ناخن اور مزاج

(Dr B.A Khurram, Karachi)

تحریر ۔۔۔آصف جاوید
چھوٹے ناخن
چھوٹے ناخن جن کی بنیادیں چپٹی ہوں اور جن میں چاند چھوٹے ہوں یا بالکل ہی غائب ہوں ان ناخنوں کے حا ملین کا دل کمزور ہوتا ہے اور عام طور پر وہ دل کی بیماریوں کے مریض ہوتے ہیں ۔ اگر ناخنوں میں بڑے بڑے چاند ہوں تو سمجھے دل طاقتور ہے۔ اگر ناخن چھوٹے ہوں اور بنیادوں پر گوشت میں دھنسے ہوں تو سمجھے اعصاب کی بیماری کے مظہرہیں اور جو کناروں پر ٹیڑھے ہوتے ہیں ۔ اگر ایسی صورت پیش آ جائے تو فالج کا خطرہ ہوتا ہے بالخصوص جب وہ سفید ہوں۔ آسانی سے ٹوٹ جائیں اور چپٹے ہوں تو بیماری زیادہ خطرناک صورت اختیار کر چکی ہے۔ اور چھوٹے ناخنوں والے افراد بڑے ناخن والے لوگوں کی نسبت دل کی بیماریو ں پیٹ اور ٹانگوں کی بیماریوں میں زیادہ مبتلاہوتے ہیں-

لمبے ناخن
اگر ناخنوں پر سفید دھبے ہو ں تو اعصابی مزاج کے مظہر ہوتے ہیں اور اگر دھبوں کی تعداد بہت زیادہ ہو تو سمجھے کہ اعصابی نظام شکستہ ہو چکا ہے اور اس کو از سرنو سیٹ کرنا ہو گا ۔ اگر ناخن پتلے ہوں تو سمجھے کہ صحت خراب ہے ،قوت کی کمی ہے ۔ جو ناخن بہت لمبے ہوں گے اگر اونچے اور ٹیڑھے بھی ہو گے تو کمر کے حرام مغفر میں بیماری کا خطرہ سمجھے ۔

ناخن اور مزاج
لمبے ناخن والے لوگ زیادہ تنقید نہیں کرتے لیکن وہ دوسروں کو متاثر بھی نہیں کرتے وہ مقابلتہـً شریف اور خاموش قسم کے ہوتے ہیں۔ لمبے ناخن ہر طرح سکون ،اور خاموشی، آرام پسندی اور دھیما مزاج ظاہر کرتے ہیں ۔ عام طور پر ہر چیز کو بڑے آرام و سکون سے لینے اور کرنے کے عادی ہوتے ہیں ان ناخنوں والے افراد کے سامنے تخیلات کی دنیا ہوتی ہے۔ وہ آرٹسٹک طبع کے ما لک ہوتے ہیں۔ وہ شاعری ،مسوّری اور دیگر فنون لطیفہ کے شائق ہوتے ہیں ۔ لمبے ناخن والے لوگ خیالی ہوتے ہیں ۔ وہ حقائق کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر نہیں دیکھ سکتے بالخصوص اگر حقائق پسند نہ ہوں چھوٹے ناخنوں والے افراد تنقید کرنے والے ،غلطیا ں گرفت میں لینے والے خواہ وہ خامیاں اـن کی ذات کے اندر ہی کیو ں نہ ہوں۔وہ ہر سامنے اور پیش آنے والی چیز کا تجزیہ کرتے ہیں ۔ وہ فلسفہ ،دلائل و براہین اور حقائق کو آزماتے ہیں۔اس قسم کے لوگ بڑے اچھے نقاد ہوتے ہیں ۔ وہ اپنے فیصلوں میں باریکیوں کا خیال رکھتے ہیں۔ وہ بحث و مناظرہ کے شائق ہوتے ہیں ۔ وہ اپنی رائے پر اخیردم تک اڑے رہتے ہیں۔ ان میں شائستہ مزاق کی خوبی ہوتی ہے۔وہ مزاج کے تیزاور جلد نتیجے پر پہنچنے والے ہو تے ہیں ۔ وہ جن باتوں کو نہیں سمجھ پاتے ان پر رائے نہیں دیتے اگر ناخن لمبے چوڑے ہوں اور بہت لمبے بھی ہو ں تو اس قسم کے لوگ جہاں کا درد ہماے جگر میں ہے کی قسم کے ہوتے ہیں ۔ وہ دوسرے کے پھٹے میں ٹانگ اڑاتے ہیں۔ اگر چھوٹے ناخنوں والا فرد اپنے ناخن کاٹے تو سمجھے کہ اعصابی طور پر پریشان ہے۔ جس طرح پہلے لکھا گیا ہے اگر ناخنوں پر نشانات ہو ں تو یہ اعصابی بیماری کے مظہرہیں ۔ مزاج کا ان سے کوئی تعلق نہیں-

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Dr B.A Khurram

Read More Articles by Dr B.A Khurram: 543 Articles with 226442 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
08 Oct, 2017 Views: 430

Comments

آپ کی رائے