انسان کی محبت

(Zeena, Lahore)
انسان جس سے زیادہ محبت کرتا ہے، اللہ اسکو اسی کے ہاتھوں سے تورتا ہے ، انسان کو اس ٹوٹے ہوے برتن کی طرح ہونا چاہیے جس میں لوگوں کی محبت آئے اور باہر نکل جائے۔ (شیخ عبدالقادر جیلانی )
“ کیا میں خوبصورت نہیں رہی ؟ ،،،، وہ مجھے تم سے زیادہ خوبصورت لگتی ہے۔ اسکے آنسو اور تیزی سے بہنے لگے،

میں کیا کرو ایسا کے تم میرے ہو جاوّ ؟ اسنے پھر سوال کیا،،،، اب تمہں کچھ کرنے کی ضروت نہیں کیو کہ میں اسکا ہو چکا ہوں“،،،وہ خود غرضی کی انتہا پر تھا۔ وہ جو کہا کرتا تھا کے تم میری جان ہو عائشہ، پوری دنیا میں سب سے حسین ھو، اور آج وہ کیسے اسکے ہر سوال کی نفی کر رہا تھا۔

“ کیا میں نے تمہارے لئے سب کو نہیں چھورا ؟ کیا میں نے تمہاری عبادت نہیں کی؟ “ اسنے ہچکیوں سے روتے ہوے پھر سوال کیا،،،“میں نے تمہیں مجبور نہیں کیا تھا، کہ تم سب کو چھورو تم اپنی مرضی سے میرے ساتھ آئی تھی۔ اور رہی بات عبادت کی تو وہ تمہیں میری نہیں اللہ کی کرنی چاہیے تھی۔اسنے نرمی سے کہا اور طلاق کے پیپرز اسکی طرف برھا دٰیئے،،،وہ رونا بھول کر گم سم پیپرز دیکھنے لگ گیئ،،،وہ اٹھ کر جانے لگا تو اسنے آواز دی “سنو “ اسنے پلٹ کر دیکھا ،کیا کچھ نہیں تھا اسکی آنکھوں میں بے بسی ،التجا،محبت، آنسو ،امید ایک پل کے لیے تو اسکا دل دھل گیا اسنے منہ دوسری طرف کر لیا کبھی وہ ان آنکھوں پر مرا تھا،اگر عالیانہ اسکی زندگی میں نا آیی ہوتی تو آج بھی وہ اسکا ہی ہوتا وہ خود حیران تھا اسنے اتنا برا فیصلہ کیسے کر لیا ،،،،“کیا تم دوبارہ میرے نہیں ہو سکتے“ اسنے بری آس سے پوچھا،،“نہیں “ وہ اتنا کہ کر تیزی سے وہاں سے چلا گیا،،،وہ کمزور پر رہا تھا اسکے سامنے اس لیے اسے دیکھے بنا وہاں سے چلا گیا،،،

سہی تو کہا اسنے ،،وہ ہتھلیوں سے آنسو رگڑ کر خود سے بولی “میں نے اسکے لیے سب کو چھورا جو کہا اسنے میں نے وہی کیا اسکی ہر بات مانی ، یہ عبادت ہی تو ھوئی ،جب وہ ہوتا تھا میں خود کو بھول جاتی تھی بس اسے دیکھتے رہنا مجھے اچھا لگتا تھا۔صبح اٹھتے ہی اسکا نام میرے لبوں پر ہوتا تھا اور سوتے ٹائم تک میں اسے سوچتی تھی۔پھر بھی وہ مجھے چھور گیا،سوچ سوچ کر اسکا دماغ پھٹ رہا تھا اسکا بس نہیں چل رہا تھا کے اپنے بال ہی نوچ ڈالتی ،وہ درد کی انتہا پر تھی۔

