ایسا جزیرہ جہاں شادی شدہ مُردوں کو دفنایا یا جلایا نہیں جاتا بلکہ---

یہ دنیا عجائبات اور حیرت انگیز چیزوں سے بھری پڑی ہے اور ہم ان چیزوں سے پوری طرح واقف بھی نہیں ہیں- جب بھی ہمیں دنیا میں موجود ایسی ہی کسی ناقابلِ یقین چیز کا علم ہوتا ہے تو ہم حیران رہ جاتے ہیں-
 


ایسا ہی ایک حیران کر دینے والا گاؤں دنیا میں موجود ہے جس کے رہائشی اپنے پیاروں کے انتقال کر جانے کے بعد ان کے جسم کو دفناتے یا جلاتے نہیں ہیں بلکہ وہ جو کچھ کرتے ہیں وہ جان کر آپ خوفزدہ ہوجائیں گے-

یہ گاؤں انڈونیشیا کے جزیرے پر بالی پر واقع ہے اور اسے Trunyan کے نام سے جانا جاتا ہے- یہاں کے رہنے والے اپنے مردوں کو جلانے یا دفنانے کے بجائے انہیں خاص قسم کے درختوں کے درمیان موجود بانسوں کے بنائے پنجرے میں رکھ آتے ہیں-
 


جب ان جسموں کی صرف ہڈیاں اور کھوپڑیاں باقی رہ جاتی ہیں تو انہیں اٹھا کر ایک خاص مقام پر موجود پتھروں پر رکھ دیا جاتا ہے- اس قبرستان یا مقام تک صرف کشتی کے ذریعے ہی رسائی ممکن ہوتی ہے-

گاؤں میں ایک قدیم مندر بھی موجود ہے جس کی تاریخ 10ویں صدی سے جاملتی ہے اور گاؤں والوں کا ماننا ہے کہ یہ سب سے قدیم مندر ہے-
 


یہ گاؤں ثقافتی طور پر تنہا ہے اور یہاں کے رہنے والے باہر کی دنیا سے بے پرواہ ہیں- یہ لوگ انتہائی قدامت پسند اور پرانے رسم و رواج کی پیروی کرنے والے ہیں-

اپنے مردوں کے ساتھ یہ رویہ بھی ان کی ایک خاص روایت ہی ہے- یہ مرنے کے بعد اپنے پیاروں کو banyan نامی درختوں کے درمیان بنائے بانسوں کے پنجروں میں لمبے عرصے کے لیے رکھ آتے ہیں- یہ پنجرے اوپر سے کھلے ہوئے ہوتے ہیں-
 


جب یہ لوگ کوئی نیا مردہ لے کر جاتے ہیں تو پنجرے میں موجود پرانے مردے کے ڈھانچے کو وہاں سے ہٹا دیتے ہیں اور اس کی جگہ نیا مردہ رکھ دیتے ہیں- پرانے ڈھانچے کو کشتی کے ذریعے ایک قریبی قبرستان میں چھوڑ آیا جاتا ہے-

دلچسپ بات یہ ہے کہ اگر مرنے والا انسان غیر شادی شدہ ہو تو اسے دفن کر دیا جاتا ہے- اس کے علاوہ مرنے والے کی آخری رسومات میں خواتین کو شرکت کی اجازت نہیں ہوتی-
 


لوگوں کا ماننا ہے کہ اگر آخری رسومات میں خواتین شرکت کریں گی تو ان کا گاؤں تباہ ہوجائے گا- اور یہ تباہی کسی قدرت آفت کی صورت میں آسکتی ہے جیسے کہ آتش فشاں یا زلزلہ وغیرہ-

یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ کوئی نہیں جانتا کہ یہ قوانین کس نے بنائے تھے بس گاؤں والے مسلسل اپنے ان مذہبی عقائد پر کاربند ہیں-
 


جزیرے پر موجود اس قبرستان میں مردوں کی لاتعداد کھوپڑیاں موجود ہیں اور انہیں دیکھ کر کوئی بھی انسان خوفزدہ ہوسکتا ہے کیونکہ یہ ایسے مردوں کا قبرستان ہے جہاں مردے قبر کے اندر نہیں اوپر ہوتے ہیں-

Reviews & Comments

Language:    
The world where we live in is full of surprises and there are so many weird things happening around us that we are not even aware of! You might just freak out to hear that there’s a traditional village in Bali called Trunyan where the natives do not bury or burn the dead, but leave them to rot in a bamboo cage under a Taru Menyan tree. They let the nature consume the body till the skeleton remains.