روزہ دارو اللّٰہ کے پیارو

(DR ZAHOOR AHMED DANISH, NAKYAL KOTLE AK)
اسلام دین فطرت ہے اس کا کوئی بھی کام حکمت سے خالی نہیں ۔کبھی وہ اسرار و رموز ہم پر آشکارا ہوتے ہیں اور کبھی ہم سے مخفی رہ جاتے ہیں ۔اس میں کمی کی نسبت ہماری کم فہمی کی جانب ہے تعلیماتِ اسلام تو تمام کی تمام کامل و اکمل اور اعلٰی و ارفع ہیں۔ماہِ رمضان کی آمد آمد ہے ۔میں نے سوچاکیوں نہ ہم روزے کے متعلق کچھ طبی فواء کے حوالے سے کچھ سیکھنے کی سعادت حاصل کرلیں تاکہ کسی کو یہ معلوماتِ نافع بتاکراسے روزہ کے فوائد سے شناسا کرسکیں ۔

محترم قارئین:
سال بھرہم تین وقت کا کھانا کھاتے ہیں ،دن بھر کچھ نہ کچھ کھاتے رہتے ہیں ۔لیکن کبھی سترماوں سے زیادہ پیار کرنے والے رب نے ہمیں کبھی منع نہیں کیا لیکن ان بارہ ماہ میں ایک ماہ کے لیے ہمیں منع فرمادیاکہ نہ نہ اے میرے بندے اس ماہ میں اپنی زندگی کا جدول ،اپنے شب و روز کے امور کے لیے ایک نیاطریقہ کار روا رکھ ۔اس میں کیاحکمت ہے تیری بھلائی ہے ۔میں آپ کو روزہ کے طبی فوائد بتاچاہ رہاہوں تو لیجیے ۔طبی فوائد: روزہ عبادت کے ساتھ ساتھ صحتِ انسانی کے لئے مفید چیز ہے۔ روزہ رکھنے سے انسان کمزور نہیں ہوتا بلکہ درحقیقت 24 گھنٹوں میں جسم کو مجموعی طور پر اتنے حرارے (Calories) اور مائع (پانی) کی مقدار مل جاتی ہے۔جتنی اسے عام دنوں میں درکار ہوتی ہے ۔بلکہ رمضان میں ہمارے کھانے پینے اور غذاوں کے انتخاب کا جدول اور طریقہ بھی بد ل جاتاہے ہم اکثر زیادہ پروٹین اور کاربوہائیڈریٹ والی چیزوں کو ترجیح دیتے ہیں نتیتجتاعام دنوں کے مقابلہ میں اس کی مقدار بڑھ جاتی ہے ۔

(۔۔۔۔)۔سال بھر ایک یکساں رفتار سے چلنے والا نظام انہضام اس ماہ کچھ ریسٹ کرتاہے جگرکو بھی کچھ فرصت کے لمحات ملتے ہیں ۔کیونکہ سال کے گیارہ ماہ اسے چل سو چل کرناہے تو اب وہ یہ تیس یاانتیس دن میں خود کو آراد دہ کیفیت میں گویا تیار کررہاہوتاہے۔جبکہ اطباء و ماہرین طب کی یہ رائے ہے کہ چہ جائے کہ وہ مسلم ہیں یا غیرمسلم اس بات پر متفق ہیں کہ جسم کے ان اہم پرزوں کو اپنی بقاء اور جسم کے ارتقاء کے لیے ایک ماہ کی ریسٹ کی اشد ضرورت ہوتی ہے ۔ہم پر کرم دیکھیے کہ ہمیں ہمارے ربّ نے وہ نعمت روزہ کی صورت میں عطافرمادی کہ روحانی منفعت کے ساتھ ساتھ جسمانی منفعت بھی ۔

(۔۔۔۔) اسی طرح فشار ِ خون کے میں بھی کمی واقع ہوتی ہے ۔اس سے دل کی دھک دھک کی مستقل ریاضت میں کچھ وقفتہ آنے سے اس کچھ آرام مل جاتاہے تاکہ مزید رننگ کرسکے ۔ایک اور اہم اور قابل غو بات وہ یہ ہے کہ خلیوں کے درمیان (Inter Celluler) مائع کی مقدار میں کمی کی وجہ سے خلیوں کا عمل بڑی حد تک سکون آشنا ہو جاتا ہے۔ لعاب دار جھلی کی بالائی سطح سے متعلق خلیے جنہیں (Epitheliead) کہتے ہیں اور جو جسم کی رطوبت کے متواتر اخراج کے ذمہ دار ہوتے ہیں ان کو بھی صرف روزے کے ذریعے ہی آرام اور سکون ملتا ہے۔ اسی طرح سے ٹشو یعنی پٹھوں پر دباؤ کم ہو جاتا ہے۔ رمضان کے ایک ماہ کے روزے بطور خاص ڈائسٹالک پر یشر کو کم کرکے انسان کو بہت زیادہ فائدہ پہنچاتے ہیں۔

(۔۔۔۔)۔جسم کا ایک اہم جزء پھیپھڑے جوبراہِ راست خون صاف کرتے ہیں اس لئے ان پر بلاواسطہ روزے کے اثرات پڑتے ہیں۔ اگر پھیپھڑوں میں خون جمع ہو جائے تو روزے کی وجہ سے بہت جلد یہ شکایت رفع ہو جاتی ہے اس کا سبب یہ ہے کہ نالیاں صاف ہو جاتی ہیں۔ یہ بھی یاد رکھنا چاہیے کہ روزہ کی حالت میں پھیپھڑے فضلات کو بڑی تیزی کے ساتھ خارج کرتے ہیں اس سے خون اچھی طرح صاف ہونے لگتا ہے اور خون کی صفائی سے تمام نظامِ جسمانی میں صحت کی لہر دوڑ جاتی ہے۔

(۔۔۔۔) روزے کے دوران جب خون میں غذائی مادے کم ترین سطح پر ہوتے ہیں تو ہڈیوں کا گودہ حرکت پذیر ہو
جاتا ہے۔ اس کے نتیجے میں لاغر لوگ روزے رکھ کر آسانی سے اپنے اندر زیادہ خون پیدا کرسکتے ہیں۔ روزے کے دوران جگر کو ضروری آرام اتنا مواد مہیا کر دیتا ہے جس سے بآسانی اور زیادہ مقدار میں خون پیدا ہو سکے۔

(۔۔۔۔۔۔)جسم میں خون نہ ہوتو جسم میں سکت نہیں ،حرکت نہیں ،نمو نہیں ،آفزائش نہیں ۔اب میرے پیارے رب کی حکمت دیکھیں کہ خون میں سرخ ذرات کی تعداد زیادہ اور سفید ذرات کی تعداد کم پائی جاتی ہے۔ طبی ماہرین کہتے ہیں کہ روزے کی حالت میں یعنی جب انسان بھوکاہوتاہے تو ایسے میں جسمانی حرارت کا گراف گر جاتاہے لیکن جب حقیقی بھوک زور پکڑتی ہے تو حالتِ جسمانی اصلی حالت کی طرف ماہل ہوجاتی ہے ۔ اسی طرح جب روزہ کھولا جاتا ہے اور غذا استعمال ہوتی ہے تو حرارتِ جسمانی میں کسی قدر اضافہ ہو جاتا ہے روزہ رکھنے کے بعد خون کی صفائی کا عمل جاری ہو جاتا ہے۔خون کے سرخ خلیات کی تعداد میں ترقی ہو جاتی ہے ۔۔

محترم قارئین:کیاخیال ہے آپ کا ؟رمضان المبارک کی بابرکت ساعتوں کی آمد آمد ہے ۔آپ تمام روزوں سے فیضیاب ہونے کی نیت فرمالیں ۔ان شاء اللہ عزوجل !نیت کاثواب ہمارے ذاتی نفع کے کام کو بھی نیکی میں بدل دے گااور جو طبی روزے کے فوائد ہیں وہ بھی ہمیں نصیب ہوجائیں گئے ۔مجھے اپنی آراء سے ضرور نوازئیے گا۔یہ ساعتیں پھر زندگی میں نصیب ہوں یانہ جانے پھر یہ بہاریں مل ہی نہ پائیں تو۔۔۔۔۔لہذا وقت کوغنیمت جانتے ہوئے ماہ مکرم ماہ ذیشان ماہِ رمضان کی تیاریاں شروع کردیجے گا۔جس طرح تاجر مال کمانے کے لیے ایسے ہی آپ بھی نیکیوں کے حریص بن جائیں اور اپنے ربّ کی خوب رحمتوں کی تجارت کے لیے کمر بستہ ہوجائیں ۔اللہ عزوجل :ہمیں ماہِ صیام کی برکتوں و رحمتوں سے مالا مال فرمائے ۔آمین
Rate it:
Share Comments Post Comments
Total Views: 947 Print Article Print
About the Author: DR ZAHOOR AHMED DANISH

Read More Articles by DR ZAHOOR AHMED DANISH: 231 Articles with 219415 views »
i am scholar.serve the humainbeing... View More

Reviews & Comments

slam
wah doctor sahb, kia baat hay, ham to pehle hi aap k dewane hen. Allah aap ko mazeed taraqi ata farmae. aap k ilm, qalm, jan, maal, Olad sab chezon me taraqi ata farmay.
ameen.

mere dil ki dua hay:
Ya Allah Mujhy bhi Dr Zahoor Ahmed Danish K Qalam Ka Aik Qatra Ata Farma.
Ameen
By: serwer nadeem, karachi on Aug, 05 2012
Reply Reply
0 Like
سبحان اللہ ۔ڈا۱کٹر صاحب ایک وقت میں اتنے محاز پر ۔مجھے تو آپ کی علمی استعداد پر رشک آتاہے ۔اللہ آپ کو مزید ترقیاں عطافرمائے۔
By: naveed baig, kmalia on Aug, 01 2012
Reply Reply
0 Like
apne to in libral logon ka mon band kerdia hy jo her bat me science science ke rat lagae hote hain.un ke aqal be thekane a jaige k ye aj ke nae tehqeq ALLAH naik bndon he ka faiz hy.DR sahb khuda rah mustaqil likte rahain .hum bechane se apke nae tehreeer k muntazir rahte hain.
By: nabeel and friends, multan on Jul, 31 2012
Reply Reply
0 Like
DR UR DOING WELL .BUT SOME SUGGESTION FROM ME THAT UR WORD SWEETE BUT SCHOLAR AND MOST EDUCATED PERSON CAN UNDER STAND BUT NORMAL PERSON NO UNDERSTAN SO REQUEST TO U AS LIKE MY BROTHER BE KINDLY USE NORMAL WORLD.
By: NAEEM NIAZI, dubai on Jul, 30 2012
Reply Reply
0 Like
اللہم زد فزد فی علمک و عملک و عمرک ۔اللہم الرحم علیک ۔یااخی اضحک اللہ سنک دائما۔
By: ZAIN UL AABDEEN, SHAIKHO PORA on Jul, 30 2012
Reply Reply
0 Like
آپ نے سبق آموز تحریر لکھ کر ہمیں علم سیکھنے کا موقع دیا بہت بہت شکریہ ۔
By: salman habib , kmalia punjab on Jul, 29 2012
Reply Reply
0 Like
INSHA ALLAH APNI AUR TAMAM UMMAT E MUSLIMAH KI ISLAH KI KOSHISH KARENGEY,
By: ASIM, Karachi on Jul, 25 2012
Reply Reply
0 Like
INSHA ALLAH I WILL FOLLOW THE COMMAND OF ALLAH AZZAWAJJAL.
By: ASIM, karachi on Jul, 25 2012
Reply Reply
0 Like
Masha Allah Allah ap ko jaza atta farmae
By: Zia Ahmad Awan, sialkot on Jul, 18 2012
Reply Reply
0 Like
INSHAALLAH .. zaroor ..khub ehbadat b karehn gy .telawat b karehn gy ....bhai jaan app ko b ramazn ki amad ki mubarek hu .....hum sab ky liye dua karna ..ALLAH hum say razi hu jhayen es barkat aur rahemontoon walay meheney mey ..................
By: shabana, hong kong on Jul, 15 2012
Reply Reply
0 Like
Language: