سچ تو یہ ہے (۳۴واں حصہ)

(Muhammad Siddique Prihar, Layyah)

 منظر۲۳۸
سمیراچولھے کے ساتھ صفائی کررہی ہے۔ اریبہ اس کے ساتھ کھڑی ہے سمیراچولھے کے ساتھ بکھری ہوئی لکڑیاں اکٹھی کرتی ہے۔
اریبہ۔۔۔۔سمیراسے۔۔۔۔چچی راشدہ کی طرف توکل جانا دیکھ کرآؤ وہ کس حال میں ہیں
اسی دوران دروازے پردستک ہوتی ہے
اریبہ۔۔۔سمیراسے۔۔۔۔دروازے پردیکھو کون آیاہے ۔سمیرااوررحمتاں آتی ہیں
رحمتاں۔۔۔۔اریبہ سے۔۔۔۔سمیراکوکھاناتیارکرنے دو آپ سے کوئی بات کرنی ہے
دونوں صحن میں کرسیوں پربیٹھ جاتی ہیں۔ سمیراایک میزاٹھاکرلے آتی ہے اوراریبہ اوررحمتاں کے درمیان رکھ دیتی ہے
رحمتاں۔۔۔۔صابراں بتارہی تھی کہ عبدالمجیدنے راشدہ کوکمرے میں بندکررکھاتھا ایساکیاکردیاتھا اس نے اسے کمرے میں بندکردیا
اریبہ۔۔۔۔اس نے ایساکچھ نہیں کیا یہ سب ہماری وجہ سے ہواہے
رحمتاں۔۔۔۔تمہاری وجہ سے میں سمجھی نہیں
اریبہ۔۔۔۔۔ہم عبدالمجیدکوسمجھانے گئے تھے کہ بچوں کے ساتھ اتنی سختی نہ کرے احمدبخش کی حالت تودیکھنے والی ہے۔
سمیراجگ میں پانی اوردوگلاس لے آتی ہے سمیراچلی جاتی ہے
رحمتاں۔۔۔۔احمدبخش کی حالت توواقعی دیکھنے والی ہے
اسی دوران ایک بارپھردروازے پردستک ہوتی ہے سمیرادروازہ کھولتی ہے توسامنے بشیراحمدکھڑاہے
سمیرا۔۔۔۔السلام علیکم
بشیراحمد۔۔۔وعلیکم السلام
اریبہ۔۔۔اس کابچوں پرنہ جانے کیااثرپڑے گا ہم نے عبدالمجیدسے کہا کہ اس نے اپناسخت رویہ جاری رکھاتواحمدبخش بیمارہوجائے گا
بشیراحمد۔۔۔۔وہ بیمارہوگیاہے اس کواس کے دوست لڑکے رکشے پرلائے ہیں وہ توخودچل بھی نہیں سکتاتھا
اریبہ۔۔۔۔ہمیں اس کے پاس چلناچاہیے
بشیراحمد۔۔۔۔فیاض مولوی صاحب کولینے گیاہے مولوی صاحب چلے جائیں تم پھرچلی جانا ابھی چارپائی دے دو لے کرجانی ہے
رحمتاں۔۔۔۔اب کیسی حالت ہے اس کی
بشیراحمد۔۔۔۔ابھی تک وہ خاموش ہے کوئی بات نہیں کررہا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۳۹
اخترحسین، عمیرنواز، ارشدجمال اورظفراقبال کریانہ کی ایک دکان میں بیٹھے ہیں۔
عمیرنواز۔۔۔۔جس طرح ہم نے خریدای کرنی ہے اس طرح تووقت لگ جائے گا
ظفراقبال۔۔۔۔یہ ہم چھوٹے دکانداروں کی بھلائی کے لیے کررہے ہیں ہم نے جتناسامان خریدناہے ایک ہی دکان سے مل سکتاہے
اخترحسین۔۔۔۔ہم یہ باتیں پہلے بھی کرچکے ہیں اب صرف خریداری پرتوجہ دیں
