اجڑے خواب - قسط 4

(Nadia khan, rawalpindi)
اجڑے خواب ۔ جاری ہے
آج کی رات ساحل پر بہت بھاری تھا ۔۔؟؟؟وہ سلگتا سا لمس ۔۔۔؟؟؟؟؟؟ وہ ماہ رخ کی ملبوس سے اٹھتی مخصوص خوشبو ۔۔۔؟؟؟؟؟؟ کیا تھا وہ لمس ۔۔۔؟؟؟؟وہ قربت ۔۔۔۔؟؟؟؟؟ محض چند لمحے ۔۔۔۔ ؟؟؟؟؟؟؟مگر ان چند لمحوں نے ساحل پر حقیقت واضح کردیا ۔۔۔۔۔؟؟؟؟؟ کہ ماہ رخ اس کی زندگی میں کیا حیثیت رکھتی تھی ۔۔۔؟؟؟؟؟؟اف ماہ رخ ۔۔۔۔۔۔؟؟؟تمہیں قریب سے دیکھ کے یہ حال ہے تو تمہیں پاکے مرہی نہ جاوں ۔۔۔؟؟؟ ماہ رخ تم نے ٹھیک فیصلہ کیا ۔۔۔؟؟؟؟؟کی ہم یہاں سے بہت دور چلے جائیں گی کسی کو بتائے بغیر ہمیں شادی کرلینی چاہئے ۔۔؟؟ ؟ یہ آخری رات تھا ۔۔۔۔۔۔۔؟؟ کل رات کو ہم یہاں سے بھاگ جائے گے دور بہت دور ۔۔۔۔۔؟؟؟ اس نے اپنی بھٹکتی سوچوں کو ایک مضبوط سہارا دیا ۔۔۔؟؟؟ پھر اس نے آسمان پہ روشن چاند دیکھا۔۔۔۔۔۔؟؟؟ اور کھل کے مسکرایا ۔۔۔؟؟؟ ماہ رخ سیاہ آسمان کے وسط میں تنہا چاند ۔۔۔۔ ؟؟؟؟ سیاہ بادلوں کے ہالے میں جگمگاتا اس کا چہرہ۔۔۔۔۔؟؟؟؟ ساحل کے دھیان میں روشن ہونے لگا ۔۔۔؟؟؟ تو جھنجلا کر کھڑکی کی سلائیڈ کھینچ کر شیشہ برابر کرتا وہ اپنے بستر کی طرف پلٹ گیا ۔۔۔۔۔؟؟؟؟دوسری طرف ماہ رخ بھی کل رات کی انتظار کررہی تھی ۔۔۔؟؟ لیکن ان لوگوں کو پتا نہیں تھا ۔۔۔۔؟؟؟؟ کی شاہد قسمت کو کچھ اور ہی منظور تھا ۔۔؟؟؟؟ جاری ہے
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Nadia khan

Read More Articles by Nadia khan: 10 Articles with 5308 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
30 Jan, 2017 Views: 427

Comments

آپ کی رائے