عجب سچ

(Fatima Ishrat, )
۔۔۔۔ہزاروں خواہشیں ایسی
۔۔۔کہ ہر خواہش پہ دم نکلے۔۔۔
۔۔بہت نکلے میرا ارمان
۔۔۔۔مگر پھر بھی کم نکلے۔۔۔

ہزاروں خواہشات انسان کو جکڑےرکھتی ہیں۔۔ جب ایک خواہش پوری ہوجائے۔۔۔تو دوسری کی آرزو جنم لےلیتی ہے۔۔۔
انسان پر اپنی ہر خواہش کو پورا کرنے کی ایسی دھن سوار ہوجاتی ہے۔۔۔ کہ جب تک اسکی تکمیل نہیں ہو پاتی وہ پوری لگن سے اسکی تحصیل میں لگارہتاہے۔۔۔ہرخواہش تنوع وتفنن کا روپ دھارے کھڑی ہوتی ہے۔۔۔اب چاہے وہ کسی انسان کی طلب کی خواہش ہو یا کسی شے کی۔۔۔سب بحر بیکراں جیسی ہوتی ہیں ۔۔!!

اپنی ہر خواہش کو عملی جامہ پہنانے کیلئے وہ تمام تر سعی اور تکالیف برداشت کرنے کیلئے ہر دم تیار رہتا ہے۔۔۔چا ہے بات عبادت کی ہو یا خدمت کی وہ پورے انہماک سے جت جاتا ہے۔۔۔!!


۔۔۔۔۔۔جو بن بیٹھا خواہش کا ایسا تابع میں۔۔۔
۔۔۔۔۔۔تو گنوا بیٹھا پھر اپنی ساری زیست میں۔۔۔۔

جب اسکی خواہش کا حصول بہت قریب آن پہنچتاہے۔۔تو اسکے اضطراب میں اضافہ ہوجاتا ہے اور عجیب سرشاری کی سی کیفیت اس پہ حاوی ہونے لگتی ہے۔۔وہ جھوم اٹھتا ہے اپنی منزل کو قریب دیکھ کر ۔۔!!!

مگر!!!

وہ خواہش!! ۔۔۔۔پوری نہیں ہوپاتی۔۔۔۔ ادھوری رہ جاتی ہے۔۔۔منزل تک پہنچ کر بھی تہی دامن رہ جاتا ہے۔۔۔تشنگی حصے میں آتی ہے ۔۔!!

تو وہ ٹوٹتا ہے ۔۔بکھرتا ہے۔۔۔اپنےزخمی وجود کی کرچیوں کو سمیٹنے لگتا ہے۔۔!!

ایسے میں اسے اللہ بہت یاد آتا ہے۔۔وہ سجدہ ریز ہوجاتا ہے ۔۔۔خوب گڑ گڑاتا ہے۔۔۔روتا ہے۔۔۔۔۔!!!
اپنی متذبذب حالت کے پیش نظر۔۔۔سکون کا طالب بن جاتا ہے۔۔!!

رب کریم جو ستر ماؤں سے زیادہ اپنے بندےکو چاہتا ہے۔۔ وہ... جو اپنے بندے کی ہر پکار پہ لبیک کہتا ہے!!۔۔۔اسکے ہر اک آنسو کا بہترین صلہ عطا کرتا ہے۔۔۔وہ رب ذوالجلال والاکرام ،رحیم ،کریم ،غنی، ۔جیسی۔۔۔صفات کا مالک۔۔۔ اپنی نعمتوں۔۔۔رحمتوں۔۔انعامات۔۔۔۔ کی ایسی بارش برساتاہے کہ اسکا روم روم اس میں بھیگ جاتا ہے۔۔۔۔۔۔اسے خود سے قریب کر لیتا ہے۔۔ !!!

مگرانسان کو اب کوئ خواہش اپنا اسیر نہیں بناتی وہ اسکی قید کو مسخر کر لیتا ہے۔۔!!

کیونکہ اسکو اللہ رب العزت مل جاتا ہے۔۔اس سے ایسا تعلق بن جاتا ہے ۔۔۔۔کہ اس سے بڑھکر ا سے کوئ چیز بھلی معلوم نہیں ہوتی۔۔۔۔۔پھرکوئ آرزو دل کو بے چین نہیں کرتی۔۔۔کوئ خواہش اس پہ قابض نہیں ہوپاتی۔۔۔!!!

یہی عجیب سچ ہے ۔۔۔جب انسان کی محبت کا محور ۔۔۔۔۔۔اسکی ہر خواہش ۔۔ہر آرزو۔۔۔رب کریم کی ذات سے شروع ہوکےاسی پہ ختم ہوجائے۔۔۔ پس اس میں پھر کسی چیز کی طلب باقی نہیں رہتی۔۔!!

اللہ تعالی اسے وافر مقدار میں نوازتے رہتے ہیں یہاں تک کہ اسکی دل کی ہر خواہش تکمیل کا دروازہ عبور کر لیتی ہے۔۔!!

اللہ تعالی جب اپنے بندے کی محبت کو دیکھتا ہے تو بہت خوش ہوتا ہے اور اسے اپنی شان ومرتبے کے مطابق عطا کرتا ہے۔ اور اسے اپنا محبوب بندہ بنا لیتاہے۔۔۔۔!!

پس اسکے بعد انسان کے دل میں کسی چیز کی چاہ باقی نہیں رہ پاتی!!

۔۔۔۔ اے بندے !!خود کو جوڑ لے رب سے۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔ہو جائیگا سارا جہاں تیرا۔۔۔۔

##حیا مسکان##
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Fatima Ishrat

Read More Articles by Fatima Ishrat: 30 Articles with 19810 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
17 Feb, 2017 Views: 370

Comments

آپ کی رائے