اوئے

(Rao Anil Ur Rehman, Lahore)
اس دنیا میں ہر جگہ ہر قدم پر جی جناب اوراوئے کی تقسیم ہے-

اوئے

لینڈکروزر سے ایک سیٹھ صاحب اترے۔ گیٹ پر موجود پولیس والے کو 'اوئے کہہ کر بلایا۔
ابھی کل ہی اسی پولیس والے کے پاس سے ایک غریب ریڑھی والا اپنی ریڑھی ہانکتا ہوا گزرا۔ پولیس والے نے اسے اوئے کہہ کر بلایا۔
یہ جو اوئے ہوتا ہے، یہ ہمیشہ اپنے سے غریب اور بے بس کے لئے ہوتا ہے۔
ہر انسان اپنے سے تگڑے کو 'جی سرکار' 'جی جناب' کہتا ہے۔
غریبی اور بے بسی بذات خود 'اوئے ہے۔
ہر جگہ ہر قدم پر۔
اور غریب جھونپڑیوں میں بھی اپنے سے ماڑے بندے کے لئے اوئے ہی کا لفظ استعما ل کرتا ہے،
اس دنیا میں ہر جگہ ہر قدم پر جی جناب اوراوئے کی تقسیم ہے-
اوئے' اور جی جناب' کا فلسفہ
دردناک بھی ہے اور خوفناک بھی۔
بس ہمیں اتنا خیال رہنا چاہیئے کہ
قیامت کے روز
فرشتے۔۔۔ ہمیں
اوئے کہہ کر نہ بلائیں۔
فرشتوں نے اگر "جی جناب" کہہ کر بلایا تو بات بن جائے گی۔
ورنہ
کیا سمجھے ؟

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Rao Anil Ur Rehman

Read More Articles by Rao Anil Ur Rehman: 88 Articles with 132218 views »
Learn-Earn-Return.. View More
22 Apr, 2017 Views: 336

Comments

آپ کی رائے