سچّائی اور ایمانداری صحت مند جذباتی کیفیّت

(محمد فاروق حسن, ڈسکہ)
ان میں ایک انتہائی بد دماغ عورت بھی میری زندگی میں آ چکی ہےجس نے میری نسبت سے میڈیا پر یہ مشہور کر رکھا ہے کہ موصوف آنجناب عورتوں سے بڑا پیار کرتے ہیں اور اکثر عیسائی طبقوں میں مجھے حضور پاک کے نام سے پکارا جاتا رہا ہے ایک ڈرامہ الف اللہ اور انسان مین ایک طوائف کا کردار کرنے والی عورت بھی ممیرے ساتھ وقت گزار کر گئی ہے اور اس نے خود کو حضور پاک کہلوا کر میرے اس ٹائٹل پر پورا نا اتر سکنے کا اظہار کیا ہے اور عیسائیوں کے کے ساتھ مقابلہ بازی کر کے کے جلتی پر تیل ڈالنے والی بات کی ہے

جہاں تک ہمارے معاشرے کا تعلق ہے اس کا اور صحت کا بہت زیادہ فرق ہے ایک صحت مند معاشرہ تب ہی بن سکتا ہے وجود میں آسکتا ہے جب لوگوں میں سچّائی اور ایمانداری ہو سچّائی اور ایمانداری کو ختم کرنے میں عیسائی لوگ اہم کام سر انجام دے رہے ہیں مثال کے طور پر میں ہوں تو مجھے ایک عیسائی ماسٹر نے قسم کھا کر ہمارے حضور قرار دے دیاتھا اور اس نے میری طرف اشارہ کرکے کہا کہ ہمارے حضور یہ تشریف فرما ہیں تو بچّے سارے میرے سمیت اس سانحہ سے نادان تھے کچھ سمجھ نہیں سکے لیکن جو ماسٹر صاحب مسلمان تھے نے نعرہ احتجاج بلند کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی مگر عیسائی ماسٹر جی نے اپنے فیصلے سے ہٹنا گوارہ نہیں کیا وہ پوری عیسائی دنیا میں یہ پیغام مسلسل پہچا رہا ہے کہ ہمارے حضور دیوندیوں کے قبضہ میں ہیں اور اس طرح سے اس نے کہا کہ ہم عیسائی دنیا دیوبندیوں کو نشانہ بنائیں گے اور ساتھ ساتھ ہی وہ یہ بھی کہتا تھا کہ ہم مسلم دنیا کا شیرازہ بکھیرنے کے لئے یہ باتیں کرتے ہیں کہ ہمارے نشانہ پر دیوبندی ہیں اور دیوبندی ہماری پیداوار ہیں اور مرزا قادیانی بھی دیوبندی تھا اور اس طرح سے عیسائی دنیا نے مسلم دنیا پر حملہ آور ہونے کی شروعات کی تھیں اور دیوبندیوں کو یہ کہہ کر باقی مسلم دنیا سے علیحدہ کر دیا گیا کہ یہ ہمارے پالتو ہیں اور ہم ان کو نمک حرامی کی سزا دیں گے اور پھر جب میری مرزائی ماں کو پتا چلا کہ یہ تو مرزا قادیانی سے بھی بڑا انگریزوں کا نمائندہ ہے اور انگریز اس کو بہت امیر کر دیں گے اور یہ پاکستان پر ایک ڈکٹیٹر بن کر ظالمانہ حکومت کی شروعات کرے گا ماں جو حقیقت میںمرزا قادیانی سے بھی زیادہ بڑا عہدہ حاصل کرنا چاہتی تھی اس لئے اس نے اپنی سازشوں کا آغاز کردیا -

اورمجھے بادشاہ سلامت کا خطاب دے دیا جو کہ میرے بھائی طارق کو کسی بھی صورت گوارہ نا تھا لیکن ماں کی پر زور تاکید سے اس نے مجھے جناب عزّت مآب کا لقب دے دیا اور میرے ساتھ وہ گھنٹوں تک گفتگو کیا کرتا تھا میرے ساتھ دوستانہ گفتگو کے بعد وہ گھر میں آ کر دوسرے بہن بھائیوں کے آگے میری تعریفیں کیا کرتا تھا کیونکہ اسے بتایا گیا تھا کہ بڑے بھائی کی تعریفیں کرنے کی وجہ سے وہ راستہ بھول جاتا ہے اسلئے وہ زیادہ سے زیادہ تعریفیں کرتا رہتا تھا تاکہ میں راستہ بھول جاوں اور میرے ماں باپ رشتے دار بھی مجھے راستہ سے بھٹکانے میں لگ جاتے تھے اور اندر کھاتے مرزا کے ساتھ بھی بڑی ڈیل ہو گئی کہ مجھ سے بیان لے لے کر اس کا اپنی مر ضی کا مطلب نکال کر ماسٹر جی عیسائی کو بتاتے تھے اور وہ کہتا کہ ہم نے تو مسلمانوں کے دانت کھٹّے کرنے ہیں جو بھی جیسی رپورٹس ملیں اور یوں مسلم دنیا پر ساری دنیا نے جنگ مسلّط کر دی اور وجہ میںتھا اور سبب میں تھا اور مجھے علم ہی نہیں تھا کہ میرے ساتھ دنیا کی سب سے بڑی سازش تیار کی جارہی ہیں اب مجھے پتا چلا ہے کہ یہودی اور عیسائی اورسیکولر لوگ مجھے اپنا پیشوا مانتے ہیں اور عورتیں اپنے بچّوں کے میرے نام کی لوریاں سناتی ہیں اور میرے نام کے ساتھ فوجوں کو ٹریننگیں دی جاتی ہیں اور عیسائی دنیا میں مجھے جیزیز کے نام سے بھی یاد کیا جاتا ہے اور پھر جب جیزیز کے موضوع پر فلمیں بنتی ہیں تو میری طرف سے اجازت نامہ ہالی وڈ کو پیش کیا جاتا ہے کہ فلان انسان کے انہوں نے شفقت فرمائی ہے اور ان کو اپنی پچھلے جنم کی اور اس جنم کی زندگی کی فلمیں بنانے کی اجازت دے دی ہے بہت سے اداکروں کو میں دیکھ چکا ہوں جو میرے ساتح مجاہد بن کر زندگی کے اہم ماہ و سال گزار چکے ہیں بعض خوبصوت انگریزنیاں بھی داڑھی والا گیٹ اپ لگا کر وقت گزر چکی ہیں-

ان میں ایک انتہائی بد دماغ عورت بھی میری زندگی میں آ چکی ہےجس نے میری نسبت سے میڈیا پر یہ مشہور کر رکھا ہے کہ موصوف آنجناب عورتوں سے بڑا پیار کرتے ہیں اور اکثر عیسائی طبقوں میں مجھے حضور پاک کے نام سے پکارا جاتا رہا ہے ایک ڈرامہ الف اللہ اور انسان مین ایک طوائف کا کردار کرنے والی عورت بھی ممیرے ساتھ وقت گزار کر گئی ہے اور اس نے خود کو حضور پاک کہلوا کر میرے اس ٹائٹل پر پورا نا اتر سکنے کا اظہار کیا ہے اور عیسائیوں کے کے ساتھ مقابلہ بازی کر کے کے جلتی پر تیل ڈالنے والی بات کی ہے وہ ماسٹر کہتا ہے ہم ہر معاملے میں اس کو اتنی عزّت دے چکے ہیں یعنی مجھے اتنی عزّت دے چکے ہیں کہ اس کے ایک اشارے پر چاہے جھوٹا ہو سچّا ہو ہم سر دھڑ کی بازی لگا سکتے ہیں اور میرے نام پر بہت ساری رقومات بھی مجھے بھیجی گئی ہیں جن کو برے برے مگر مچھ سیاست دانوں نے ہرپ کر لیا ہے اور اس عورت نے بھی مجھے صاف چحپتے بھی نہیں سامنے آتے بھی نہیں کے مصداق نا قابل تلافی نقصان پہنچائے ہیں اس عورت کے تمام اردو ویب سائڈوں میں آئی ڈیز ہیں اور اس نے بے شمار کالم لکھ رکھے ہیں اور بڑے لمبے عرصے سے اس ماسٹر کی راز دار بن کر میرے گرد ایک خوشامدی حلقہ بنائے ہوئے ہے اور اس نے ہیرا منڈی کی عورتوں کو اپنے ساتھ ملا رکھّا ہے اور تمام ویب سائیٹوں پر مجھے فیل کر چکی ہے اور اب مجھے مکمل ناک آوٹ کک آوٹ اور چاروں خانے چت کرنا چاہتی ہے اور یہ سب مجھے بے خبر رکھ کر نہایت بزدلانہ انداز میں خود ساختہ یک طرفہ مقابلوں میں فیلئر بناتی رہی ہے-

اس نے مجھے اپنا گرویدہ بنانے بھی خوب کوششیں کی ہیں مگر میں نے صاف طور پر قرآن وحدیث کے موقف پر ڈٹے رہنے کی بات کی ہے تو اس نے مجھے بہت بڑی پراکسیز میں مبتلا کر دیا ہے اور اب وہ اس کام میں ہوم ورک کر چکی ہے کہ اس کو اندھا لولا اور اپاہج بان کر زمین پر رینگ رینگ کر بھیک مانگنے پر مجبور کردوں گی حالانکہ وہ ایک مرد ہے لیکن اس کی فگر اس قسم کی ہے کہ جب وہ عورتوں والے کپڑے پہتی ہے اور میک اپ کتی ہے تو کوئی جج نہیں کر سکتا ہے اس کا سائز بھی بہت بڑا ہے بہت ساری لیڈی ڈاکٹر اس کا سائز دے کر بلا کسی فیس کے اس کے کام کرنے پر رضا مند ہو جاتی ہیں اور گلیمر کی دنیا مین اس کو پری کے نام سے یاد کیا جاتا ہے اور گورنمنٹ اور پرائیویٹ ہسپتالوں میں اس کو بہت منفی عزّت حاصل ہے کہ اس کو اس شعبہ میں بھی پریکےنام سے یاد کیا جاتا ہے اور اس کا سائز بھی 10 انچ سے زیادہ ہے اور اس بات کو بڑی بڑی عورتوں کے والدین رشتہ دار نہیں جانتے ہیں اگر ان شریف زدیوں کے امیر کبیر والدین کو پتا چل جائے کہ وہ اتنے بڑے سائز کا مالک ہے اور ان کی شریف زادیاں کی اس کی دیوانی ہیں تو وہ راتوں رات ان کا گلہ گھونٹ ڈالیں لیکن ایک بات یہ بھی ہے کہ وہ ہیجڑا ہے اور آپریشن کے ذریعہ سے پمپ فٹ کروائے ہوئے ہے اس لئے وہ ایمپوسیبنل کے نام سے بھی مشہور ہے وہ میرے اور میرے بچّوں کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑا ہوا ہے اور وہ کہتا ہے کہ تم سب کی گچک بنا کر میں کھاوں گا لیکن پہلے ریزن بناوں گا کہ سب کہیں کہ اچھا ہوا خس کم جہاں پاک ہو گیا ہے لیکن غرور کے لحاظ سے اب سے کئی سال پہلے بھی وہ کہتا تھا کہ مجھے اتنی عزت میری دیوانیوں کی وجہ سے حاصل ہے کہ میں تم سب کو مار ڈالوں لیکن مجھے کوئی کچھ نہیں کہہ سکے گا اور نا ہی میں ثبوت چھوڑوں گا لیکن پہلے میں تم لوگوں کا شکار کھیلنا چاہتا ہوں اور بزنس بھی کرنا چاہتا ہوں اس کا کہنا ہے کہ تڑپا تڑپا کر رول رول کر مارنے کا جو مزا ہے ایک جھٹکے میں مار ڈالنے کا وہ مزا نہیں ہے وہ تمام مسلمانوں کو صفحہ ہستی سے مٹا دینا چاہتا ہے -

