نیند کی قربانی دو اور حاصل کرو بریانی، پاکستان کے ایک شہر میں بریانی کی فروخت کا انوکھا وقت، خریداروں کی قطاریں کچھ اور ہی کہانی سنا رہی ہیں

 
رات گئے جب انسان کو بے وقت کی بھوک ستاتی ہے تو اس وقت بازار سے اکثر جو کھانے پینے کی چیزیں ملتی ہیں وہ یا تو بچی کچھی ہوتی ہیں یا پھر ان کا ذائقہ بہت بہتر نہیں ہوتا ہے- باربی کیو یا فاسٹ فوڈ تو رات گئے مل بھی جاتا ہے لیکن اگر آپ بریانی کھانے کے خواہشمند ہیں تو اس کے لیے آپ کو صبح تک انتطار ہی کرنا پڑتا ہے-
 
لیکن آج ہم آپ کو ایک ایسی جگہ کے بارے میں بتا رہے ہیں جہاں کی بریانی کھانے کے لیے آپ کو رات بھر جاگنا پڑے گا اور نیند کی قربانی دینی پڑے گی- لیکن جو لوگ اس بریانی کے ذائقے سے واقف ہیں ان کے لیے یہ نیند کی قربانی کے بعد لذیذ اور ذائقہ دار بریانی کی شکل میں ملنے والا انعام ہر تکلیف کو ختم کر دیتا ہے-
 
بریانی کی یہ دکان سبحان اللہ کے نام سے حیدرآباد کے اسٹیشن اور پکا قلعہ کے قریب عامر نامی شخص چلا رہا ہے جس کا یہ کہنا ہے کہ اس نے اس دکان کا آغاز پانچ چھ سال قبل کیا تھا۔ اس دکان کی سب سے خاص بات یہ ہے کہ اس دکان میں بریانی کی فروخت کا آغاز ہی رات دو بجے کے بعد ہوتا ہے جو کہ صبح آٹھ بجے تک جاری رہتی ہے-
 
 
اس دوران وہ آٹھ سے دس دیگیں فروخت کر دیتا ہے رات کے اس پہر ان کی بریانی کی اتنی فروخت کا سبب ان کے نزدیک اس کا ذائقہ ہے جس پر وہ کسی قسم کے سمجھوتے کے قائل نہیں ہیں- اور پہلے دن سے لے کر اب تک مصالحہ جات، چاول گوشت ہر قسم کی خریداری میں وہ کوالٹی کو سب سے زيادہ اہمیت دیتے ہیں-
 
اس کے بعد ان کا یہ بھی ماننا ہے کہ انہوں نے قیمت بھی جائز رکھی ہے اور بیف بریانی کی ایک پلیٹ 80 روپے میں دستیاب ہوتی ہے اور وہ جائز منافع کے قائل ہیں یہی وجہ ہے کہ ان کے گاہکوں کی تعداد میں روز بروز اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے-
 
ان کے گاہک صرف حیدرآباد ہی سے تعلق نہیں رکھتے ہیں بلکہ اندرون سندھ سے بھی بڑی تعداد میں افراد ان کی بریانی کی شہرت سن کر کھنچے آتے ہیں- جس کو خریدنے کے لیے پہلے ان کو ٹوکن کی قطار میں لگنا پڑتا ہے اور اس کے بعد بریانی لینے کے لیے بھی قطار میں طویل وقت تک کھڑا رہنا پڑتا ہے-
 
 
مگر ان کی لذیذ بریانی کے شوق میں لوگ رات بھر سونے کے وقت کو قربان کر کے یہ مشکلات خوشی خوشی برداشت کرنے کے لیے تیار ہو جاتے ہیں- رات کے اس وقت میں بریانی فروخت کرنے کی وجہ بیان کرتے ہوئے عامر صاحب کا یہ کہنا تھا کہ ان کے دوستوں نے ان کو مشورہ دیا کہ رات دیر گئے تک کچھ اچھا کھانے کی خواہش ہوتی ہے مگر کچھ اچھا کھانے کو نہیں ملتا ہے-
 
اس بات کو سن کر انہوں نے بریانی کے اس ہوٹل کا آغاز کیا جو کہ وقت کے ساتھ ساتھ اتنی مقبولیت اختیار کر گیا کہ اب لوگ باقاعدہ طور پر ان کی بریانی کے انتظار میں نہ صرف جاگتے ہیں بلکہ اس کی خریداری کے لیے ساری رات کی نیند بھی قربان کر دیتے ہیں-
 
اگر آپ نے اب تک یہ بریانی نہیں کھائی ہے تو ایک بار تو اس کو چیک کرنا بنتا ہے جو لوگ اس سے قبل یہ بریانی کھا چکے ہیں وہ بھی اپنی راۓ کمنٹ میں ضرور بتائیں-
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
06 Dec, 2021 Views: 3174

Comments

آپ کی رائے