کیا میں اللہ سے اتنی محبت کرتی تو وہ بھی مجھے ایسے چھوڑ دیتا،اسکو سکون چاہیے تھا۔بے شک دلوں کا سکون اللہ کے زکر میں ہے۔وہ یہ سوچ کر نماز کے لیے کھری ہو گئی کافی دیر سجدے میں رولینے کے بعد جب اسنے سجدے سے سر اٹھایا تو وہ عجیب سے سکون کو دل میں اترتا محسوس کر رہی تھی،ایسا سکون اسنے پہلے کبھی محسوس نہیں کیا تھا۔اسے اللہ نےنہیں چھورا وہ جو اسکی محبت میں اللہ کو بھلاے بیٹھی تھی،اللہ کو آج بھی اس سے محبت تھی ،ورنہ وہ اسے سکون نا دیتا،اسنے دونوں ہاتھ دعا کے لیے اٹھا لیے،اے اللہ میں بھٹک گیی تھی میں نے تجھ سے ذیادہ ایک انسان کو چاہا میں جانتی ھو میں غلط تھی ۔اس لیے تو نے اسکو مجھ سے دور کر دیا ۔انسو تیزی سے بہنے لگے بہتے آنسو اسکا دل بھی دھو رہے تھے۔
“اے اللہ مجھے معاف کردے میں نے تجھ سے زیادہ اسے اہمیت دی،جو اس قابل نہیں تھا ،مجھے اس سے تجھ سے زیادہ محبت نہیں کرنی چاہے تھی ،اے اللہ تو نے پھر بھی مجھے نہیں چھورا ،کیا میں نے یہ کبھی نہیں سوچھا تھا،کہ وہ مجھے چھور دے گا پر وہ انسان تھا اس لیے چھوڑ گیا ،،،، وہ اتنا کہ کر پھر رونے لگی ،،،اگر میں تیری ھر بات مانتی تو کیا تو مجھے چھوڑ دیتا ؟ نہیں نا “ وہ خو د سے سوال جواب کرتی رہی پھر سکون اسکے دل میں ایسا اترا کے وہ دوبارا نہیں روئی۔

وہ اللہ کی ہو گئی تو اللہ نے اسے اکیلا نیہں چھورا ، آج اسکی شادی کی ٣٠ سالگرہ تھی اور اللہ نے اسے محبت کرنے والی شوہر اور اولاد دی تھی،وہ سمجھ گئی تھی کے اللہ سے برھ کر کسی سے محبت نہیں کرنی چاہیے۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zeena

Read More Articles by Zeena: 92 Articles with 139475 views »
I Am ZeeNa
https://zeenastories456.blogspot.com
.. View More
08 Jan, 2017 Views: 1260

Comments

آپ کی رائے
Bht acha tha aur aik acha massage bh :)
By: Ali Raza, Rawalpindi on Mar, 14 2017
Reply Reply
0 Like
thnx :)
By: Zeena, Lahore on Mar, 15 2017
0 Like
بہترین پیغام کہانی میں موجود ہے۔داد قبول کیجئے گا۔
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on Mar, 10 2017
Reply Reply
1 Like
bhai shukriya :)
By: Zeena, Lahore on Mar, 10 2017
0 Like
v. nice. keep it up kuriye
By: Adnan G, islamabad on Mar, 08 2017
Reply Reply
0 Like
thnx :)
By: Zeena, Lahore on Mar, 09 2017
0 Like
bohoth hi khoobsurath likha hay Masha Allah ..... jeeti rehyai ..... Jazak Allah Hu Khair
By: farah ejaz, Karachi on Jan, 11 2017
Reply Reply
1 Like
thank you farah sis :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 12 2017
0 Like
good work..... byshak ALLAH apny bndo ko kisi b haal mein nai chorrta byshak dilon ka sakoon to sirf ALLAH k zikr mein e hai.... khush-o-aabaad rahein dear acha likha hai....
By: Faiza Umair, Lahore on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
Be shak ,,,,thank you sis ,,,,ameen :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
0 Like
zeena sister i really like your articles kuch cheez pr nice boln dyna kafi nahe hota qk wo nice sy bhot ziyda hota hy y article bilkul aysa hi hy bhot khob sister excellent
By: Abrish anmol, Sargodha on Jan, 09 2017
Reply Reply
2 Like
no problam sis ap isko jari kar ak bhtreen pegam hy jo dil my hi rh gya hy umeed hy wo bhi bhtreen soch ki akasi kary gaaa
By: Abrish anmol, Sargodha on Jan, 11 2017
1 Like
thank you sis apka itna pasand karne ka shukriya .......per bohat se baty abhi dil main he reh gai ,,,,,,,,,:)
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
0 Like
Excellent Zeena Sister...................Jitna Likha Boht Kamal ka likha .............I hope Aap mazeed likhti to wo bhe best hota..............Allah Bless you
By: Abdul Kabeer, Okara on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
thnx bhai
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
1 Like
good
By: HuKhaN, Karachi on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
thnx
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
1 Like
very nice zeena,,,acha article hai,,,naam bhot acha use kya apny ,,,weldone
By: Mini, mandi bhauddin on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
thank you mini :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
1 Like
thank you husna main abhi or likhna cha rahi thi magar type nahi ho raha tha phir mujhe end karna para abhi bohat se baty dil main hi reh gai :(
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
nhe zeena article tu best hai good
By: umama khan, kohat on Jan, 10 2017
0 Like
zeena welldone sis bht bht acha articles ta.
By: umama khan, kohat on Jan, 09 2017
Reply Reply
1 Like
umama thnx :)
By: Zeena, Lahore on Jan, 09 2017
0 Like