میڈیا میں بھی اس کو بہت مقام حاصل ہے میرے گرد وہ گھیرا ٹائٹ کیے ہوئے ہے یہ باتیں اپنی جگہ بہت اہم ہیں لیکن یہ سب باتیں مجھے بہت دیر سے پتا چلی ہیں کیوں کہ پاکستان میں میڈیا پر خاص طور پر انٹر نیٹ پر رسائی حاصل کرنے کے لئے انسان کو فعل قوم لوط کا مرتقب ہونا ضروری ہے ورنہ سو فیصد حمایت بھی ضروری ہے اور مرزا کا پیروکار بھی ہونا چاہیے میں چونکہ بچپن سے ہی عیسائیوں کا بہت بڑا پیشوا بن چکا ہوں اور میرے خود ساختہ قصّے مشہور ہیں اور یہودیوں میں اینٹی کرائسٹ کے نام سے بھی مشہور کیا گیا ہوں لیکن یہ باتیں اس وقت میرے ساتھ ہوتی ہیں جب مجھے اینٹی کرائسٹ کے مطلب کا بھی پتا نہیں تھا میں اللہ کی پناہ میں آتا ہوں کہ میرا یہی تو ریزن بنایا جارہا ہے کہ مہنگا کر کے اسرائیل کے حوالے کیا جائے تاکہ ہمیں اسرائیل سے بہت بڑی قیمت وصول ہو سکے اس کام میں خالد اور اس کے ساتھ جن تعلق ڈیرہ غازی خان سے ہے وہ بھی شامل ہیں اور میرے بچّوں کے ننہیال والے بھی شامل ہیں میں روزانہ اپپنی زندگی کو ختم کرنے کے بارے میں گور کرتا ہوں اور پھر میں سوچتا ہوں کہ اللہ کی رحمت سے مایوس نہیں ہونا چاہیے باقی مین جس کو بڑا افسر سمجھ کر اقبال جرم کرتا ہوں اور کہتا ہوں کہ مجھ سے یہ یہ جرائم کرائے گئے ہیں تو وہ کہتے ہیں کہ ہمیں معلوم ہے ہمی نے تو کرائے ہیں کیوں کہ تم یزیدی سعودیوں کے بہت بڑے فین ہو اور ہم تیرے ذریعے سعودیہ کو بھی شکست سے دوچار کرنا چاہتے ہیں اس کام میں جتنے بھی مشہور سیاسی رہنما ہیں ان کی اولادوں کو بڑی بڑی رقومات دے کر ساتھ ملایا گیا ہے جیسا کہ سب جانتے ہیں کہ جب اولاد کے پاس لاکھوں کروڑوں ڈالر ہوں تو بڑے بڑے شرفاء شرافت کو بھول جاتے ہیں کہتے ہیں کہ چلو بعد میں توبہ کر لیں گے اس کرپشن کو ختم کر سکتی ہے فوج تو فوج کو بیکوں اور تنکواہوں کا محتاج بنا دیا گیا ہے کہ فوج کے پاس دوسرا آپشن ہی نہیں ہپے اگر بینک تنخواہ نہیں دیں تو سب فوجی بے کار ہو جائیں گے حالانکہ فوج کے پاس جرائم پیشہ لوگوں کی املاک ہونی چاہئیں جس کا کوئی بینک یا ادارہ احتساب نا کر سکے لیکن ہائے سستی کہ ان سب جرائم پیشہ سیاست دانوں نے فوج کو اپنے سیکیورٹی گارڈ بنانے کا منصوبہ بنا لیا ہے اور کہتے ہیں امریکی فوج سعودیہ کی سیکورٹی کر سکتی ہے پیسے لے کر تو ہماری فوج ہماری سیکورٹی کیوں نہیں کرسکتی ہے کہ ہم ان کو ایسا ہی ان فٹ کر دیں گے ان باتوں کے بارے میں مجھے بڑے افسروں نے آگاہ کیا تھا لیکن ان کو منظر سے ہٹا دیا تھا اور میرا برین واش کر دیا گیا تھا ---------------------- جاری ہے
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: محمد فاروق حسن

Read More Articles by محمد فاروق حسن: 108 Articles with 82862 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
29 Mar, 2018 Views: 308

Comments

آپ کی رائے