وہ چاہتا تھا کہ میں خود ہی چلی جاؤں تاکہ۔۔۔ تین بچوں کی ماں کو چلتی ٹرین میں ایسے حالات کا سامنا کرنا پڑا کہ انسانیت شرما گئی

 
انسانیت مرتی نہیں ہے بلکہ ماری جاتی ہے انسانیت کو ہمیشہ کوئی اور انسان اپنے عمل سے قتل کرتا ہے ۔ ایسے ہی کچھ واقعات اس دنیا میں رونما ہوتے ہیں جن کے بارے میں جب پتہ چلتا ہے تو ہماری روح تک کانپ جاتی ہے-
 
ایسا ہی ایک واقعہ کچھ عرصہ قبل صارم برنی میں پناہ کے لیۓ آنے والی ایک عورت نے سنایا۔ اس عورت کو صارم برنی ٹرسٹ میں ایک اللہ کا خوف رکھنے والا رکشہ ڈرائيور چھوڑ کر گیا تھا۔ اس عورت کے مطابق اس کا شوہر اس کو اور اس کے تین بچوں کو چلتی ٹرین میں طلاق کے کاغذات تھما کر اجنبی شہر اور اجنبی لوگوں کے درمیان چھوڑ کر فرار ہو گیا-
 
تفصیلات کے مطابق اس عورت کا سابقہ شوہر ایک شکی انسان تھا اور آئے روز گالم گلوچ اور مارپیٹ کرتا تھا۔ تین بچوں کی ماں جن میں سے دو بیٹے اور ایک بیٹی تھی۔ ایک باپ کے فرائض انجام دینے کے بجائے اس کا ہر وقت بچوں کے سامنے یہی مطالبہ ہوتا تھا کہ یہ عورت بچوں کے ساتھ خود ہی اس کو چھوڑ کر چلی جائے تاکہ اس کو طلاق دینے کی زحمت بھی نہ کرنی پڑے اور سب کو بتا سکے کہ وہ اس عورت پر اگر شک کرتا تھا تو کچھ غلط نہ کرتا تھا-
 
مگر جب اس کی تمام کوششیں ناکام ہو گئیں تو اس نے ایک نیا راستہ سوچا جس سے اس کی جان اس عورت اور بچوں سے چھٹ سکتی ہے- اس نے اپنی بیوی اور بچوں کو کراچی کے سفر کے لیے تیار کیا اور ٹرین میں ان کے ساتھ بیٹھ گیا-
 
 
سکھر پہنچنے پر اس نے بیوی کو کہا کہ اسے کچھ سامان لینے جانا ہے تب تک وہ یہ کاغذات پکڑے اور یہ کہہ کر وہ چلا گیا جب سکھر اسٹیشن پر وہ آدمی ٹرین میں نہیں چڑھا تو اس عورت نے اپنے شوہر کی تلاش شروع کر دی-
 
مایوس ہو کر جب اس نے ان کاغذات کو چیک کیا تو اس کو پتہ چلا کہ اس کا ظالم شوہر ان تین بچوں کے ساتھ اس کو طلاق دے کر فرار ہو گیا ہے۔ اس عورت کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ آدمی اس سے یہی کہتا تھا کہ طلاق لے کر چلی جاؤ ورنہ جان سے مار دوں گا-
 
کراچی پہنچنے پر اس عورت کا سامنا ایک اجنبی شہر اور اجنبی لوگوں سے تھا مگر دنیا ابھی اچھے لوگوں سے خالی نہیں ہوئی اس وجہ سے ایک رحم دل رکشے والا اس عورت اور بچوں کو معروف سماجی کارکن صارم برنی کی پناہ گاہ میں چھوڑ گیا-
 
 
اس وقت یہ عورت اپنے بچوں سمیت صارم برنی کی پناہ میں ہے اس عورت کے بچوں کے ہاتھوں میں الرجی کی وجہ سے شدید دانے نکلے ہوئے تھے اور ایک بچہ کے سر پر چوٹ کے سبب ٹانکے بھی آئے مگر ان کا ظالم باپ ان کو بے یارو مددگار چھوڑ کر اپنی زندگی کے مزے لوٹ رہا ہے۔
Most Viewed (Last 30 Days | All Time)
19 Oct, 2021 Views: 20647

Comments

آپ کی رائے