مشکل راستے قسط نمبر 55

(Farah Ejaz, Karachi)
بھئی کچھ غلط کہہ رہی ہوں کیا ۔۔۔۔۔۔

میرے حیرت سے دیکھنے پر انہیں خاتون نے مسکرا کر مجھ سے پوچھا تھا ۔۔۔۔

لیکن آپ مجھے جانتی نہیں ہیں ۔۔۔ میں کون ہوں کیا ہوں ۔۔۔۔۔

تو کیا ہوا ۔۔۔۔ کسی کو جاننے میں وقت ہی کتنا لگتا ہے ۔۔۔۔۔

مگر ۔۔۔۔۔

یہ ذکی کی طرح اگر مگر کی تکرار نہیں کرنا ۔۔۔۔۔ بس آپ مجھے اچھی لگی ہیں اور بس ۔۔۔۔ اور ویسے بھی بیٹا ایک عمر گزر جاتی ہے کسی کو جاننے میں اور پھر بھی ہم جان نہیں پاتے ۔۔۔ اور کبھی کبھی کسی کو جان لینے میں ایک پل بھی نہیں لگتا ۔۔۔۔۔

انہوں نے میری ٹال ٹول پر اچھی خاصی فلاسفی جھاڑ دی تھی ۔۔۔۔۔ میں ان کی بات سن کر خاموش ہوگئی تھی ۔۔۔۔ ویسے بھی مجھے ابھی کچھ دنوں کے لئے ایک چھت درکار تھی ۔۔۔۔ تاکے اپنے دشمنوں اور اپنوں سے خود کو چھپا سکوں ۔۔۔۔۔

××××××××××××
فاطمہ اپنی والدہ سے مل کر واپس آچکی تھیں ۔۔۔۔ مگر جمال نے ان سے حوریہ کے بارے میں پوچھا اور نہ ہی انہوں
نے اپنے والد سے اپنی سے متعلق کچھ بات کی ۔۔۔۔۔۔ مگر دل ہی دل میں وہ چاہتی تھیں کہ ان سے جمال شاہ حوریہ کے بارے میں پوچھیں ۔۔۔۔۔۔۔ لیکن جمال خاموش تھے ۔۔۔۔ ان کی دلی کیفیت وہ سمجھ رہی تھیں ۔۔۔۔ جب سے جمال شاہ کو خبر ہوئی تھی کہ حوریہ واپس آگئی ہیں تب سے ایک عجیب سی بیچینی نے انہیں اپنی لپیٹ میں لے لیا تھا ۔۔۔۔ وہ جانتی تھیں وہ ان سے ملنا چاہتے ہیں ۔۔۔۔ مگر ہمت نہیں ہورہی تھی ان کا سامنا کرنے کی ۔۔۔۔
اُدھر اپنی والدہ کی کیفیت سے بھی خوب آگاہ تھیں ۔۔۔ حوریہ ان سے سخت خفا ضرور تھیں مگر اتنا سب کچھ ہوجانے کے بعد بھی وہ ان سے نفرت نہیں کرپائی تھیں ۔۔۔۔۔ مگر فاطمہ یہ نہیں جان سکی تھیں کہ کیا اب بھی حوریہ بی بی کے دل میں جمال شاہ کے لئے محبت باقی ہے یا پھر ختم ہو چکی ہے ۔۔۔ مٹ چکی ہے ۔۔۔۔ مگر ان کی دلی خواہش تھی کہ ان کے والدین پھر سے ایک ہوجائیں ۔۔۔۔ مگر اب کیا یہ ممکن تھا ۔۔۔۔ یہ تو آنے والا وقت ہی بتا سکتا تھا ۔۔۔۔۔۔

اس وقت جب وہ عشاء کی نماز سے فراغت کے بعد اپنے والد جمال شاہ کے بلانے پر ان کے کمرے میں گئیں تو
انہیں آیت الکرسی کے تغرے کے سامنے کھڑے پایا ۔۔۔۔ سگار کا دھواں پورے کمرے میں پھیلا ہوا تھا ۔۔۔۔۔ پتا نہیں وہ کتنی دفع سگار جلا اور بجھا چکے تھے ۔۔۔۔

