الیاس گھمن عدالت عالیہ میں حاضر ہو!

(M Yaqoub Ghazi, Islamabad)
 سب سے پہلے مجھے یہ کہنے دو الیاس گھمن اسلام نہیں ہے اسلام نہیں ہے کبھی بھی نہیں ۔مجھے نہیں پتہ الیاس گھمن پہ لگائے گئے الزامات کس حد تک مبنی برحقیقت ہیں ۔ لیکن اتنا ضرور کہونگا کہ جس کنبہ و شعبہ سے انکا تعلق ہے میں بھی اسی کنبے(دینداری) کا ایک راہی ہوں ۔ جب ایک ہی سفر کے راہ روؤں میں سے کوئی راہی دغاباز دھوکھا باز نکلے تو پورے قافلے کا سفر بے لطف ہوجاتا ہے ۔ بے مزہ ہوجاتا ہے کہ اتنا سفر اور سفر کی مشقت برداشت کی لیکن یہ کیا وہ تو سارے تعلق بھول گیا ساری یادوں پہ پانی پھیر گیا ۔کاش ! سرے سے اسکے راہی ہی نہ ہوتے کسی اور کے ساتھ سفر شروع کیا ہوتا کم سے کم اس بے سکون کیفیت میں تو نہ ہوتے ۔ یقین کریں مجھے تنہائی محسوس ہو رہی دن اور راتیں بے مزہ ہوگئیں ۔کھڑہن اتنی کہ نہ نیند آئے نہ آرام نہ کسی کام میں دل لگے آج اسی کھڑہن کی وجہ سے مدرسہ علوم الشرعیہ کشمیر چوک اسلام آباد پڑھانے نہیں جاسکا ۔ کوئی تو ایسا ہو جومجھے تسلی دےکہ غازی بھائی حوصلہ رکھو؟ اگر کوئی حوصلہ دینے آ بھی جائے تو مجھے حوصلہ نہیں ہوگا اسلئے کہ میرے ہی کنبہ کے ایک صاحب مفتی اسامہ نے میری قوم کے لاچاروں بے سہاروں کو مضاربہ کے نام پہ لوٹا۔ انکی جمع پونجی اُڑائی اور پاکستان سے رفو چکر ہوگیا ۔اور صبح شام اسے لاچاروں کی بد دعائیں پڑ رہی ہیں اور کتنے سارے ایسے کردار ہیں جو میرے کنبہ (دینداری) کا لبادہ اوڑھے لوٹ رہے جب میں کسی ایسے لاچار کا سامنا کرتا ہوں تو مجھے لگتا ہے شاید اسکا جواب دہ میں بھی ہوں ۔ الیاس گھمن میرے کنبہ (دیندار) کے ہیں میں اسکی صفائیوں میں وقت برباد کرونگا کھبی بھی نہیں اس لئے کہ میرے اساتذہ نے اندھی تقلیدکا سبق کھبی بھی نہیں پڑھایا ۔

میں وفاق المدارس کے ناظم قاری حنیف جالندھری سے جوکہ میرے طحاوی شریف کے استاذ بھی ہیں سے اپیل کرونگا آج سے اسطرح کے قضیات ختم ہونے کیلئے یہ کیس میری نظر میں سب سے بڑی دہشت گردی کیس ہے اس کیس کو فوجی عدالتوں میں چلایا جائے اور وفاق المدارس اسکا مدعی بنے اور عدالت کے سامنے ایسے ہمت اور بہادری سے کھڑے ہوکر اپنا دعویٰ پیش کرے کہ خلفاء راشدین کی یاد تازہ ہوجائے اور عدالت کی کاروائی سرکاری چینل پی ٹی وی پہ دکھایا جائے تاکہ دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو ۔

پھر اس عدالتی کروائی میں اگر تو الیاس گھمن کے اوپر لگائے گئے الزامات ثابت ہوجاتےہیں تو اسے نشانِ عبرت بنادیا جائےتاکہ آئندہ ایسے واقعات کا سد باب ہو ۔ اور اعلان عام ہوکہ آج کے بعد کسی نے علماء کا لبادہ اوڑھ کے ایسی حرکت کی تو ہم دیندار اسکے سامنے وہ دیوار بنیں گے کہ کے تاریخ سنہرے حروف سے دیندار طبقے کے اس اقدام کو سراہے گی اور آنے والی نسلیں اس اقدام کو یاد رکھیں گیاور لوگوں کو دین کے قریب کریں گی ۔

اور اگر لگائے گئے الزامات جھوٹے ثابت ہوتے ہیں تو الیاس گھمن پہلے سے کہیں زیادہ ہمارے لئے باعث فخر ہونگے۔

اگر آج علماء وفا ق المدارس نے اس معاملے کو اسی طرح جانے دیا خاموشی اختیار کی مضاربہ سکینڈل کی طرح معمول کا شوشہ سمجھ کے ایک سائڈ پہ رکھدیا تو مجھے لگتا ہے سب کچھ ختم ہوجائے گا منبرومحراب کی تقدس کو بچانے کیلئے تھوڑی سے ہمت چاہئے۔ مجھے یقین ہے پاکستانی قوم اتنا بھی جاہل نہیں ہے کہ وہ الیا س گھمن پہ لگائے گئے الزامات کے سچ ہونے کی صورت میں میری پوری برادری سے کنارہ کش ہوگی یا پوری برادری(دیندارطبقہ) کو ایسا سمجھ بیٹھے گی ہرگز نہیں ۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: yaqoub ghazi

Read More Articles by yaqoub ghazi : 15 Articles with 6201 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
05 Oct, 2016 Views: 385

Comments

آپ کی رائے