خوشی آخر ہے کیا

(Farzana jabeen, Islamabad)

آپ کیسی بھی زندگی جی رہے ہو۔ آپ اپنی زمدگی سے خوش ہو یا نہیں ۔ اپنی عادت میں شکر گزاری کے الفاظ کا استعمال شامل کر لیجیے ۔ یقین جانیے یہ آپ کے دل و دماغ پر بہت اچھا اثر کرے گا ۔ پہلے پہل آپ ان الفاظ کا استعمال صرف لفظوں کی حد تک کریں گے ۔ پھر آہستہ آہستہ آپ ان کے عادی ہو جاہیں گے ۔ اور پھر آپ کو یقین ہونے لگے گا کہ آپ خوش ہیں اپنی زندگی سے ۔ پھر یہ خوشی آپ کی شخصیت میں نظر آنے لگے گی اور آپ کی زندگی سچ میں بدل جاے گی ۔

جب بچے کو آئس کریم پہلی بار دی جاتی ہے تو وہ اس کے حد سے زیادہ ٹھنڈے پن کی وجہ سے اسے پسند نہیں کرتا ۔ پر جب اس کو جوش سے کہا جاتا ہے کہ آئس کریم کھاؤ گے تو بار بار کھانے سے وہ اسے اچھی لگنے لگتی ہے اور پھر وہ ضد کر کے آئس کریم مانگنے لگتا ہے ۔

بعض اوقات خوشی ہمارے آس پاس ہوتی ہے اور ہم اس کے ذائقے سے انجان ہونے کی وجہ سے اسے محسوس نہیں کر پاتے ۔

یقین جانیے کسی غم کا نہ ہونا بھی ایک خوشی ہے ۔
کسی الجھن سے نبھٹ کر واپس روٹین میں آنا بھی خوشی ہے ۔
ٹوٹتے رشتوں کا بچ جانا بھی خوشی ہے ۔
رونے کی کوئی وجہ نہ ہونا بھی خوشی ہے ۔
پیٹ بھر کر کھانا مل جانا بھی خوشی ہے ۔
صحت مند زندگی ہونا بھی خوشی ہے ۔
سخت گرمی میں اچانک بارش بھی خوشی ہے ۔

ہم ہمیشہ فلمی سین جیسی خوشی کی چاہ میں اپنے آس پاس موجود اوس کے قطروں کی سی خوشیوں کو دیکھ ہی نہیں پاتے اور زندگی اداسی کی نظر ہو جاتی ہے ۔

ہمیشہ i love you کا کہا جا نا ہی محبت نہیں ہوتی ۔
اکثر i hate you کا نہ کہا جانا بھی محبت ہوتی ہے ۔

 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Farzana jabeen

Read More Articles by Farzana jabeen: 29 Articles with 8614 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
01 Jun, 2021 Views: 400

Comments

آپ کی رائے