے رہتے پار لگ جاؤ گے:

القرآن:

ترجمہ آیت پاک ٣٥-- 35. اے ایمان والوں! اﷲ سے ڈرتے رہو اور اس (کے حضور) تک (تقرب اور رسائی کا) وسیلہ تلاش کرو اور اس کی راہ میں جہاد کرو تاکہ تم فلاح پا جاؤo

ترجمہ آیت پاک57. یہ لوگ جن کی عبادت کرتے ہیں (یعنی ملائکہ، جنّات، عیسٰی اور عزیر علیہما السلام وغیرھم کے بت اور تصویریں بنا کر انہیں پوجتے ہیں) وہ (تو خود ہی) اپنے رب کی طرف وسیلہ تلاش کرتے ہیں کہ ان میں سے (بارگاہِ الٰہی میں) زیادہ مقرّب کون ہے اور (وہ خود) اس کی رحمت کے امیدوار ہیں اور (وہ خود ہی) اس کے عذاب سے ڈرتے رہتے ہیں، (اب تم ہی بتاؤ کہ وہ معبود کیسے ہو سکتے ہیں وہ تو خود معبودِ برحق کے سامنے جھک رہے ہیں)، بیشک آپ کے رب کا عذاب ڈرنے کی چیز ہے-

ترجمہ آیت پاک : 24: اے ایمان والو! جب (بھی) رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) تمہیں کسی کام کے لئے بلائیں جو تمہیں (جاودانی) زندگی عطا کرتا ہے تو اللہ اور رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کو فرمانبرداری کے ساتھ جواب دیتے ہوئے (فوراً) حاضر ہو جایا کرو، اور جان لو کہ اللہ آدمی اور اس کے قلب کے درمیان (شانِ قربتِ خاصہ کے ساتھ) حائل ہوتا ہے اور یہ کہ تم سب (بالآخر) اسی کی طرف جمع کئے جاؤ گےo

ترجمہ آیت پاک : 62: خبردار! بیشک اولیاء اللہ پر نہ کوئی خوف ہے اورنہ وہ رنجیدہ و غمگین ہوں گےo

ترجمہ آیت پاک : 109. اس دن سفارش سود مند نہ ہوگی سوائے اس شخص (کی سفارش) کے جسے (خدائے) رحمان نے اذن (و اجازت) دے دی ہے اور جس کی بات سے وہ راضی ہوگیا ہے (جیسا کہ انبیاء و مرسلین، اولیاء، متقین، معصوم بچوں اور دیگر کئی بندوں کا شفاعت کرنا ثابت ہے)o

ترجمہ آیت پاک: 22. بھلا اللہ نے جس شخص کا سینہ اسلام کے لئے کھول دیا ہو تو وہ اپنے رب کی طرف سے نور پر (فائز) ہوجاتا ہے، (اس کے برعکس) پس اُن لوگوں کے لئے ہلاکت ہے جن کے دل اللہ کے ذکر (کے فیض) سے (محروم ہو کر) سخت ہوگئے، یہی لوگ کھلی گمراہی میں ہیںo
ترجمہ آیت پاک: 13. اُس نے تمہارے لئے دین کا وہی راستہ مقرّر فرمایا جس کا حکم اُس نے نُوح (علیہ السلام) کو دیا تھا اور جس کی وحی ہم نے آپ کی طرف بھیجی اور جس کا حکم ہم نے ابراھیم اور موسٰی و عیسٰی (علیھم السلام) کو دیا تھا (وہ یہی ہے) کہ تم (اِسی) دین پر قائم رہو اور اس میں تفرقہ نہ ڈالو، مشرکوں پر بہت ہی گراں ہے وہ (توحید کی بات) جس کی طرف آپ انہیں بلا رہے ہیں۔ اللہ جسے (خود) چاہتا ہے اپنے حضور میں (قربِ خاص کے لئے) منتخب فرما لیتا ہے، اور اپنی طرف (آنے کی) راہ دکھا دیتا ہے (ہر) اس شخص کو جو (اللہ کی طرف) قلبی رجوع کرتا ہےo

ترجمہ آیت پاک:52. سو اسی طرح ہم نے آپ کی طرف اپنے حکم سے روحِ (قلوب و ارواح) کی وحی فرمائی (جو قرآن ہے)، اور آپ (وحی سے قبل اپنی ذاتی درایت و فکر سے) نہ یہ جانتے تھے کہ کتاب کیا ہے اور نہ ایمان (کے شرعی احکام کی تفصیلات کو ہی جانتے تھے جو بعد میں نازل اور مقرر ہوئیں)(1) مگر ہم نے اسے نور بنا دیا۔ ہم اِس (نور) کے ذریعہ اپنے بندوں میں سے جسے چاہتے ہیں ہدایت سے نوازتے ہیں، اور بیشک آپ ہی صراطِ مستقیم کی طرف ہدایت عطا فرماتے ہیں

ترجمہ آیت پاک: 10. (اے حبیب!) بیشک جو لوگ آپ سے بیعت کرتے ہیں وہ اﷲ ہی سے بیعت کرتے ہیں، ان کے ہاتھوں پر (آپ کے ہاتھ کی صورت میں) اﷲ کا ہاتھ ہے۔ پھر جس شخص نے بیعت کو توڑا تو اس کے توڑنے کا وبال اس کی اپنی جان پر ہوگا اور جس نے (اس) بات کو پورا کیا جس (کے پورا کرنے) پر اس نے اﷲ سے عہد کیا تھا تو وہ عنقریب اسے بہت بڑا اجر عطا فرمائے گاo

ترجمہ آیت پاک: 37. بیشک اس میں یقیناً انتباہ اور تذکّر ہے اس شخص کے لئے جو صاحبِ دل ہے (یعنی غفلت سے دوری اور قلبی بیداری رکھتا ہے) یا کان لگا کرسُنتا ہے (یعنی توجہ کو یک سُو اور غیر سے منقطع رکھتا ہے) اور وہ (باطنی) مشاہدہ میں ہے (یعنی حسن و جمالِ الوھیّت کی تجلّیات میں گم رہتا ہے)o

ترجمہ آیت پاک: 28. اے ایمان والو! اللہ کا تقوٰی اختیار کرو اور اُس کے رسولِ (مکرّم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) پر ایمان لے آؤ وہ تمہیں اپنی رحمت کے دو حصّے عطا فرمائے گا اور تمہارے لئے نور پیدا فرما دے گا جس میں تم (دنیا اور آخرت میں) چلا کرو گے اور تمہاری مغفرت فرما دے گا، اور اللہ بہت بخشنے والا بہت رحم فرمانے والا ہےo

ترجمہ آیت پاک: 16. اور یہ (وحی بھی میرے پاس آئی ہے) کہ اگر وہ طریقت (راہِ حق، طریقِ ذِکرِ اِلٰہی) پر قائم رہتے تو ہم انہیں بہت سے پانی کے ساتھ سیراب کرتے

ترجمہ آیت پاک: 19. بے شک یہ (قرآن) نصیحت ہے، پس جو شخص چاہے اپنے رب تک پہنچنے کا راستہ اِختیار کر لے

ترجمہ آیت پاک: 38. جس دن جبرائیل (روح الامین) اور (تمام) فرشتے صف بستہ کھڑے ہوں گے، کوئی لب کشائی نہ کر سکے گا، سوائے اس شخص کے جسے خدائے رحمان نے اِذنِ (شفاعت) دے رکھا تھا اور اس نے (زندگی میں تعلیماتِ اسلام کے مطابق) بات بھی درست کہی تھی

ترجمہ آیت پاک:
27. اور اس (شراب) میں آبِ تسنیم کی آمیزش ہوگیo
28. (یہ تسنیم) ایک چشمہ ہے جہاں سے صرف اہلِ قربت پیتے ہیںo

By: Azeem, RWP on Jun, 06 2011
Reply Reply
0 Like
kon kiya kehta hai us se koi faraq nahi parta Humain sirf itna jana hai Allah kiya kehta hai ap ke pass agar koi sabut Quran ya Hadees se hai tu pesh karain warna khuda ke liye umat-e-muslima per rehm karain
By: hameezmalik, karachi on Jun, 03 2011
Reply Reply
0 Like
QURAN our HADEES ka motafiq fasela ha keh Allah tak rasai hasil karnay k liay wasila akhtiar karna shirk ha our yehi shirk to kofar e maka kartay thay jin sa Allah k RASOOL na kital kia Allah ko wo bhi mantay thay LAKIN is k sath sath apnay bozrgon ( LAAT FRISHTON ) ko Allah k han apna safarshi samjh kr on k boton pr charhaway charhatray thay jisa keh hamaray han kabroon pr hota ha QURAN m KOFAR ka koul Allah n nakel kia ha keh.,

(yeh Allah k han hamary safarshi han ....youns 18 )
our ( Allah k sath kisi our ko na pokaro ,, AL JIN .18 )
our ( tom log apnay Allah sa doa kia karo gargrah kr k bhi our chopkay chopkay bhi -waqaiyi Allah in logon ko sakhat napasand krta ha jo had sa nikel jayen ---ALARAaf 55 ) : wasilla ki nafi ha Allah s brarast mangnay ka hokam;;
our QURANI ayat ka mafhom ha ;; aye nabi ap s pochtay han keh hamara RAB kahan ha ap keh dejuay m (Allah) on k kareeb hon m her aik pokar khod sonta hon jb meray banday mojhay pokartay han; ;;; wasilla ki nafi yahan bhi.....
our hazrat ABASS r.t.a. ki jjis hadees ki app na hawala dia ha wasilla k haq m wohi hadees to shkhsi wasila ki nafi karti ha . ap khod ghor karan app k kehnah k motabiq zinda morda shkhs s wasilla jaez ager ha to phir is sorat m Allah k RASOOL s.a.w ka wasilla ikhtiar karnay ki bajaey hazrat ABASS r,t.a. ko medan m lanay ki kia zarorat thi..kia on ka wasila Allah k RASOOL s bara wasila tha ?...
asl ma bat yeh ha keh islam m kisi zinda morda sakhseeiat; jinat. davi. farishtaon. ka wasila ikhtiar karnay ki ijazat naheen ha balkeh ::: ZINDA NAIK ADMI KI DOA KA WASILA ikhtiar karnay ki ijazat ha jesa keh mazkora hadees m hazrat UMER r.t.a. na tareqa ikhtiar kia ap r.t.a nimaz e istaska k bad Allah TALA s yon doa mangi ...;;;;; AYE Allah pehlah hamaray pas Allah k rasool mojood (ZINDA) thay; hm on ki doa ka wasila bnatay thay ab wo hm m nahen han ab hm on s.a.w. k CHACHA ki doa ka wasilay s ap s barish ki doa mangtay han hm pr barish brsa ;;;; our barish ho gai... isi tara 3 admion k naik amel ka wasila banay wali hades bhi majood ha jin ki ghar ka mon pather s band ho gia tha Allah tala ap ko haq bat qabooll kernay ki tifeeq atta farmaey ;; ameen
By: iqbal, jhang on Jun, 03 2011
Reply Reply
0 Like

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