اختلاف رائے رکھنا بری بات ہے؟؟؟

(Zia Lashari, )

ہم ایک دوسرے کی بات برداشت کیوں نہیں کرتے،کیوں نہیں ہم کسی کی اچھی کوئی بات نہیں مانتے،صرف اپنی بات تھوپنا چاہتے ہیں، کیو ں نہیں اوروں کی باتیں سنتے، اورکیو ہمیں دوسروں کی اچھائیاں نظر نہیں آتیں کیوں ہم کسی کی تعریف نہیں کرتے؟ مثال کے طور پر میں پی پی کا ہوں تو میں ن لیگ کے برے کاموں پر گہری نظر رکھتا ہوں مجھے ان کے ہر اچھے کام میں برائی نظر آتی ہے،گویان ان کے اچھے کاموں کونظر انداز کرنا میری ذمہ داری ہے ،گر میں ن لیگ کا ہوں تو پیپلز پارٹی کے ہر خیر کے کام میں شر ڈھونا میرے ذمے ہے۔۔۔۔اسی طرح اگرمیں سنی ہوں تو شیعوں کو حقارت کی نظر سے سے دیکھتا ہوں اور اگر شیعہ ہوں تو سنیوں کوحقیرسمجھنا جیسے میرے فرائض میں شامل ہے۔۔۔اگر وجاہت مسعود اگر میری مرضی اور میری طبیعت کے خلاف لکھتے ہیں تو پورا دن ناساز گزرتا ہے اور اگر ان کی لکھی ہوئی باتیں میرے من کے مطابق ہوں تو پورا دن دل باغ رہتا ہے۔۔۔۔
بہرحال پورے ملک کا یہی حال ہے ایک دوسرے کو نیچا دکھانا ،کیا ایسا نہیں ہوسکتاکہ ہم اختلاف رائے کو اختلاف رائے تک محدود رکھیں نہ کہ اختلاف رائے کی وجہ سے دوسروں کے اچھے کاموں کو نظر انداز کردیں؟؟؟؟ ہمیں سوچنا چاہیے کہ بطور معاشرہ ہم کس سمت جا رہے ہیں؟
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Zia Lashari
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
21 Mar, 2018 Views: 287

Comments

آپ کی رائے