خواتین کی تعلیم کی اہمیت

(Raana Kanwal, Islamabad)

تعلیم کسی قوم کو بہتر بنانے کا بہترین ذریعہ ہے. بدقسمتی سے ہمارے ملک میں کوئی بھی عورتوں کوتعلیم یافتہ کرنے کے لئے تیارنہیں ہے. بے شک یہ ہر انسان کا بنیادی حق ہے لیکن ہم نے اپنے معاشرے میں صنفی فرق پیدا کیا ہے. اقوام متحدہ کے محکمہ پروگرام نے اندازہ لگایا ہے کہ سیکنڈری تعلیم میں مرد کے ساتھ عورت کا 0.502 فیصد ہے اور تعلیم پر عوامی اخراجات صرف پاکستان کے جی ڈی پی کا صرف 2.7 فیصد بناتا ہے.

تاہم مردوں کو پڑھنے کا حق ہے اور فخر سے معاشرے پر غالب بھی رہ سکتا ہے لیکن ہماری خواتین کہاں ہیں؟ کیا وہ پڑھنے کا حق رکھتی ہیں؟ انہیں صرف ایک خاتون خانہ، ماں، بیوی یا بیٹی کی حیثیت سے اپنی کردار ادا کرنا ہی ہے. مرد اور عورت کواس تعلیم کی دنیا میں مساواتی درجہ نہیں دیا جا رہا ہے. خواتین کی تعلیم کی اہمیت پر زور نہیں جو کہ پاکستان کی صنفی عدم مساوات کی بنیادوں میں سے ایک ہے.

کوئی شک نہیں، خواتین کی تعلیم کسی قوم کی ترقی کے لئے ایک اہم کردار ادا کرتی ہے. شعور پیدا کرنے اور معاشرے میں بہت اچھا مقام واحترام حاصل کرنے کے لئے بہت ضروری ہے. علم خواتین کو سیاست، قانونی نظام، انسانی وسائل کی ترقی میں حصہ لینے کی اجازت دے گا. اس کے علاوہ، وہ ملک کی معیشت میں اہم کردار ادا کرسکتی ہیں.

تعلیم کے ذریعے خواتین کو بااختیار بنانا ایک ایسا طاقتور آلہ ہے، جو کہ پاکستان کواپنے قومی مقاصد کو حاصل کرنے کے لئے مدد کر سکتا ہے ۔ اس کے علاوہ، خواتین کی تعلیم ان کی زندگی میں دیگر اہم عوامل میں وٹامن کا کردار ادا کرتی ہے، بشمول صحت، ابتدائی بچپن، محنت کش بچے، غذائیت اور بہت سی چیزیں جو بہتر بن سکتی ہیں، جنکی انہیں ضرورت ہے.

اس کے علاوہ، خواتین انسانی ترقی کے شعبوں جیسے بچے کی بقا، صحت اور اسکولوں میں تعلیم جیسے میدانوں میں بہت مثبت نتائج لے کرآ سکتی ہیں. جیسا کہ ایک تعلیم یافتہ ماں تعلیم یافتہ بیٹا بنا سکتی ہے اور تعلیم کی طاقت کو استعمال کرتے ہوئے اپنے معاشرے کو بہتر بنا سکتی ہے، جو اس دنیا میں سب سے قیمتی چیز ہے. لیکن خواتین کی خواندگی کی کم شرح صرف اقتصادی ترقی پر منفی اثرات پیدا کر سکتا ہے جبکہ انسانی سرمایہ کی باقاعدہ سطح کوبھی کم کر دیتا ہے.

یہ اچھی طرح سے معلوم ہے کہ تعلیم صرف ایک ایسی چیز ہے، جو کامل شخصیات تخلیق کرسکتی ہے اور عورتوں کو اپنے دماغ اور دیگر ضروری چیزیں، تنظیمی اور انتظامی مہارت کو فروغ دینے میں مدد کرسکتی ہے. صرف خواتین کی تعلیم کی اہمیت کو سمجھنے سے، پاکستان اپنے اہم اہداف حاصل کرسکتا ہے، کامیابی حاصل کرنے اور اقتصادی ترقی میں مثبت تبدیلی لاسکتا ہے. دیگر ممالک کے ساتھ ساتھ، پڑھی لکھی لڑکیاں پاکستان کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کرسکتی ہیں.

خواتین کی تعلیم کی موجودہ صورتحال خطرے میں ہے. زیادہ تر لوگ اس بات کا یقین کرتے ہیں کہ خواتین صرف اپنے خاندانوں کی دیکھ بھال کے لۓ ہیں اور صرف مرد کو تعلیم حاصل کرنی چاہئے. یہ ایک غلط تصور ہے جو لوگ سوچ رہے ہیں، ایک تعلیم یافتہ خاتون، ماں، بیوی یا بیٹی جیسے خاندان کو بہتر انداز میں منظم کرسکتی ہیں. لہذا متعلقہ حکام کو پاکستان کے موجودہ حالات کو بہتر بنانے کے لئے اس مسئلے کو حل کرنا چاہئے اور یہ یقینی بنانا چاہیے کہ پاکستان میں ہر عورت کو تعلیم کا حق حاصل ہے.

 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 350 Print Article Print
About the Author: Raana Kanwal

Read More Articles by Raana Kanwal: 22 Articles with 3935 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Language: