کُھلے بال

(Shahid Raza, )
پردہ کرنا ہر مسلمان عورت پر واجب ہے لیکن ہم دیکھتے ہیں کے ہمارے معاشرے میں اس کا رواج بہت ہی کم رہ گیا ہے ،آپ نگاہ کریں شادی بیاہ وغیرہ پر،آپ نگاہ کریں مختلف دفاتر پر جہاں باقاعدہ اُن مستورات کو جاب پر رکھا جاتا ہے جو پردہ نہیں کرتیں اور اگر کوئی باپردہ وہاں چلی جائے تو Reject کر دی جاتی ہے یا پھر شرط رکھ دی جاتی ہے کے بے پردہ یہاں آنا ہے اب مجبوری میں شریف النفس مستورات کو بھی جاب کرنا پڑتی ہے ،سمجھ میں نہیں آتا کے ایسا لوگ کیوں کہتے ہیں کیا اُن کے گھر میں ماں بہنیں نہیں ہیں کیا؟اور کچھ مستورات ایسی ہیں جو فیشن میں بے پردہ پھرتی ہیں تا کے لوگوں کی توجہ کا مرکز بنیں تو ایسی مستورات پر اﷲ کے فرشتے بھی لعنت بھیجتے ہیں کیوں کے اﷲ نے ہر مخلوق بنائی ہے تو سب کے قوانین بھی بنائے ہیں اور عورتوں کا قانون یہ بنایا گیا ہے کے وہ پردہ میں رہیں۔

ہر انسان کی اﷲ نے ایک حد بنائی ہے لیکن جب انسان اپنی حدوں سے باہر جانے لگے تو سوائے نقصان کے کچھ نہیں بچتا ہمارے ہاں Morning Shows وغیرہ ہوتے ہیں جس میں پردے کا خیال نہیں رکھا جاتا نہ اس بات کا خیال رکھا جاتا ہے کے کون سی بات کب اور کہاں کرنی ہے ،ہمارے ہاں شادیوں میں پردے کا خیال نہیں رکھا جاتا ہر عورت ایک سے بڑھ کر ایک Beauty parlor سے تیار ہو کر آتی ہے کس لیے اس لئے کے وہ سب میں نمایاں نظر آئے تو اگر یہ پروگرام صرف عورتوں کا ہو تو مسئلہ نہیں لیکن اگر
Mix Gathering ہو اور عورت اپنے میک اپ اور کھلے بالوں کو دوسرے لوگوں کو دکھائے تو یہ جائز نہیں ہے،ایسے دفاتر جہاں پردہ کرنے میں پابندی ہو اور عورت مجبور بھی ہو تو مجبوری میں بھی حرام کام کرنے کی اجازت نہیں ہے بلکہ یہ سوچنے کا مقام ہے کے جب یہ دفتر والے میری مجبوری کو دور کر سکتے ہیں تو اﷲ کی ذات میری مجبوری کو کیوں نہیں دور کر سکتی ،ایک Call Girl کا nterview Iمیں نے
ٹی و ی پر سُنا جو کہہ رہی تھی میں نہیں چاہتی غلط کام کرنا لیکن حالات نے مجبور کر دیا ،تو یاد رکھئے گا حالات تو پاکستان میں سب کے ہی خراب ہیں سیاست دان پریشان ہیں،اپوزیشن پریشان ہے ،عوام پریشان ہے ،تو کیا کریں کیا سب حرام کام کرنا شروع ہو جائیں؟اور دوسری بات انسان جتنا بھی مجبور ہو اﷲ کبھی مجبور نہیں ہوتا آپ خلوص کے ساتھ اﷲ کو سجدہ کریں اﷲ کے ساتھ راز و نیاز کریں پھر دیکھیں آپ کے مسئلے کیسے حل ہوتے ہیں ،لیکن آپ جتنا بھی مجبور ہوں حرام کام کرنے کی اﷲ نے آپ کو اجازت نہیں دی ہے اور اگر آپ مجبوری میں حرام کام کرتے بھی ہیں تو اس کا مطلب ہے آپ کو اپنے خالق پر اعتبار نہیں ہے،اپنے گناہ کو مجبوری کا نام نہیں دینا چاہئے اﷲ پر بھروسہ رکھیں اﷲ سب کے مسئلے حل کرنے والا ہے ،اور ہر انسان کامیاب ہونا چاہتا ہے اور عورتوں کی کامیابی اُن کے پردے میں ہے بے پردگی میں نہیں کس کو آپ اچھی لگیں اور کس کو بری یہ سب دنیا میں ہی رہ جائے گا آپ کو کفن کے پردے میں اﷲ کے پاس جانا ہے سوچیں کس منہ سے اﷲ کے پاس جائیں گی اﷲ کو راضی کر کے یا ناراض کر کے۔
صرف احساس ِ ندامت اک سجدہ اور چشمِ تر
اے خدا کتنا آساں ہے منانا تجھ کو
 
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Shahid Raza

Read More Articles by Shahid Raza: 162 Articles with 148747 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
09 Nov, 2016 Views: 958

Comments

آپ کی رائے
bhai koi bhi itna majboor nhi hota k aisa kaam kry,, chalo agr majboor ho bhi tu aur bhot se kaam hain,,
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 02 2016
Reply Reply
0 Like
Allah hum sab ko hadayat dy,Ameen,,,good Article
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 02 2016
Reply Reply
0 Like
nice article
By: umama khan, kohat on Dec, 01 2016
Reply Reply
0 Like
insan ager shareef khon rakhta hai to aese kam ka sochta bhi nahi woh gharon main masigeri ker lay GI aesa kam nahi karay gi main aese khawateen ko bhi janta hon Jo kam kerti hain ezat Kay sath article perhnay ka shukreya
By: shahid raza, karachi on Dec, 03 2016
0 Like
شاید وقت ہی ایسا آگیا ہے کہ جب غلط کام کرنا آسان ہے اور ٹھیک کام کرنا مشکل ہو گیا ہے
اللہ سب کی زندگی میں آسانیاں ڈالے اور ہمیں سیدھے راستے پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے
By: sana, Lahore on Nov, 29 2016
Reply Reply
1 Like