ویلنٹائن ڈے

(Maryam Arif, Karachi)

تحریر: رانیا میر
14 فروری بے حیائی کا دن ہے یہ محبت کے اظہار کا دن نہیں بلکہ دین اسلام سے بغاوت کا دن ہے، اپنے ایمان کے سودے بازی کا دن ہے، مسلمان ہونے کی حیثیت سے ہمیں تو وہ کام کرنا تھے جس کی تعلیمات اﷲ کے نبی حضرت محمد صلی ﷲ علیہ وسلم نے دی۔ 14 فروری محبت کے اظہار کے طور پر مشہور ہے، کیا ہمارے نبی حضرت محمد صلی ﷲ علیہ وسلم نے ہماری یہ تربیت کی تھی؟ کہ پورے سال میں ایک دن محبت کے اظہار کے لیے گلی گلی نکال جانا۔ کسی کے گھر کی عزت کو محبت کے نام پر تار تار کرنا،یا کسی عورت کو یہ حکم دیا کہ محبت کے اظہار کا دن اس بے غرتی سے منائے کے اپنی عزت ہی داؤ پر لگا دی جائے۔
 
گھر والوں کو دھوکہ دے کر کسی نامحرم کے ساتھ سیر پر نکل جانا، بازاروں میں نامحرم مردوں کے ساتھ گھومنا۔ اے مسلمان بہن بھائیوں! کس طرف نکل پڑے ہو ہمارے دین میں اس کی کوئی بھی حثیت نہیں۔ ہم مسلمان ہو کر اسلامی تعلیمات کو فراموش کرچکے ہیں، یہ بھول گئے ہیں کہ نبی صلی اﷲ علیہ وسلم نے فرمایا، ’’جو جس قوم کی مشابہت کرتا ہے وہ قیامت کے دن انہی کے ساتھ اٹھایا جائے گا‘‘۔ہماری حکومت کو چاہیے کہ وہ اس بے حیائی پر روک تھام کرے اس بے حیائی کو تمام اسلامی ممالک سے جڑ سے نکال پھینکا جائے۔ آئیں مل کر یہ عزم کریں کہ نہ تو ہمیں اس دن کو منانا ہے اور نہ ہی منانے والوں کا ساتھ دینا ہے، آج سے ہم سب مسلمان اس بے حیائی کے دن سے بائیکاٹ کرتے ہیں۔
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 137 Print Article Print
About the Author: Maryam Arif

Read More Articles by Maryam Arif: 1115 Articles with 345339 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language: