اصل گلوبٹ ہم عوام

(Aqsa Aziz, BahawalNagar)
آج کل ہم سب کا زیر غور مسئلہ حکمران ہیں . نواز شریف ایسے ، زرداری صاحب ویسے ، نثار صاحب حکومت چور ہیں ، خادم اعلی نوٹنکی ، مولوی نا اہل ، عمران خان جذباتی ، الطاف بھائی ٹیلی فون انکل ، ایجنسیاں باہر کی . جہاں دیکھو یہی بحث چل رہی ہے . جس کو دیکھو اپنا زاتی غصہ گورنمنٹ پر نکال رہا ہوتا ہے فیس بک یو ٹیوب ، ای میل ایس ایم ایس ان سب کو تو ہم نے انصاف کی زنجیر سمجھ لیا ہے .

کسی كے نمبر میٹرک میں کم آجائیں تو بورڈ آفس کرپٹ ہے ، انٹر میں کمپیوٹر سائنس رکھی ہو ، پری انجینیئرنگ رکھی ہو یا پری میڈیکل یا پِھر کامرس . اگر کسی میں بھی کوئی سپلی آجائے تو کورس بے تکا نظام کرپٹ . رہی ہماری بات مطلب صنف نازک تو نمبر کم آنے پر ہی لو بلڈ پریشر جیسی بیماریوں کا شکار ہو جاتی ہیں ، کبھی کوئی کہتا ہے پڑھایا سہی نہیں گیا ، کبھی کوئی لوڈ شیڈنگ کو الزام دیتا ہے .

مانا كہ یہ سب مسئلے کافی زیادہ ہیں پر ہر چھوٹا بڑا الزام حکمرانوں پر لگانا کتنا آسان لگتا ہے یہ کہنا کے سارا قصور تو حکومت کا ہے . ہم آپ اور ہمارا متوسط طبقہ تو بہت شریف ایماندار ہے معصوم ہیں ہم سب .

پر کیا سچ میں ایسا ہے ؟ یہ جو بغیر کسی لسٹ كے ہمارے ہاں کھانے پینے کی چیزیں مہنگی ہوجاتی ہیں ، بسوں كے کرائے بڑھ جاتے ہیں . پیٹرول کی قیمت بڑھنے پر بولتے ہیں پر جب پیٹرول کی قیمت کم ہو تب کرائے اتنے ہی رہتے ہیں کم نہیں ہوتے ، دس روپے کا سموسہ رمضان میں بیس روپے کا ہو جاتا ہے . فروٹ سفید كے ہاتھ سے نکل جاتے ہیں ، خود کی شاد یوں میں فائرنگ اپنے دکھاوے کے لیے کرتے ہیں اور پِھر حکومت ذمہ دار ان سب کی ؟ سوچیں یہ کون کرتا ہے ؟ عوام ، حکمران یا کوئی گلو بٹ ؟ اور جس دن پتہ لگ جائے گا اس دن کرپٹ نظام ٹھیک ہو جائے گا .
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Aqsa Aziz

Read More Articles by Aqsa Aziz: 7 Articles with 3245 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
05 Feb, 2015 Views: 379

Comments

آپ کی رائے