ابو جی ۔۔۔۔۔۔

ہممم ۔۔۔۔۔ ادھر آؤ بیٹے ۔۔۔

انہوں نے ہاتھ کے اشارے سے انہیں اپنے پاس بلایا تو وہ محبت سے ان کے پاس جا کر کھڑی ہوگئں ۔۔۔۔۔ وہ ہنوذ تغرے پر نظریں جمائے کھڑے تھے ۔۔۔۔۔۔

فاطمہ ۔۔۔۔۔

جی ابو جی ۔۔۔۔

یہ تغرہ دیکھ رہی ہو ۔۔۔۔ یہ تمہاری والدہ نے اپنے ہاتھ سے بنایا تھا ۔۔۔۔ اور مجھ سے کہا تھا کہ اسے اس دیوار پر ہمیشہ یونہی لگا رہنے دوں ۔۔۔۔۔ جب میں ان لوگوں کے بہکاوے میں آکر انہیں اپنی زندگی سے بے دخل کردیا تھا ۔۔۔۔ جب نفرت کرنے لگا تھا ان سے شدت سے تب بھی یہ اس دیوار پر آویزاں رہا ۔۔۔۔ اور اب بھی یونہی اپنی جگہ پر موجود ہے ۔۔۔۔۔ اور میرے مرنے تک یہ یونہی میرے کمرے میں ایسے ہی دیوار سے لگا رہے گا ۔۔۔۔۔

وہ کچھ دیر کو رکے تھے بولتے بولتے ۔۔۔۔ اور بھیگی آنکھوں سے اپنی بیٹی کو دیکھا تھا ۔۔۔۔۔۔ جانے کیا تھا ان کی آنکھوں میں کہ فاطمہ تڑپ اُٹھی تھیں ۔۔۔۔۔

ابوجی حوصلہ رکھیں ۔۔۔انشاء اللہ سب کچھ ٹھیک ہو جائے گا ۔۔۔۔

جانتی ہو میری جان ۔۔۔۔ تمہاری والدہ ایک نمازی پرہیزگار عورت ہے ۔۔۔۔ قرآن و سنہ پر سختی سے عمل کرنے والی عورت ۔۔۔۔ سب سے پیار کرنے والی ایک مثالی عورت ۔۔۔ اور میں اتنی جلدی کسی کی باتوں میں آکر اس پاک باز عورت پر شک کرنے لگا تھا ۔۔۔۔ ممم میں میں ۔۔۔۔

بات کرتے کرتے ہاتھ بائیں طرف سینے پر ان کا جا لگا تھا ۔۔۔۔ زبان لڑکھڑانے لگی تھی ۔۔۔۔ اور دم گھٹتا ہوا سا محسوس ہونے لگا تھا ۔۔۔۔۔۔ ان کی یہ کیفیت دیکھ کر فاطمہ بی بی گھبرا گئیں ۔۔۔۔۔

ابو جی !

مم میں ۔۔۔۔ تممم تمہاری ماں کا ۔۔۔ اورر تمم ۔۔ مم ۔۔۔ مارا (تمہارا) مج مجرم ہوں بیٹا ۔۔۔۔

وہ فقط اتنا ہی بول پائے تھے ۔۔۔۔ اور زمیں پر گرنے لگے تھے کہ فاطمہ نے انہیں تھام لیا تھا ۔۔۔۔۔

بے بے!

وہ زور سے چیخی تھیں ۔۔۔۔

××××××××××××××××××××××××

نانی جان آپ بھی نا ۔۔۔۔ بھئی ان محترمہ کے بارے میں آپ کچھ بھی نہیں جانتیں اور انہیں گھر میں رہنے کا کہہ رہی ہیں ۔۔۔۔۔۔ ابھی بہت سی باتیں کلئیر نہیں ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کیا مطلب ذکی ۔۔۔۔۔ ہر ایک کو شک کی عینک سے کیوں دیکھنے لگتے ہو تم ۔۔۔۔۔

خالہ بی کی جگہ چندہ پھو پھو بول اُ ٹھیں تھیں ۔۔۔۔

آپ تو رہنے دیں چندہ پھو پھو ۔۔۔۔ آپ کو تو ہر کوئی مسکین اور مظلوم ہی نظر آتا ہے ۔۔۔۔۔

ہاں اور تمہیں ہر کوئی غنڈہ اور موالی ۔۔۔۔ کیوں خالہ بی غلط کہہ رہی ہوں کیا میں ۔۔۔۔۔