دکاندار۔۔۔۔۔کیاچاہیے
ارشدجمال۔۔۔۔دس دس کلوگرام چاول کے تین پیکٹ دے دو
دکاندار۔۔۔۔چاول تولتے ہوئے ۔۔۔۔اورکیاچاہیے
عمیرنواز۔۔۔۔دو ،دوکلوگرام چینی کے بھی تین پیکٹ دے دو
اخترحسین۔۔۔۔ایک ایک کلودال چناکے بھی تین پیکٹ دے دو
دکانداریہ ساراسامان تول کران کے سامنے رکھ دیتاہے
دکاندار۔۔۔۔آپ نے گھی نہیں لیا نمک مرچ بھی نہیں لیے
ظفراقبال۔۔۔۔۔یہ سامان بھی تولیناہے
اخترحسین۔۔۔۔۔یہ چیزیں ہم دیہات میں دکانوں سے خریدیں گے
عمیرنواز۔۔۔۔دکاندارسے۔۔۔۔اس سامان کابل بنادو
اخترحسین دکاندارکوسامان کابل دیتاہے ۔اخترحسین اوراس کے ساتھی یہ سامان ایک رکشے میں رکھتے ہیں
ارشدجمال۔۔۔۔اب ہمیں کریانہ کی کسی اوردکان میں جاناچاہیے
ظفراقبال۔۔۔۔دس ،دس کلوگرام کی بجائے ایک ساتھ تیس کلوگرام چاول خریدلیتے تو
اخترحسین۔۔۔۔ہم یہ ایک ،ایک پیکج اس میں گھی اورمرچ مصالحے وغیرہ ڈال کرمقابلوں میں حصہ لینے والی خواتین کودیں گے
عمیرنواز۔۔۔۔دس کلوچاول زیادہ نہیں؟ پانچ کلوہونے چاہییں
اخترحسین۔۔۔۔وہ نمکین، میٹھے اورپلاؤ ایک ایک کلوپکائیں گی تین کلوگرام توا س طرح خرچ ہوجائیں گے
ارشدجمال۔۔۔۔پانچ ،پانچ کلوچاول بھی دے دیں تب بھی دوکلوگرام توبچتے ہیں
اخترحسین ۔۔۔۔گھرمیں مہمان آجائیں تو دوکلوگرام چاول توایک ہی مرتبہ پکالیے جائیں گے
ظفراقبال۔۔۔۔۔ایک ایک گھرکی دو،دو چار،چارخواتین مقابلوں میں حصہ لے رہی ہیں
اخترحسین۔۔۔۔ٹھیک ہے چاول پانچ کلوکردو باقی سامان اسی طرح رہنے دو جس گھرسے ایک لڑکی پکوان کے مقابلوں میں حصہ لے رہی ہو اس کودس کلوگرام ہی دینا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۰
عبدالمجیداحمدبخش کوہاتھ سے پکڑکراٹھانے لگتاہے تو
کریم بخش۔۔۔۔۔یہ کیاکررہے ہو
عبدالمجید۔۔۔۔۔اسے گھرمیں لے کرجارہاہوں
اسی دوران بشیراحمدچارپائی لے کرآجاتاہے
کریم بخش۔۔۔۔اسے ابھی کچھ نہ کہو سونے دو
بشیراحمد۔۔۔۔کیوں کیاہوا
کریم بخش۔۔۔۔۔آپ کابھائی اس بچے کوگھرمیں لے کرجاناچاہتاہے
بشیراحمد۔۔۔۔مولوی صاحب بھی توآرہے ہیں جب تک وہ نہیں آجاتے تب تک اسے گھرنہ لے کرجائیں
کریم بخش۔۔۔۔۔اس بچے کوہواکیاہے
عبدالمجید۔۔۔۔کچھ بھی نہیں ہوا
بشیراحمد۔۔۔۔عرفان اوراشرف سے۔۔۔۔۔بیٹا تم بتاؤ اسے کیاہواہے
اسی دوران مولوی صاحب بھی آجاتے ہیں۔
مولوی صاحب۔۔۔۔۔احمدبخش کودیکھ کر۔۔۔۔۔اسے کیاہواہے
کریم بخش۔۔۔۔عرفان اوراشرف کی طرف اشارہ کرتے ہوئے۔۔۔۔۔یہ بچے اس کولے کرآئے ہیں ہم بھی ان سے یہی پوچھ رہے ہیں
اشرف۔۔۔۔ہم تینوں دوست روزانہ ایک ساتھ سکول جاتے اورواپس آتے ہیں آتے جاتے ہوئے روزانہ باتیں بھی کرتے ہیں
عرفان۔۔۔۔آج صبح جب ہم سکول جارہے تھے تویہ خاموش تھا ہم کوشش کرتے رہے کہ یہ بولے کوئی بات کرے مگریہ خاموش رہا
اشرف۔۔۔۔۔ہم نے سمجھا یہ کسی وجہ سے ہم سے ناراض ہے اس لیے بات نہیں کررہا
عرفان۔۔۔۔۔یہ سکول میں بھی چپ رہا استادصاحب اسے کہتے رہے کتاب لے آؤ سبق سناؤ
اسی دوران عارف بھی آجاتاہے اورخاموشی سے کھڑاہوجاتاہے
عرفان۔۔۔۔۔یہ خاموش رہا ایسے لگتاتھا جیسے اس نے کچھ سناہی نہیں
اشرف۔۔۔۔استادصاحب نے دواوراستادصاحبان کوبلایا انہوں نے اسے دیکھا اورکہا یہ بچہ کسی ذہنی دباؤ میں ہے اس نے کچھ ایسادیکھ لیاہے جوبارباراس کے سامنے آرہاہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۱
رحمتاں۔۔۔۔اریبہ سے۔۔۔۔۔اب احمدبخش کاکیاہوگا
اریبہ۔۔۔۔۔ہمیں تواس کی حالت دیکھ کر کئی دنوں سے یہ لگ رہاتھا ہم نے اس کے باپ کوبھی سمجھانے کی کوشش کی اسے توکسی کی بات پریقین ہی نہیں آتا
رحمتاں۔۔۔۔۔مجھے توخطرہ محسوس ہورہاہے کہیں احمدبخش
اریبہ۔۔۔۔اﷲ سے دعاکرو جیساآپ سوچ رہی ہیں ویسا نہ ہو
اریبہ۔۔۔سمیراسے۔۔۔۔۔ایک چارپائی اوربسترتیارکرو اچھاساکھانابناؤ
سمیرا۔۔۔۔ابھی کھانے کاوقت تونہیں ہوا
اریبہ۔۔۔۔۔مولوی صاحب آگئے ہوں گے احمدبخش کے پاس بیٹھے ہوں گے ان کوبلائیں گے کھاناکھلائیں گے ان سے دعابھی کرائیں گے
رحمتاں۔۔۔۔۔میں بھی کچھ نہ کچھ بنالیتی ہوں اورمولوی صاحب سے دعاکرالیتی ہوں
اریبہ۔۔۔۔۔ٹھیک ہے
رحمتاں اٹھ کرچلی جاتی ہے سمیراصندوق سے نیابسترنکالتی ہے اورایک چارپائی پررکھ دیتی ہے
سمیرا۔۔۔۔اریبہ سے۔۔۔۔۔امی کیابناؤں روٹی اورسالن بنانے میں تووقت لگے گا اتنی دیرمیں مولوی صاحب چلے نہ جائیں
اریبہ۔۔۔۔سویاں پڑی ہیں تو وہ بنالو اورسوجی کاحلوہ بھی بنالو
سمیرا۔۔۔۔ہاں یہ بنالیتی ہوں
اریبہ۔۔۔۔تیراابویابھائی آئیں توان سے کہنا چندمنٹ کے لیے مولوی صاحب کوگھرمیں لے آئیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۲
ایک کھلے میدان میں ٹینٹ اورقناتوں سے پنڈال بناہواہے۔ پنڈال میں دوسوکرسیوں اوراسٹیج پررکھی ہوئی بیس کرسیوں پرمہمان اورمعززین بیٹھے ہیں۔ ایک شخص قرآن پاک کی تلاوت کرتاہے ایک اورشخص امام احمدرضاخان کی لکھی ہوئی نعت شریف سناتاہے۔ اس کے بعداجتماعی دعاکرائی جاتی ہے۔
اخترحسین۔۔۔۔مقابلے کرانے میں دوہفتے رہ گئے ہیں آپ نے جوفنڈزجمع کرائے تھے اس سے ہم نے گوشت کے علاوہ خریداری کرلی ہے
عبدالغفور۔۔۔۔۔گوشت ہم اس دن خریدیں گے۔جس دن مقابلہ ہوگا گوشت پلاؤ بنانے کامقابلہ بھی اسی دن کرالیں گے تاکہ گوشت باربارنہ خریدناپڑے۔
ناصراقبال۔۔۔۔۔یہ سامان گھروں میں کیسے تقسیم کریں گے
اخترحسین۔۔۔۔اس کے لیے چارافرادکی ایک کمیٹی بنادیتے ہیں جومقابلوں سے ایک ہفتہ پہلے یہ سامان تقسیم کرکے آئے گی۔
رب نواز۔۔۔۔کمیٹی میں کون کون شامل ہوگا
اخترحسین۔۔۔۔اس کافیصلہ سب لوگ مل کرکریں
رشیداحمد۔۔۔۔لڑکیاں مقابلوں میں حصہ لینے کے لیے گھروں میں بارابرپکوان بنائیں گی اس پران کے گھروالوں کے اخراجات بھی آئیں گے
اخترحسین۔۔۔۔۔سامان میں دس دس ہزارروپے بھی رکھ دو
عمیرنواز۔۔۔۔۔انہوں نے یہ پیسے واپس کردیے تو
تنویراحمد۔۔۔۔اس کاایک حل میرے پاس ہے وہ یہ کہ گفٹ پیک ڈبے بنوائے جائیں پیسے ان ڈبوں میں رکھ کرلکھ دیاجائے خصوصی تحفہ
اخترحسین۔۔۔۔۔یہ اچھامشورہ ہے اس طرح کوئی پیسے واپس بھی نہیں کرے گا آئندہ اجلاس سامان تقسیم ہوجانے کے بعدکریں گے۔ اس سے پہلے مولوی صاحب سے ایک ملاقات بھی کرلیں گے۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۳
جاویداورصابراں بکریاں باندھ رہے ہیں
جاوید۔۔۔صابراں سے۔۔۔۔میں مٹی ڈال دیتاہوں تم اس کوبرابرکردو
اس کے ساتھ ہی وہ مٹی اٹھانے کے لیے کھڑاہوجاتاہے اسی دوران رحمتاں آجاتی ہے
رحمتاں۔۔۔۔آپ یہاں بکریاں باندھ رہے ہیں وہاں آپ کابھتیجا بیمارپڑاہے
جاوید۔۔۔۔کون سابھتیجا اورکیاہواہے اسے
رحمتاں۔۔۔۔۔میں اریبہ سے کوئی بات کرنے گئی توآپ کے بھائی آگئے وہ بتارہے تھے کہ احمدبخش سکول سے بیمارآیاہے چپ ہے کوئی بات بھی نہیں کررہا
جاوید۔۔۔۔۔مجھے بھی اس کے پاس جاناچاہیے
رحمتاں۔۔۔۔مولوی صاحب بھی آگئے ہوں گے ان کوگھرلے آنا میں کوئی پکوان بنوالیتی ہوں ان سے گھرکے لیے اوربچیوں کے لیے دعاکرالیں گے
جاوید۔۔۔۔ٹھیک ہے لے آؤں گا
یہ کہتے ہی وہ چلاجاتاہے
