سو لفظوں کہانی

(Umama khan, kohat)
امی کا دل بلیوں اچھل رہا تھا وہ بہت خوش تھی کیونکہ آج اس کے شہزادے کو دیکھنے لڑکی والے آئے ہوئے تھیں امی کو پہلے پھیرے میں ہی من موہنی سی زینب بے حد پسند آئی تھی اور اس وقت امی کا بس نہیں چل رہا تھا کہ زینب کی فیملی والوں کے خدمت میں کیا کیا نہ کرے--------------------------- تھوڑی دیر بعد دانیال ( امی کا شہزادہ ) آفس سے آگیا------------------------ لڑکی والے دانیال کو دیکھنے کے بعد ایک منٹ کے لیے بھی نہیں روکے اور چلے گئیں-------- امی حق دق رہ گئیں---- کیا کمی تھی اس کے شہزادے میں ------ خوبصورت ، تعلیم یافتہ ، نرم دل، روشن خیال----- اور اگلے دن لڑکی والوں کا جواب تھا سر پر کروشیاں کی ٹوپی، ٹخنوں سے اونچی شلوار، اور طالبان جیسی داڑھی، --- ہماری بیٹی بہت نازک مزاج ہے اور ایسے لوگ انتہا پسند ہوتے ہیں عورتوں پر پابندیاں کرنے والے، ظالم، تنگ نظر، وغیرہ وغیرہ--
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: umama khan

Read More Articles by umama khan: 22 Articles with 39413 views »
My name is umama khan, I love to read and writing... View More
19 Nov, 2016 Views: 946

Comments

آپ کی رائے
very nice
By: Abrish anmol, Sargodha on Dec, 12 2016
Reply Reply
0 Like
کہانی کا عنوان بھی کوئی مناسب سا رکھنا بہتر عمل ہوتا ہے، آپ کی کہانی جس تلخ عنصر کو ظاہر کر رہی ہے وہ آج بہت عام سا ہو چکا ہے۔آپ بہتر لکھ سکتی ہیں ، تھوڑی محنت اور کرلیں اور کہانی کو اپنے عنوان کے ساتھ شائع کرایا کریں۔ بہتر کاوش ہے۔
By: Zulfiqar Ali Bukhari, Rawalpindi on Dec, 02 2016
Reply Reply
0 Like
thx is ka unwan dary wala ta pata nhe kise ghalty se ye mail howa mery aik or story ka b ye anwan hai ye sab ghalty se howa hai
By: umama khan, kohat on Dec, 04 2016
0 Like
thx bhai is ka unwan ye nhe ta mai 2 storys aik sat lik rahe ty ghalty se ye anwan mail howa ta
By: umama khan, kohat on Dec, 04 2016
1 Like
thx mini and zeena
By: umama khan, kohat on Nov, 27 2016
Reply Reply
0 Like
umama v nice topic welldone sis :)
By: Zeena, Lahore on Nov, 26 2016
Reply Reply
0 Like
ummama right aj kal log is chese ka bhot issuse bnaty hai
By: mini, mindi bhauddin on Nov, 21 2016
Reply Reply
0 Like