سچ تویہ ہے (۵۴واں حصہ )

منظر۳۷۸
ظفراقبال۔۔۔۔۔اب کیاکیاہے تیرے بھائیوں نے
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں ایک دن کھیتوں میں کھال کے کنارے بیٹھاتھا دوشخص آئے دونوں نے ایک ہی رنگ کے لباس پہن رکھے تھے سر،منہ اورہاتھ چھپارکھے تھے عجیب عجیب حرکتیں بھی کررہے تھے
عبدالغفور۔۔۔۔وہ کون تھے
عبدالمجید۔۔۔۔۔دونوں نے خودکومکمل ڈھانپ رکھاتھا
ظفراقبال۔۔۔۔۔کیاکہتے تھے وہ
عبدالمجید۔۔۔۔۔ان میں سے کسی نے کچھ نہیں کہا
عبدالغفور۔۔۔۔۔آپ نے ان سے نہیں پوچھاکہ وہ کون ہیں کیوں آئے ہیں
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں ان سے پوچھنے کی کوشش کرنے لگاتودونوں غائب ہوگئے
ظفراقبال۔۔۔۔۔ایک بارایساہوا اورآپ نے کھیتوں میں جاناچھوڑ دیا
عبدالمجید۔۔۔۔ایسادوبارہوچکاہے دودن بعدکھیتوں میں گیاتودوشخص میرے کھیتوں کے الگ الگ کنارے پرچہل قدمی کررہے تھے وہ اپنے ہاتھوں میں لیے ہوئے ڈنڈوں کے ساتھ عجیب حرکتیں کررہے تھے
ظفراقبال۔۔۔۔وہ آپ سے لڑنے تونہیں آئے تھے
عبدالمجید۔۔۔۔۔میں نہیں جانتاوہ کیوں آئے تھے
عبدالغفور۔۔۔۔۔آپ نے کیاسوچاہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔مجھے نیندآرہی ہے
عبدالغفور۔۔۔۔۔یہ سونے کاوقت تونہیں ہے لیکن نہ جانے کیوں مجھے بھی نیندآرہی ہے
عبدالمجید۔۔۔۔آپ آرام سے سوجائیں میں پتہ کرتاہوں کھاناتیارہواہے یانہیں
عبدالغفور۔۔۔۔۔کھانااس وقت لے آناجب بچے سکول سے آجائیں
ظفراقبال۔۔۔۔نظررکھنا کوئی ہمیں سویاہوادیکھ کرکچھ لے نہ جائے
عبدالغفور۔۔۔۔۔کھاناکھاکرہم چلے جائیں گے دودن کے بعدآئیں گے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۷۹
فیاض عبدالمجیدکے گھرمیں آتاہے راشدہ پانی کے ساتھ گوشت دھورہی ہے۔
فیاض۔۔۔۔۔آپ بھی مقابلے میں حصہ لے رہی ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔کون سامقابلہ میں کسی مقابلے کے بارے میں نہیں جانتی
فیاض۔۔۔۔آج گوشت اورگوشت پلاؤ بنانے کامقابلہ ہے آپ کوگوشت دھوتے ہوئے دیکھا توسمجھاآپ بھی گوشت اس لیے بنارہی ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔یہ تیرے چچاکے مہمان لائے ہیں
فیاض۔۔۔۔۔باہرمیں نے چچاکے ساتھ دولوگ دیکھے ہیں
راشدہ۔۔۔۔اس نے ادھرآتے ہوئے دیکھاتونہیں
فیاض۔۔۔۔۔میں چھپ کراوردوسرے راستے سے آیاہوں
راشدہ گوشت دھوچکی ہے
فیاض۔۔۔۔گتے کاڈبہ دیکھ کر۔۔۔۔۔چچی اس میں کیاہے
راشدہ۔۔۔۔۔گوشت کاتھال گتے کے ڈبے کے ساتھ رکھتے ہوئے۔۔۔۔۔تیرے چچاکے مہمان لائے ہیں دیکھ لو کیاہے اس میں
فیاض۔۔۔۔ڈبہ کھولنے کے بعد۔۔۔۔۔اس میں توبہت سی چیزیں ہیں
راشدہ۔۔۔۔۔یہ چیزیں ڈبے سے باہرنکالو
فیاض گتے سے چیزیں باہرنکالتاہے اس میں پانچ کلوگرام چاول کے دوپیکٹ، ایک ایک کلوگرام دال چناکے دوپیکٹ، دس کلوگرام چینی کاایک پیکٹ، ایک کلوگرام گھی کے تین پیکٹ، ایک کلوگرام گڑاوردوکلوگرام سیب ہیں۔ اس میں ایک لفافہ بھی ہے۔ جس میں دس ہزارروپے ہیں۔ اس میں ایک پرچی پرلکھاہوافیاض چچی کوپڑھ کرسناتاہے۔ یہ سامان ہماری طرف سے عبدالمجیدکی بیوی اوربچوں کے لیے تحفہ ہے۔ قبول کریں۔ پیسے بچوں کے لیے ہیں۔ ان پرخرچ کیے جائیں۔ یہ تحفے اورپیسے بچوں کی ماں کے پاس رہیں گے۔
راشدہ۔۔۔۔ٹھیک ہے توآیاکس لیے تھا
فیاض۔۔۔۔۔میں دیگچالینے آیاتھا
راشدہ۔۔۔۔۔۔صندوق میں رکھاہے لے لو
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۸۰
مقابلے کرانے والی خواتین کمروں سے نکل کرگھرکے صحن میں آتی ہیں۔ پنڈال تیارہوچکاہے۔ میزیں اورکرسیاں ترتیب سے رکھی ہوئی اورکورہوچکی ہیں۔
پہلی خاتون۔۔۔۔۔۔یہ کام توہوچکا اب ہمیں گوشت اورپلاؤ آنے سے پہلے پہلے باقی انتظامات بھی مکمل کرنے ہیں
دوسری خاتون۔۔۔۔۔کچھ خواتین ہرمیزپردودوخالی پتیلے اورکچھ خواتین پانی کے برتن رکھتی جائیں
تیسری خاتون۔۔۔۔۔۔یہ کام بھی رکشے والوں سے کرالیناچاہیے تھا
چوتھی خاتون۔۔۔۔۔کھاناکھلانے اورپانی پلانے کے لیے بھی کچھ غریب خواتین بلوالیناچاہیے ۔ ان کواچھی سی مزدوری بھی دے دیں گی
پہلی خاتون۔۔۔۔۔یہ کام ہم خودکریں گی
دوسری خاتون۔۔۔۔۔اس سے ہمیں یہ بھی معلوم رہے گاکہ کون کون سی خواتین آئی ہیں
پانچویں خاتون۔۔۔۔۔یہ کیسے پتہ چلے گا کہ کس لڑکی کاپکوان کیسابناہے ذائقہ کس کااچھاہے کس کاکھانازیادہ خواتین کوپسندآیاہے۔
تیسری خاتون۔۔۔۔۔۔اس کاانتظام بھی ہم نے کرلیاہے
چھٹی خاتون۔۔۔۔۔باتیں توہوتی رہیں گی کام بھی کرلیں
تمام خواتین کمرے کی طرف چل پڑتی ہیں۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۸۱
بشیراحمدگدھاریڑھی لے کرسڑک نماراستے پرآہستہ آہستہ جارہاہے۔ وہ تھوڑافاصلہ ہی چلتاہے تواس کودوافراددورسے پیدل جاتے ہوئے دیکھتاہے۔ وہ ریڑھی کی رفتاربڑھادیتاہے۔ عبدالغفوراورظفراقبال پیدل جارہے ہیں۔
عبدالغفور۔۔۔۔۔ہمیں عبدالمجیدکے کھیتوں میں جاناچاہیے یانہیں
ظفراقبال۔۔۔۔۔ہم اس کے کھیتوں میں نہیں جائیں گے تواسے اپنی زمین ٹھیکے پردینے کے لیے کیسے قائل کریں گے
عبدالغفور۔۔۔۔اب وہاں جائیں گے کس روپ میں
ظفراقبال۔۔۔۔اب ہمیں اس کے سامنے نہیں جاناچاہیے
بشیراحمدریڑھی لے کران کے قریب آجاتاہے۔ اس کی رفتارآہستہ کردیتاہے۔ وہ دونوں کے پیچھے آہستہ آہستہ جارہاہے۔
عبدالغفور۔۔۔۔اس نے زمین ٹھیکے پردینے سے انکارکردیاتو کیاکریں گے
ظفراقبال۔۔۔۔۔ہم اسے شراکت کی بنیادپرکام کرنے کی پیشکش کریں گے
عبدالغفور۔۔۔۔۔کچھ بھی کرناپڑے اب ہمیں احمدبخش کوجلدسے جلدسکول بھی بھجواناہے اوراس کے آرام کرنے اورکھیلنے کاانتظام بھی کرناہے۔
ظفراقبال۔۔۔۔۔ایک دن ہم اپنے مقصدمیں ضرورکامیاب ہوجائیں گے
بشیراحمدسوچنے لگتاہے کہ گھرجاکربھائی جاویدکویہ سب باتیں بتاؤں گا
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۸۲
عبدالمجیدگھرمیں آتاہے توراشدہ کھانے کے برتن دھونے کے لیے لے کرجارہی ہے۔ سلطانہ اورعبدالرحیم چارپائی پربیٹھ کرماں کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ راشدہ عبدالمجیدکودیکھتے ہی واپس آجاتی ہے۔ کمرے کے ساتھ برتن رکھ دیتی ہے۔
راشدہ۔۔۔۔۔عبدالمجیدسے۔۔۔۔۔مہمان چلے گئے ہیں تومیں احمدبخش کی طرف چلی جاؤں
عبدالمجید۔۔۔۔روزانہ توجاتی ہے اس کے پاس
راشدہ۔۔۔۔۔جب تک وہ چچاکے گھرمیں ہے میں توروزانہ جاؤں گی
عبدالمجید۔۔۔۔برتن کب دھوئے گی
راشدہ۔۔۔۔۔بعدمیں دھولوں گی اتنے دنوں کے بعدگھرمیں گوشت پکاہے اس کے لیے کھانابھی لے جاتی ہوں
عبدالمجید۔۔۔۔۔اس وقت تک تواس نے کھاناکھالیاہوگا
راشدہ۔۔۔۔۔جب تک میں نہ جاؤں وہ کھانانہیں کھاتامیراانتظارکرتاہے
عبدالمجید۔۔۔۔۔ایک تومیرے بھائی اسے بگاڑ رہے ہیں اورتوبھی اسے بگاڑ رہی ہے
راشدہ۔۔۔۔۔۔ایسی کوئی بات نہیں آپ نہیں چاہتے کہ میں بیٹے کے پاس جاؤں اس لیے مجھے الجھارہے ہیں ۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۸۳
جاویدکے گھرکے صحن میں کمرے کی دیوارکے ساتھ کرسی پراحمدبخش بیٹھاہے اس کے سامنے صابراں کی چھوٹی بہن رسی کودرہی ہے
احمدبخش۔۔۔۔۔رک جاؤ آرام کرو گرجاؤگی
صابراں کی بہن۔۔۔۔۔میں گرتی نہیں ہوں
اسی طرح وہ رسی کودتی رہتی ہے احمدبخش کی پیٹھ کی طرف سے فیاض آتاہے اوراحمدبخش کی آنکھوں پرہاتھ رکھ دیتاہے رحمتاں اورصابراں فیاض اوراحمدبخش کواسی حالت میں دیکھ لیتی ہیں۔
احمدبخش۔۔۔۔۔کون ہے یہ کیامذاق ہے
فیاض۔۔۔۔۔صابراں کی بہن کوآنکھوں سے اشارے سے۔۔۔۔۔اس کوکہو یہ بتائے میں کون ہوں
صابراں کی بہن ۔۔۔۔۔احمدبخش سے۔۔۔۔۔اب پتہ چلے گا توکتناعقل مندہے
