سچ تویہ ہے (۵۳واں حصہ)

منظر۳۷۱
عبدالغفوراورظفراقبال عبدالمجیدکے گھرباہرموٹرسائیکل پرکھڑے ہیں۔ انہوں نے ایک گتے کابڑاڈبہ اٹھایاہواہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔کہیں عبدالمجیدلڑائی نہ شروع کردے
عبدالغفور۔۔۔۔۔میراتونہیں خیال کہ ایساکچھ ہوگا
ظفراقبال۔۔۔۔۔ہم دوباراس کے کھیتوں میں گئے اس نے ہمیں دیکھابھی ہے
عبدالغفور۔۔۔۔۔اس نے ہمیں دیکھاہے پہچانانہیں ہے دروازے پردستک دیں
ظفراقبال عبدالمجیدکے گھرکے دروازے پردستک دیتاہے
ظفراقبال۔۔۔۔دروازے پردستک دیتے ہی۔۔۔۔۔عبدالمجیدگھرمیں ہو کہیں چلانہ گیاہو
عبدالغفور۔۔۔۔۔ابھی اتناوقت تونہیں ہوا
ظفراقبال۔۔۔۔۔دیہاتی لوگ جلدی کام پرچلے جاتے ہیں
عبدالغفور۔۔۔۔۔یہ صرف کھیتوں میں جاتاہے
اس کے بعددونوں خاموش ہوجاتے ہیں ظفراقبال موٹرسائیکل پربیٹھ جاتاہے عبدالمجیددروازہ کھولتاہے عبدالغفوراورظفراقبال مل کراسے السلام علیکم کہتے ہیں عبدالمجیدسلام کاجواب دیتاہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔۔آج کادن ہم نے آپ کے ساتھ گزارناہے
عبدالمجید۔۔۔۔۔کیاابھی کچھ پوچھنارہ گیاہے
عبدالغفور۔۔۔۔۔ہم ایسی کوئی بات نہیں پوچھیں گے جس سے آپ کوپریشانی ہو
ظفراقبال۔۔۔۔۔۔گتے کاسیل بندڈبہ عبدالمجیدکی طرف بڑھاتے ہو۔۔۔۔۔۔یہ گھردے آئیں اس میں گوشت اوردیگرسامان ہے بھابھی سے کہو کھاناتیارکریں دوپہرکاکھاناہم مل کرکھائیں گے
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں کسی کااحسان نہیں لیاکرتا
ظفراقبال۔۔۔۔۔اس میں کسی کااحسان نہیں کھاناہم لائے ہیں پکائیں گے آپ آپ کی بیوی بچے بھی کھائیں گے اورہم بھی مل کرکھائیں گے یہ لیں اورگھردے آئیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۲
سعیداحمدگھرمیں آتاہے توبشریٰ اورعبدالحق ایک کمرے کاسامان باہرنکال رہے ہیں۔ وہ کمرے سے چارپائیاں نکال چکے ہیں۔ چارپائیوں پربرتن اورکپڑے بھی رکھے ہوئے ہیں
سعیداحمد۔۔۔۔آتے ہی۔۔۔۔۔یہ کیاہورہاہے
بشریٰ۔۔۔۔۔چھ ماہ سے اس کمرے کی صفائی نہیں ہوئی تھی اچھی طرح صفائی کررہے ہیں
سعیداحمد۔۔۔۔۔میں بھی مددکردوں
عبدالحق۔۔۔۔آپ صرف ہماری راہنمائی کریں
سعیداحمد۔۔۔۔الماری کیسے نکالیں گے
عبدالحق۔۔۔۔۔الماری امی نے خالی کردی ہے نکال لیں گے
سعیداحمد۔۔۔۔کچھ دیرکے لیے سانس لے لو
سعیداحمد،بشریٰ اورعبدالحق کمرے سے نکالی گئی چارپائیوں پربیٹھ جاتے ہیں۔
عبدالحق۔۔۔۔سعیداحمدسے۔۔۔۔۔ابوآپ نے چچاکوایک مشورہ دیاتھا وہ کب جارہے ہیں چچا عبدالمجیدسے ملنے
سعیداحمد۔۔۔۔وہ نہیں جارہے ہیں
عبدالحق۔۔۔۔رکشہ میں توکہہ رہے تھے
سعیداحمد۔۔۔۔۔وہ کہتے ہیں پہلے تیری امی اورچچی کوان کے گھرجاناچاہیے
سعیداحمد۔۔۔۔بشریٰ سے۔۔۔۔۔اس کی چچی سے بات کرلینا
بشریٰ۔۔۔۔۔ہم نے توان کاگھرنہیں دیکھاہوا
سعیداحمد۔۔۔۔عارف تمہیں ان کے گھرلے جائے گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۳
سمیرامقابلوں کے لیے پکوان بنانے کی تیاریوں میں مصروف ہے اس نے انٹیوں سے تین چولھے بنارکھے ہیں اس نے لکڑیاں بھی اکٹھی کرلی ہیں
بشیراحمد۔۔۔۔اریبہ سے۔۔۔۔۔بچی سارے کام اکیلے ہی کررہی ہے
اریبہ۔۔۔۔میں کیاکروں
بشیراحمد۔۔۔۔اس نے تین پکوان بنانے ہیں اس کاساتھ دے اس کی مددکر
اریبہ۔۔۔آج اس کاامتحان ہے میں اس کی کوئی مددنہیں کرسکتی
بشیراحمد۔۔۔۔اتناکام یہ کیسے کرے گی
اریبہ۔۔۔۔۔یہ جانے اوراس کاکام میں کچھ نہیں کرسکتی
فیاض دکان پرجانے لگتاہے
بشیراحمد۔۔۔۔فیاض سے۔۔۔۔۔آج کادن سے چھٹی کرلو
فیاض۔۔۔۔۔میں دکان سے چارروزکی چھٹیاں لے آیاتھا
بشیراحمد۔۔۔۔۔تیری ماں نے توتیری بہن کی مددکرنے سے انکارکردیاہے اب توہی اس کاہاتھ بٹادے
فیاض۔۔۔۔۔میں اس کی مددکیسے کرسکتاہوں میں نے توکبھی پکوان نہیں بنایا
بشیراحمد۔۔۔۔۔پکوان توتیری بہن خودبنائے گی
فیاض۔۔۔۔پھرمجھے کیاکرناہے
بشیراحمد۔۔۔۔۔تواس کوپانی بھرکردے سکتاہے پیازاورسبزمرچیں کاٹ کردے سکتاہے چولھے میں آگ جلاسکتاہے
فیاض۔۔۔۔۔میں یہ سارے کام کروں گا لیکن مزدوری بھی لوں گا
بشیراحمد۔۔۔۔ٹھیک ہے اس کی مزدوری میں دوں گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۴
پنڈال تیارکیاجارہاہے۔ رکشے والے ٹینٹ لگاچکے ہیں۔ صحن کی چاردیواری کے اورپراورشامیانے کے نیچے رنگ برنگے پردے بھی لگاچکے ہیں۔ صحن میں قالینیں بھی بچھاچکے ہیں۔ کئی رکشے والے میزیں درست کررہے ہیں میزوں کی ٹانگیں درست کررہے ہیں کئی افرادمل کرمیزیں اٹھااٹھاکرپنڈال میں ترتیب سے رکھ رہے ہیں دوافرادان کے میزوں کے اردگردکرسیاں لگارہے ہیں ایک شخص کپڑے سے میزوں کی صفائی کررہاہے ایک شخص کرسیوں کوکپڑے کی تھیلیوں سے کورکررہاہے اسی دوران ارشدجمال آجاتاہے وہ رکشے والوں کوکام کرتاہوادیکھ کرمسکرادیتاہے
ایک رکشے والا۔۔۔۔۔ارشدجمال کے پاس آکر۔۔۔۔۔صاحب جی دیکھ لیں کوئی کمی بیشی ہے توبتادیں
ارشدجمال۔۔۔۔آپ نے توبہترین پنڈال بنادیاہے سب کوبلاؤ
رکشے والا۔۔۔۔دوسرے رکشے والوں کوآوازدے کر۔۔۔۔۔کام روک دو آؤصاحب کی بات سنو
ارشدجمال۔۔۔۔۔مجھے صاحب نہیں بھائی کہو
رکشے والا۔۔۔۔۔ہم مزدورلوگ ہیں
ارشدجمال۔۔۔۔۔مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں
اسی دوران تمام رکشے والے اس کے پاس آجاتے ہیں
ارشدجمال۔۔۔۔۔اپنااپناکرایہ بتاؤ
ایک رکشے والا۔۔۔۔۔سامان کابھی بتائیں
ارشدجمال۔۔۔۔وہ ہم خوددیں گے تم صرف سامان لے آنے کاکرایہ بتاؤ
دوسرارکشے والا۔۔۔۔۔سات سوروپے یہ صرف لے آنے کاکرایہ ہے
ارشدجمال جیب سے پیسے نکال کرہرایک کوپانچ پانچ ہزارروپے دیتاہے
تیسرارکشے والا۔۔۔۔۔ہماراکرایہ توصرف سات سوروپے ہے
ارشدجمال۔۔۔۔۔یہ کرایہ نہیں تمہاراانعام ہے سامان لے آنے اورپنڈال سجانے کا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۵
عبدالغفوراورظفراقبال عبدالمجیدکے گھرسے تھوڑافاصلے پرالگ الگ چارپائیوں پربیٹھے ہیں ان کے ساتھ ایک چارپائی خالی رکھی ہوئی ہے
عبدالغفور۔۔۔۔دیکھو آپ ایسے ہی پریشان ہورہے تھے اس نے ہمیں پہچاناہی نہیں
ظفراقبال۔۔۔۔واقعی پہچان لیاہوتا توضروراس بارے بات کرتا
عبدالغفور۔۔۔۔ہاں وہ ہم پرغصہ کرتا
ظفراقبال۔۔۔۔وہ ہمیں ٹھہرنے بھی نہیں دیتا
دونوں عبدالمجیدکواپنی طرف آتاہوادیکھ کرخاموش ہوجاتے ہیں۔ عبدالمجیددوپیالیوں میں چائے لے آتاہے اوردونوں مہمانوں کوایک ایک پیالی دے دیتاہے۔عبدالمجیدایک چارپائی پربیٹھ جاتاہے ۔ظفراقبال کے سامنے چائے کی پیالی رکھی ہوئی ہے۔ عبدالغفورچائے کی پیالی منہ کے قریب لے جاتے ہوئے واپس اپنے سامنے رکھ دیتاہے ۔
عبدالغفور۔۔۔۔عبدالمجیدسے۔۔۔۔آپ اپنے لیے چائے کیوں نہیں لائے ایساکرتے ہیں یہ لو آدھی چائے تم پی لو آدھی میں پی لوں گا
عبدالمجید۔۔۔۔۔یہ میں آپ کے لیے ہی لایاہوں
عبدالغفور۔۔۔۔اورآپ
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں نے آپ کے آنے سے پہلے ہی پی لی تھی
(۳۱۰)
ظفراقبال چائے پی رہاہے ۔عبدالغفوربھی چائے پینے لگ جاتاہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔چائے کی پیالی ہاتھ میں لیے ہوئے۔۔۔۔۔آپ مصروف تونہیں تھے میرامطلب ہے کہیں جاناتونہیں تھا
عبدالمجید۔۔۔۔۔نہیں آج کوئی مصروفیت نہیں اچھاہوا آپ آگئے کچھ وقت آپ کے ساتھ گزرجائے گا
عبدالغفور۔۔۔۔۔چائے کے دوگھونٹ لینے کے بعد۔۔۔۔۔آج آپ کھیتوں میں بھی نہیں جائیں گے
عبدالمجید۔۔۔۔۔پہلے روزانہ جاتاتھا اب کبھی کبھی جاتاہوں
ظفراقبال۔۔۔۔چائے کی پیالی ایک طرف رکھتے ہوئے۔۔۔۔۔کیاہم اس کی وجہ پوچھ سکتے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔۔ایسالگتاہے کسی کومیراکھیتوں میں جاناپسندنہیں ہے کسی کوکیا میرے بھائی ہی نہیں چاہتے کہ میں کھیتوں میں کام کروں
عبدالغفور۔۔۔۔۔آپ ایساکیوں سوچتے ہیں آپ کے بھائی ایساکیوں چاہتے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔۔اس دن کے بعدبیٹا نہ گھرمیں آیا نہ کھیتوں میں اوراب
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۶