رحمتاں ۔۔۔۔صابراں سے۔۔۔۔۔یہ کام تیری بہنیں کریں گی توکمرے میں اچھاسابستربچھادے اوردوتین پکوان بھی تیارکرلے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۲۴۴
اشرف۔۔۔۔۔سکول میں ہی اس کی یہ حالت ہوگئی استادصاحب نے حکم دیاکہ اسے رکشے پرگھرلے جاؤ
مولوی صاحب۔۔۔۔۔۔اس بچے نے ایساکچھ ضروردیکھ لیاہے جس کااثراس کے دماغ پرپڑاہے
مولوی صاحب۔۔۔۔۔عبدالمجیدسے۔۔۔۔۔آپ ہی بتائیں آپ کے بیٹے نے ایساکیادیکھ لیاہے
عبدالمجید۔۔۔۔۔اس نے ایساتوکچھ نہیں دیکھا
کریم بخش۔۔۔۔۔بچے کی یہ حالت پھرکیسے ہوگئی
عبدالمجید۔۔۔۔۔یہ صرف کام نہ کرنے اورسکول نہ جانے کابہانہ بنارہاہے
مولوی صاحب۔۔۔۔۔یہ بہانہ نہیں ہے اس کی شکل بتارہی ہے کہ یہ بیمارہے
عبدالمجید۔۔۔۔ابھی دو تھپڑلگ جائیں یہ ٹھیک ہوجائے گا
مولوی صاحب۔۔۔۔۔عبدالمجیدسے۔۔۔۔۔آپ کوکہاتھا بچوں پراتنی سختی نہ کرو حکمت عملی سے کام لو
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں تواس پرکوئی سختی نہیں کرتا
اسی دوران جاویدبھی آجاتاہے
کریم بخش۔۔۔۔۔ابھی تھوڑی دیرپہلے ہی تو توکہہ رہاتھا میں نے گھرمیں کنٹرول رکھاہواہے کوئی فرمائش ہی نہیں کرتا
مولوی صاحب۔۔۔۔۔جب گھرمیں اوربچوں پرزیادہ سختی کی جائے تو ڈرکی وجہ سے کوئی فرمائش نہیں کرتا
بشیراحمد۔۔۔۔۔یہ اس کی بے جاسختی کانتیجہ ہے
مولوی صاحب۔۔۔۔بشیراحمدسے۔۔۔۔۔کیاآپ بتاسکتے ہیں احمدبخش نے ایساکیادیکھ لیاہے جس کی وجہ سے
بشیراحمد۔۔۔۔۔ہاں اس بچے نے ایساہی کچھ دیکھاہے مگرمیں بتانہیں سکتا
مولوی صاحب۔۔۔۔اس بچے کوسونے دو اس کوبیدارنہیں کرنا یہ خوداٹھ جائے تواسے کوئی کام بھی نہ کرنے دینا اسے کل سکول بھی نہ بھیجنا کل میں بچوں کوقرآن پاک کاسبق دے کرآؤں گا اب مجھے اجازت دیں
کریم بخش۔۔۔۔عارف سے۔۔۔۔مولوی صاحب کومسجدمیں چھوڑ کرہم گھرچلے جائیں گے
عارف۔۔۔۔۔ان سے کرایہ بھی تولیناہے
کریم بخش۔۔۔۔۔میں دے دوں گا
بشیراحمد۔۔۔۔مولوی صاحب گھروالوں نے
مولوی صاحب۔۔۔۔۔اب رات ہورہی ہے کل آؤں گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Muhammad Siddique Prihar

Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 338 Articles with 154578 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
02 Feb, 2021 Views: 211

Comments

آپ کی رائے