احمدبخش۔۔۔۔۔یہ کسی کی آنکھوں پرہاتھ رکھنے سے کیسے پتہ چل جاتاہے
اسی دوران صابراں کی بھی آجاتی ہیں
صابراں۔۔۔۔احمدبخش سے۔۔۔۔۔جب تک یہ نہیں بتائے گا تیری آنکھوں پرہاتھ کس نے رکھاہواہے یہ ہاتھ نہیں ہٹائے گا
احمدبخش۔۔۔۔۔کوئی مجھے تنگ کرنے کی کوشش کررہاہے
صابراں۔۔۔۔۔اچھایہ بتادے اس وقت کون تجھے تنگ کررہاہے
احمدبخش۔۔۔۔۔ہاتھ ہٹادے پھربتاؤں گا
صابراں کی بہن۔۔۔۔رسی کودتے ہوئے۔۔۔۔۔پھرکیافائدہ یہ پہلے بتاناہوتاہے
احمدبخش۔۔۔۔۔۔کیایہ بتاناضروری ہیں
صابراں۔۔۔۔۔دوآپشن ہیں تیرے پاس
احمدبخش۔۔۔۔۔کون کون سے
صابراں۔۔۔۔ایک یہ کہ توبتادے کہ تیری آنکھوں پرہاتھ کس نے رکھاہواہے
احمدبخش۔۔۔۔۔اوردوسراآپشن؟
صابراں۔۔۔۔وہ یہ کہ توہارمان لے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭
منظر۳۸۴
بشیراحمد۔۔۔۔آوازدے کر۔۔۔۔۔گاڑی خالی ہے کسی نے بیٹھناہے توبیٹھ سکتاہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔یہ کیسی گاڑی ہے آوازتواس کی ہے نہیں
عبدالغفور۔۔۔۔۔تونے آوازنہیں پہچانی جس نے آوازدی ہے اس کی گاڑی کی آوازنہیں ہوتی
ظفراقبال۔۔۔۔۔یہ کون سی گاڑی ہے میں نے تونہیں دیکھی
عبدالغفور۔۔۔۔۔وہ گاڑی آپ نے ایک بارنہیں بارباردیکھی ہے یقین نہیں آرہاتوپیچھے کی طرف دیکھو
ظفراقبال پیچھے کی طرف دیکھتاہے توبشیراحمدان کے پیچھے گدھاریڑھی پرآرہاہے دونوں ایک طرف ہوجاتے ہیں بشیراحمدکوسلام کرتے ہیں۔
بشیراحمد۔۔۔۔آپ پیدل جارہے ہیں ریڑھی پربیٹھ جائیں
دونوں ریڑھی پربیٹھ جاتے ہیں
بشیراحمد۔۔۔۔۔کہاں سے آرہے ہیں
عبدالغفور۔۔۔۔۔آپ کے بھائی عبدالمجیدکے گھرسے
ظفراقبال۔۔۔۔۔وہ ہماری وجہ سے پریشان ہے اس نے کھیتوں میں جانابھی چھوڑ دیاہے
بشیراحمد۔۔۔۔۔اب کیاپروگرام ہے
اسی دوران ایک رکشہ ان کوکراس کرتے ہوئے چندگزکے فاصلے پررک جاتاہے
ظفراقبال۔۔۔۔۔یہ رکشہ کیوں رک گیا
رکشہ سے کریم بخش اور عارف اترتے ہیں سلام دعاکرتے ہیں
کریم بخش۔۔۔۔بشیراحمدسے۔۔۔۔۔میں آپ سے آپ کے بھائی کے بارے میں بات کرناتھی
بشیراحمد۔۔۔۔۔یہ دونوں بھی بھائی کے بارے میں بات کررہے ہیں
عبدالغفور۔۔۔۔ہمیں مولوی صاحب سے مشورہ کرناچاہیے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭

 

Muhammad Siddique Prihar
About the Author: Muhammad Siddique Prihar Read More Articles by Muhammad Siddique Prihar: 375 Articles with 223112 views Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here.