صابراں نے ایک چولھے پردیگچا چڑھایاہواہے۔چولھے میں آگ جل رہی ہے۔ وہ دیگچے میں کٹے ہوئے پیازاورٹماٹرڈالتی ہے رحمتاں اس کے ساتھ چارپائی پربیٹھ کرپیازکاٹ رہی ہے۔ صابراں کی دونوں بہنیں بھی اپنے اپنے چولھوں میں آگ جلارہی ہیں۔ رحمتاں اپنی دوچھوٹی بیٹیوں کوبلاتی ہے۔ دونوں بچیاں دوڑ کرماں کے پاس آکرکھڑی ہوجاتی ہے رحمتاں۔۔۔۔میں صابراں کے ساتھ مددکررہی ہوں تم دونوں اپنی ان دونوں بہنوں کے ساتھ ہوجاؤ ان کی مددکرو
رحمتاں کی دوسری بیٹی۔۔۔۔۔امی یہ ان کے پڑھنے اورکھیلنے کاوقت ہے یہ ہمارے ساتھ کیاکام کرائیں گی
رحمتاں۔۔۔۔۔جوکام بتاؤگی وہ یہ کریں گی ان کوایک بارسمجھادینا ویسے بھی کچھ نہ کچھ سیکھ ہی جائیں گی
صابراں اپنے دیگچے میں گوشت ڈالتی ہے۔ اس کی بہنیں اپنے اپنے دیگچوں میں پیازاورٹماٹرڈالتی ہیں
رحمتاں۔۔۔۔صابراں سے۔۔۔۔۔وقت بہت کم ہے ایک اورچولھابناکرمرغی کے گوشت کے لیے بھی الگ سے دیگچاچڑھالے
صابراں۔۔۔۔۔اس ہانڈی میں شوربے کے لیے پانی ڈال دوں پھردوسری ہانڈی بھی چڑھالیتی ہوں
صابراں کی بہنیں اپنے دیگچوں میں چمچ پھیررہی ہیں۔ ان کی چھوٹی بہنیں چولھوں میں آگ جلارہی ہیں
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۷
پنڈال سجانے کے بعدتمام رکشے والے گھرکی چاردیواری سے باہرکھڑے ہیں۔
پہلارکشے والا۔۔۔۔۔۔مجھے تویقین ہی نہیں آرہا اس معاشرے میں ایسے لوگ بھی ہیں
دوسرارکشے والا۔۔۔۔اکثرلوگ توکرایوں میں رعایت مانگتے ہیں ایسے لوگ توبہت کم ہیں جوپوراکرایہ دیتے ہیں
تیسرارکشے والا۔۔۔۔۔میں توکہتاہوں جب بھی نمازاداکیاکرو ان کے لیے ضروردعاکرلیاکرو
چوتھارکشے والا۔۔۔۔۔ایسے اچھے لوگوں کے لیے تودل سے دعانکلتی ہے
پانچواں رکشے والا۔۔۔۔اب گھرچلیں
دوسرارکشے والا۔۔۔۔۔ابھی تودوپہربھی نہیں ہوئی ابھی سے گھرچلیں
چوتھارکشے والا۔۔۔۔۔کام پرچلتے ہیں کوئی اورسامان بھی مل سکتاہے
پہلارکشے والا۔۔۔۔۔میں بھی یہی مشورہ دوں گا اب ہمیں گھرچلناچاہیے
تیسرارکشے والا۔۔۔۔۔لگتاہے آپ دونوں تھک گئے ہیں
پانچواں رکشے والا۔۔۔۔۔ہم تھک نہیں گئے آپ ہماری بات سمجھے ہی نہیں
پہلارکشے والا۔۔۔۔۔میں سمجھاتاہوں آج سے پہلے ہمارے لیے وہ دن خوش قسمت ہوتاتھا جس دن مزدوری کے ایک ہزارروپے ملتے تھے وہ بھی اس چکرکے ملتے ہیں جس کے بعددوسراچکرلگانے کاوقت ہوتاہے اورنہ ہی ہمت
چھٹارکشے والا۔۔۔۔میں بھی آپ سے اتفاق کرتاہوں آج ہمیں پانچ پانچ ہزارروپے مل گئے ہیں گھرجائیں اﷲ کاشکراداکریں آج کادن بچوں کے ساتھ گزاریں
پانچواں رکشے والا۔۔۔۔۔ان پیسوں سے کچھ نہ کچھ خیرات بھی ضرورکردینا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭



 

Muhammad Siddique Prihar
About the Author: Muhammad Siddique Prihar Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 375 Articles with 223111 views Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here.