اپنے بچے کو ڈاکٹر بناؤں یا انجینیئر... کیا اب پاکستان میں ڈاکٹر بننا ’گھاٹے کا سودا‘ بن چکا ہے؟

 
ایک وقت تھا کہ پاکستان میں بچے کی پیدائش کے ساتھ ہی یہ منصوبہ بندی شروع ہو جاتی تھی کہ اسے ڈاکٹر بنایا جائے یا انجینیئر۔ والدین کی اس نوعیت کی خواہشات اور اُن کا بار بار تذکرہ بچوں کے ذہن میں یہ سوچ پختہ کر دیتا تھا کہ اُن کی کامیابی کا تمام تر دارومدار ڈاکٹر یا انجینیئر بننے پر ہی ہے۔
 
اور وقت کے ساتھ والدین کا یہ خواب بچوں کا خواب بن جاتا اور ’بڑے ہو کر کیا بنوں گی/گے‘ کا جواب اکثر ’بڑی ہو کر ڈاکٹر بنوں گی‘ یا ’انجینیئر بنوں گا۔‘
 
مگر ایسا لگتا ہے کہ حالات نے اب کچھ پلٹا کھایا ہے اور ’ڈاکٹر‘ بننے کا خواب نہ تو بچوں اور نہ ہی ان کے والدین کو کچھ زیادہ لبھاتا ہے۔
 
پاکستان میں آئے روز ہی ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج جاری رہتا ہے۔ بی بی سی نے ملک کے بعض سرکاری ہسپتالوں میں کام کرنے والے اِن ینگ ڈاکٹرز سے ملاقات کی اور جاننے کی کوشش کی کہ وہ مسائل جن کا ان کے بقول ’انبار لگا ہے‘ آخر ہیں کیا؟
 
 
Partner Content: BBC Urdu
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
13 Oct, 2021 Views: 1087

Comments

آپ کی رائے