سوچنے کی باتیں اور آنسو بھری یاد ۔۔۔ !

(Schehryar Ahmed, )

اچھے اور نیک لوگوں کی صحبت میں رہو
نیک لوگوں کی صحبت اختیا ر کر نے والا کبھی بد بخت نہیں ہو سکتا ، کیو نکہ نیک لو گو ں کی صحبت شیطا نی خیالات وسوسوں کو دور کرنے کا ایک اہم ذریعہ ہے ، اس کے بر عکس خلوت و تنہا ئی شیطا نی خیالات وسوسوں سے قلبِ بے چینی ، اطمینان و راحت کا فقدان اور برے خیالات کو جنم دیتی ہے ، کیو نکہ بھیڑیا دور اور الگ تھلگ رہنے وا لی بکری ہی کو لقمہ بنا تا ہے ۔ ہم سب کو چا ہیے کہ اچھے اور نیک لوگوں کی صحبت اختیار کریں ، علمائے کرام کے ساتھ رہیں ، عالم دین حضرات کی عزت اور قدر کریں۔ مثبت سوچ رکھیں ، اپنے غصے کو کنٹرول میں رکھیں ، فضول گو ئی سے اجتناب کریں ، اچھی اور سچی با ت کریں ورنہ خاموش رہیں ، اﷲ کا ذکر کریں ، لوگوں کی مدد کریں ، انسا نیت کی عزت کریں ، گھمنڈ اورلا لچ سے پر ہیز کریں ، آ خرت پر تو جہ دیں ، دھو کہ اور قتل و غارت گیری نہ کریں ، امن اور سکون قائم کریں ، عدل اور انصا ف قا ئم کریں ، حق اور سچ کی مدد کریں۔
٭٭٭
قیمتی با تیں
اپنی زندگی کو بہتر اور پر سکو ن بنا نے کیلئے نماز با قا عدگی سے پڑھیں ۔ یا حیی یا قیو م کا ورد کریں ۔ عفوودر گزر سے کام لیں ۔ دوسروں کی را ئے کا احترام کریں ۔ زند گی میں میانہ روی اختیا ر کریں ۔ مفاد عامہ کے کا مو ں میں حصہ لیں ۔ انا کے خول سے با ہرآ کر مثبت طرز فکر اور رویہ اپنا ئیں ۔ غیبت اورجھوٹ سے بچیں ۔ ظالمانہ رویہ تر ک کر دیں ۔ نفر ت کینہ بغض اور شک کر نا چھوڑ دیں ۔ کسی سے مسکرا کر اخلاق سے ملنا بھی نیکی ہے ۔ اسلامی تعلیمات پر عمل کریں ۔ ذکر و اذکار کا اہتمام کریں تبھی سبھی مشکلیں اور پر یشانیاں ختم ہو سکتی ہیں ۔ نر می اور رحمدلی کو اپنا ئیں ۔ اچھی سو چ رکھیں ۔ اپنی حا جتو ں اور ضرورتو ں کی فر یا د صرف اور صرف اﷲرب العزت سے ہی کریں ۔ اﷲسے دعا کریں ،ثا بت قدم رہیں ، صبر اور شکر کریں ۔استقا مت اور دلجمعی کے ساتھ اﷲ کی مخلو ق کی عزت اور خد مت کریں ، اپنی زندگی کو آ سان بنا نے کی کو شش کریں ۔ اچھے خیالات کے ساتھ آ گے بڑھیں ۔ اﷲ کو راضی کر نے کی کو شش اور فکر کریں ۔ دین داری کو اپنا ئیں ۔ ان باتو ں پر عمل کر نے کی کو شش کریں اور اپنی زندگی پر سکو ن بنا ئیں ۔
٭٭٭
دعا
یااﷲ تو بڑا رحمن اوررحیم ہے ۔ اگر میری روزی آسمان میں ہے تو نازل فر ما ۔ اگر زمین کے اندر ہے تو ظا ہر فر ما ۔ اگر دور ہے تو قریب کر دے ۔ اگر قریب ہے تو مجھے عطا فر ما اوراگر مجھے دے چکا ہے تو اس میں بر کت عطا فرما ۔ زکو ۃ ، فطرانہ ،صدقات دینے کی تو فیق عطا فر ما ۔ یا اﷲ تیرا لاکھ شکر ہے ، کروڑوں احسانات ہیں ۔ ہم دن بھر کتنے بھی گناہ کر لیں مگر تو اپنے گنہگاربندوں کے لیے رزق کا دروازہ بند نہیں کرتا ۔ یا اﷲ میرا اور میرے تمام دوست احباب جو یہ دعا پڑھ رہے ہیں ، ایڈیٹر صاحب جملہ افراد اسٹا ف اخبا رات میں شا ئع کر رہے ہیں ، دوست احباب جو واٹس ایپ پر پڑھ رہے اور دوسروں کو بھیج رہے ہیں وہ تمام لو گو ں کے حق میں اپنی رحمت سے رزق میں بر کت و کشا د گی عطا فر ما ۔ آ مین ۔۔۔
٭٭٭
انسانیت کا سبق
آج لوگوں کو انسا نیت کا سبق پڑھانا بہت ضروری ہے ، آج لو گ انسا نیت اور اخلاقیت کا سبق بھول کر ریا کا ری اور منا فقت گیری میں ملوث ہیں ، لوگو ں کو انسا ن کی عزت اور خد مت کے با رے میں بتا نا اور سمجھایا جا ئے ، لو گو ں کو انسا نیت کی عزت کر نا سکھایا جا ئے ، انسا نیت کا سبق یا د کر وا یا جائے ، اچھے اخلاق و کردار اور نر می و رحمدلی کو اپنایا جائے ، تکبر اور غرور کر نا چھوڑا جائے ، شریف اور عزت دار لو گو ں کی قدر کرنا سیکھا جائے ، اور اس پر عمل کر نے کی کوشش کریں ۔

عا جزی اور انکسا ری اختیا ر کریں ، کسی کو حقیر مت سمجھیں ، سا د گی و شرا فت کا نا جا ئز فا ئدہ مت اٹھا ئیں ، سا د گی اور نر می کو کمزوری کی علامت مت سمجھیں ، سا د گی اور نر می رسو ل اﷲ ﷺ اختیار کیا کر تے تھے ، عزت دار اور مو من بندے تو سا دگی اور نر می ہی اختیار کر نے وا لے ہیں، اﷲ پا ک بھی سا د گی اور نر می اختیار کر نے وا لو ں کو پسند کر تے ہیں ، منافق اور ریا کار لو گ سا د گی و نر می کو کمزوری اور نا کا می کی علا مت سمجھتے ہیں ، مذہب اسلام سا ری انسا نیت کو سا د گی اور نر می اختیار کر نے کا پیغام دیتا ہے ۔
٭٭٭
آسماں تیری لحد پر شبنم افشا نی کرے مرحو مہ و مغفو رہ محتر مہ قبلہ ما ں جی صا حبہ کی یا د تو مسلسل آ رہی ہے ۔ ما ں جی صو م و صلٰوۃ کی پا بند تھیں ۔ مذہبی و سما جی کا مو ں میں پیش پیش رہتی تھیں ۔ ہر کسی کی فکر کر تی تھیں ۔ کبھی کسی کو خا لی ہاتھ نہ جا نے دیتی تھیں ۔ دعا ہے کہ اﷲ تعا لیٰ ان کی مغفرت فر ما ئے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فر مائے ۔آمین
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Schehryar Ahmed

Read More Articles by Schehryar Ahmed: 16 Articles with 30720 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
20 Jan, 2021 Views: 390

Comments

آپ کی رائے