بائیڈن کا یوکرین کے لیے 80 کروڑ ڈالر سے زائد کی فوجی امداد کا اعلان

image

امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا ہے کہ واشنگٹن آنے والے دنوں میں یوکرین کے لیے مزید 80 کروڑ ڈالر سے زائد کی فوجی امداد کا اعلان کرے گا۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق میڈرڈ میں نیٹو کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے گفتگو میں امریکی صدر نے کہا کہ امریکہ روس کے خلاف جنگ میں یوکرین کی حمایت جاری رکھے گا۔

انہوں نے کہا کہ ’ہم فضائی دفاع، توپ خانے، کاؤنٹر بیٹری سسٹم اور دیگر ہتھیاروں کے لیے مزید 80 کروڑ ڈالر دینے کا ارادہ رکھتے ہیں۔‘

صدر جو بائیڈن نے کہا کہ ’ہم یوکرین کے ساتھ کھڑے ہوں گے، ہمارے اتحادی بھی کھڑے ہوں گے اور یہ یقینی بنائیں گے کہ یوکرین کو روس کے ہاتھوں شکست نہ ہو۔‘

نیٹو ممالک نے یوکرین پر روسی حملے کے بعد کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لیے اقدامات پر اتفاق کیا ہے۔

میڈرڈ سربراہی اجلاس میں جو بائیڈن کا یہ عزم کہ ’اپنے اتحادیوں کے ایک ایک انچ کا تحفظ کیا جائے گا‘، اس وقت سامنے آیا جب امریکہ کے زیرقیادت فوجی اتحاد بالٹک ریاستوں اور پولینڈ کو مستقبل میں روسی حملے سے بچانے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے۔

مزید برطانوی اور دیگر اتحادی ممالک کی فوجوں کو مشرقی سمت میں تعینات کیا جائے گا۔ اسی طرح امریکہ یورپ میں پہلے سے موجود سکیورٹی اہلکاروں کی تعداد میں ایک لاکھ کا اضافہ کرنے کے ساتھ ساتھ سپین کو مزید جنگی جہاز جبکہ رومانیہ اور بالٹک ریاستوں کے ساتھ بھی دفاعی تعاون کرے گا۔

بالٹک ریاستیں روس کے یوکرین پر حملے سے قبل نیٹو فوجیوں کی تعداد میں 10 گنا اضافہ کرنے کے ساتھ ساتھ فضائی اور سمندری حدود کے دفاع کے لیے کوشش کر رہی ہیں۔

سرد جنگ کے بعد سے پہلی بار اتنے بڑے پیمانے پر اقدامات دیکھنے میں آ رہے ہیں۔

روس نے 24 فروری کو پڑوسی ملک یوکرین پر حملہ کیا تھا جس کے بعد سے مسلسل لڑائی جاری ہے۔ اس وقت امریکہ اور مغربی دنیا یوکرین کی حمایت کر رہی ہے جبکہ یوکرین کو یورپی یونین میں شمولیت کے لیے امیدوار کی حیثیت بھی دے دی گئی ہے۔

روسی حملوں میں بھی شدت آئی ہے اور صدر ولادیمیر پوتن کا کہنا ہے کہ یوکرینی فوج کے ہتھیار ڈالنے تک جنگ جاری رہے گی۔


News Source   News Source Text

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.