چندہ پھو پھو نے خالہ بی سے تائید چاہی تھی ۔۔۔۔۔

اگر تم لوگ تھوڑی دیر کے لئے خاموش ہوجاؤ تو میں بھی اپنا موخف پیش کروں ۔۔۔۔۔

ان کے بولنے پر وہ دونوں ہی خاموشی سے انہیں دیکھنے لگے تھے ۔۔۔۔۔ انہوں نے ایک نظر ان دونوں پر ڈالی تھی ۔۔۔

تم دونوں ہی اپنی جگہ صحیح ہو مگر جہاں تک میرا تعلق ہے تو ذکی کچھ لوگ آئینے کی طرح صاف شفاف ہوتے ہیں ۔۔۔ اس بچی کی آنکھوں میں اس کے چہرے سے چھلکتی اس کی سچائی اور معصومیت نے مجھے متاثر کیا ہے ۔۔۔۔ اور پھر جب سے ہوش میں آئی ہے ۔۔۔ راحت جہاں اور شبنم نے بتا یا ہے کہ ہر وقت اس کا عبادت میں ہی گزرا ہے ۔۔۔۔ وہ بے ہوشی کے عالم میں بھی صرف اپنے رب کو پکارتی رہی ہے ۔۔۔۔ اور ویسے ایک بات بتاؤ ذکی اسے یوں گھر سے جانے کا کیسے کہہ سکتے ہو جب کہ تمہیں معلوم ہے کہ اس کا کوئی والی وارث نہیں ۔۔۔۔۔

نانی جان ۔۔۔جو میں دیکھ چکا ہوں رانی باغ چڑیا گھر کے سامنے ۔۔۔۔ اس سے ایک بات تو کلئیر ہوگئی ہے یہ خاتون کسی بھی لحاذ سے کمزور نہیں ہیں ۔۔۔۔

اچھا ایک بات تو بتاؤ ذکی ۔۔۔۔ چلو مانا کہ نائلہ نے ان غنڈوں کو اکیلے ہی مار بھگایا تھا ۔۔۔ لیکن تم کالی وردی والے وہاں صرف مونگ پھلیاں کھانے کھڑے ہوئے تھے ۔۔۔۔

چندہ پھو پھو نے ذکی پر چوٹ کی تھی ۔۔۔۔ تو وہ تلملا کر رہ گیا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔ افسوس بھری نظروں سے خالہ بی نے بھی
ذکی کو دیکھا تھا ۔۔۔۔ مگر بولی کچھ نہیں ۔۔۔۔۔

ایسی بچی کو جو اپنی جان خطرے میں ڈال کر کسی مظلوم کی مدد کرے ۔۔۔ اسے میں تو اپنے گھر سے نہیں نکال سکتی ۔۔۔۔ بس فیصلہ ہوگیا ہے برخوردار نائلہ ہمارے ساتھ ہی رہے گی اب سے ۔۔۔۔۔۔

انہوں نے اپنا فیصلہ سنا یا تھا ۔۔۔ راحت جہاں کا چہرا خوشی سے کھل گیا تھا ۔۔۔۔ اور ذکی ان کے احترام میں سر جھکا دیا تھا ۔۔۔۔

×××××××××××××

باقی آئندہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: farah ejaz

Read More Articles by farah ejaz: 146 Articles with 151611 views »
My name is Farah Ejaz. I love to read and write novels and articles. Basically, I am from Karachi, but I live in the United States. .. View More
06 Nov, 2017 Views: 810

Comments

آپ کی رائے
her baar ki tarha behtreen epi tha ,,, :)
By: Zeena, Lahore on Nov, 06 2017
Reply Reply
0 Like
thanks Zeena .... Jazak Allah Hu Khaira
By: farah ejaz, Karachi on Nov, 07 2017
0 Like
مشکل راستے کے تمام کرداروں کا حقیقی دنیا سے کوئی تعلق نہیں ۔۔۔۔ ہم نے اپنے تخیل کو لفظی پیراہن سے سجا کر آپ کے سامنے پیش کیا ہے ۔۔۔امید ہے کہانی آپ سب کو پسند آئے گی ۔۔۔اور اگر کہانی میں کوئی جھول دیکھیں تو ضرور آگاہ کریں ۔۔ شکریہ
By: farah ejaz, Karachi on Nov, 06 2017
Reply Reply
0 Like