زنا قرض ہے

(Babar Alyas, Chichawatni)

جوانی کا جوش چڑھا تو محبوبہ کا پیٹ بڑھا مگر یہ اُس کے لئے کوئی نئی بات نہیں تھی،
کاریگر بندہ تھا بس میڈیکل سٹور سے مطلوبہ دوائی لی اور محبوبہ تک پہنچا دی، بس دو چار اُلٹیاں ہی تو آنی تھیں اور اس کے بعد مسئلہ حل
اب اتنی سی بات پر بھلا وہ کیوں پریشان ہو، گانے گاتا گھر میں داخل ہوا تو اماں نے کہا بیٹا بہن کو ہسپتال لے جا طبیعت بڑی خراب ہے اُس کی کیا ہوا ہے اسکو
اس نے ماں سے پوچھا
ماں نے صحن میں پڑی آدھ موئی بیٹی کی طرف دیکھا اور بولی،، پتہ نہیں
صبح سے بس اُلٹیاں کیے جا رہی ہے ۔۔۔
زنا ایک ادھار ہے جس کی ادائیگی تمہارے گھر سے ہو گی ۔۔۔۔۔
کسی کو برا لگے معافی چاہتا ہو لیکن ایک تلخ حقیقت جس سے کوئی مکر نہیں سکتا!
محبت کرو لیکن اگر کسی کی زندگی آباد نہیں کر سکتے تو برباد بھی مت کرو! کیونکہ آج جو زندگی تم برباد کر رہے ہو حقیقت میں یہ تم اپنی بہن بیٹی کی زندگی برباد کر رہے ہو ! ! کیوں کہ زنا اک قرض
کوئی مانے یا نہ مانے لیکن یہی سچ ہے فیس بک پہ واٹس ایپ پہ ایمو پے چیٹ کرنا کال پے بات کرنا یہ اور چیز ہے
مگر جب آپ کسی کو ملتے ہو ڈ یٹ پر جاتے ہو اس کے جسم کے ساتھ کھیلتے ہو اس کی عزت خراب کرتے ہو یہ بہت بڑی غلط بات ہے اور یہ قرض ہے
لڑکیوں تم بھی سن لو اصل محبت شادی کے بعد ہوتی ہے
 

Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 1588 Print Article Print
About the Author: Babar Alyas

Read More Articles by Babar Alyas: 165 Articles with 48042 views »
I am a teacher. I am very fond of studying different issues in the world... View More

Reviews & Comments

Language: