آپ میٹھا حد سے زیادہ کھا رہے ہیں 8 نشانیاں

(Nasir Khan, Karachi)
 
میٹھے کھانے انتہائی مزیدار ہوتے ہیں اور اپنے ذائقے اور خُوبصورتی کی وجہ سے ہمارے من پسند کھانے بن جاتے ہیں لیکن کیا ہم نے کبھی سوچا ہے کہ جن من پسند چینی سے بھرپورکھانوں کی طرف روز ہمارا دھیان جاتا ہے اور ہم اُنہیں کھانا چاہتے ہیں کہیں ہمیں اُنہیں کھانے کی لت تو نہیں پڑ گئی؟۔ میٹھے کھانوں کو بلکل چھوڑ دینا آسان کام نہیں ہے اور جنہیں ان کی لت پڑ گئی ہو اُنہیں اس بات کا بھی پتہ نہیں ہوتا کہ وہ میٹھے کے نشئی ہو چُکے ہیں، اس آرٹیکل میں ہم 8 ایسی وارننگ دینے والی نشانیوں کو شامل کر رہے ہیں جو زیادہ میٹھا کھانے کی صُورت میں آپکا جسم آپ کو دینے لگ جاتا ہے تاکہ آپ غور کریں۔
 
جوڑوں اور پٹھوں کی درد، سوزش
اگر آپ کا پیدل چلنے کو دل نہیں چاہتا، ورزش کرنا بھی پسند نہیں کرتے، جسمانی مشقت بُری لگنے لگ گئی ہے کیونکہ آپکا جسم اکثر درد میں مُبتلا ہوتا ہے اور آپ ایسی صُورت میں آرام کرنا چاہتے ہیں تو یہ ایک نشانی ہوسکتی ہے کہ آپکے جسم کے اندرونی اعضا سوزش کا شکار ہو رہے ہیں جس سے جوڑ اور پٹھے اکثر درد کرنا شروع کر دیتے ہیں۔زیادہ میٹھا ہماری قوت مدافعت کے خلیوں کو اُکساتا ہے کہ وہ جسم میں سوزش پیدا کریں اور یہ سوزش جسم کو ذیابطیس، دل، شریانوں، یاداشت اور جلد کی بیماریوں میں مُبتلا کرنا شروع کر دیتی ہے۔
 
میٹھے کے لیے جی للچانا
شوگر ہمارے جسم میں بہت تیزی سے ہضم ہوتی ہے اس لیے میٹھا کھانے کے فوراً بعد دوبارہ بھوک لگنا ایک عام بات ہے اور ایسی صُورت میں دل مزید میٹھا کھانے کو چاہتا ہے۔کھانے میں شامل شُوگر ہمارے جسم میں ڈوپامائن ہارمون کا اضافہ کرتی ہے اور یہ وہی ہارمُون ہے جو بہت سی بُری لتیں آپ کے جسم میں پیدا کرتی ہیں جس سے آپکا مُوڈ بہتر ہوتا ہے اور آپکی خوشی میں اضافہ ہوتا ہے اور پھر آپ کو اس ہارمون میں اضافے کی لت پڑ جاتی ہے۔
 
کبھی چوکس کبھی سُست
گلوکوز ہمارے جسم کو توانائی مہیا کرتا ہے اور جب ہم زیادہ میٹھا کھاتے ہیں تو ہمارا لبلبہ انسولین پروڈیوس کرتا ہے جو میٹھے میں شامل گلوکوز کو سیلز کو مہیا کرتا ہے جس سے آپ کے جسم میں توانائی کا طوفان پیدا ہوتا ہے اور جب یہ طوفان ٹھنڈا ہوتا ہے تو آپ سُستی محسوس کرنا شروع کر دیتے ہیں۔
 
جلد کا پھٹنا اور الرجی کرنا
زیادہ میٹھے کھانے ہمارے جسم میں انسولین لیول کو ہائی کرنے کا باعث بنتے ہیں اور جب یہ لیول زیادہ دیر تک ہائی رہتا ہے تو یہ شوگر کے مالیکیولز کو پروٹین کے ساتھ باونڈ کرنا شروع کردیتا ہے اور گلائیکیشن پیدا کرتا ہے اور جب یہ گلائیکیشن خون میں شامل ہوتی ہے تو یہ سوزش کیساتھ ساتھ جلد کی بیماریوں کو جنم دینا شروع کر دیتی ہے۔
 
موٹاپا پیدا ہوا
جسم میں انسولین کی زیادہ مقدار جسم کے درمیانی حصوں پر چربی پیدا کرنے کا باعث بنتی ہے اور اگر آپ کا پیٹ موٹا ہورہا ہے اور یہ زیادہ میٹھا کھائے جانے کی ایک نشانی ہو سکتی ہے۔
 
دانت میں کیڑا
سویٹ فوڈز دانتوں میں پیلاہٹ اور کیڑا پیدا کرنے کا بڑا سبب ہیں اور جب چاکلیٹ، کیرمل جیسے میٹھے کھانے آپ کے دانتوں میں پھنس جاتے ہیں تو یہ کیڑا لگنے کے عمل کو بہت زیادہ تیز کر دیتے ہیں۔
 
مہینے میں کئی دفعہ نزلہ زکام ہونا
ہمارے مزیدار میٹھے کھانے ہمارے ایمیون سسٹم کے سیلز کو نزلہ زکام وغیرہ پیدا کرنے والے بیکٹریا کو ختم کرنے سے منع کر دیتے ہیں نتیجتاً یہ بیکٹریا ہمارے جسم پر اکثر حملہ آور ہوکر ہمیں بیمار کرنا شروع کر دیتے ہیں۔
 
پیٹ پُھولنا یعنی بلوٹینگ
پیٹ میں بلوٹینگ، تکلیف دہ گیس اور ہاضمے میں خرابی صحت کے لیے غیر مُفید کھانوں سے پیدا ہوتی ہے اور زیادہ میٹھا کھانا بھی ان خرابیوں کی ایک وجہ ہے اور یہ میٹھا کھانا بڑی آنت میں گیس پیدا کرنے والے بیکٹریا کا اضافہ کرتا ہے اور پیٹ میں بلوٹینگ پیدا کرتا ہے۔
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
21 Dec, 2020 Views: 3179

Comments

آپ کی رائے