انعام ،بھیک ، رائیونڈ ،جی ،تجویز(سو لفظوں کی پانچ کہانیاں 1-5)

(Prof Talib Ali Awan, Sialkot)
 ٭ انعام
ماں اپنے بچوں کو ہمیشہ سچ بولنے کی تلقین کر رہی تھی :
ــ’’ دیکھو بیٹا ! جو مرضی ہوجائے ہمیشہ سچ بولنا ،جو سچ بولتے ہیں ان کو انعام ملتا ہے اور اﷲ تعالیٰ انہیں جنت میں داخل کرتا ہے ۔ اگر آئندہ تم سچ بولا کرو گے تو میں بھی تمہیں انعام دیا کرونگی ‘‘۔
سب بچے یک زبان بولے:’’ ٹھیک ہے امی‘‘۔
اگلے دن ماں کچن میں گئی تو اسے ٹوٹا ہوا گلاس ملا۔
ماں نے بچوں سے پوچھا :’’یہ گلاس کس نے توڑا ہے ؟‘‘
گڑیا :’’ امی مجھ سے ٹوٹا تھا ‘‘۔
ماں نے زور سے گڑیا کے منہ پر’’ تھپڑ‘‘ مارا ۔
٭ بھیک
کچھ لوگ چوراہے پر بحث و مباحثہ میں مصروف تھے ۔
’’ سٹاک ایکسچینج کی سطح بلند ہو رہی ہے ،اورنج ٹرین اور میٹرو بن رہی ہے ‘‘، ایک نے کہا۔
’’ زرمبادلہ کے ذخائر 20 ارب ڈالر سے زائد ہو گئے ہیں ،ڈالر جو پچھلی حکومت میں 112 روپے پر تھا اب 106 تک آگیا ہے ‘‘، دوسرا بولا ۔
’’سڑکیں بن رہی ہیں ،اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ پاکستان بڑی تیزی سے ترقی کر رہا ہے ‘‘، تیسرے نے کہا ۔
ایک بھکاری جو بڑے غور ان کی باتیں سن رہا تھا بولا:
’’ اب مجھے بچوں کا پیٹ پالنے کے لئے ’’بھیک ‘‘ تو نہیں مانگنا پڑے گی نا؟‘‘
٭ رائیونڈ
بھارتی جاسوس پکڑا گیا ،کوئی نہیں بولا ۔
محمود اچکزئی نے اسمبلی میں کہا :’’ میں پاکستان کو زندہ باد نہیں کہوں گا ‘‘، کوئی نہیں بولا۔
اسفندیار ولی نے کہا :’’ میں افغانی تھا، افغانی ہوں اور افغانی رہونگا ‘‘، کسی وزیر و مشیر نے جواب نہیں دیا ۔
الطاف نے پاکستان کو گالیاں دیں ،کسی میں جرأت نہیں ہوئی اسکا منہ بند کرنے کی ۔
عمران خان نے عید کے بعد رائیونڈ جانے کا اعلان کیا ۔
’’خبردار ! رائیونڈ کانام بھی لیا تو ، جس نے رائیونڈ کا رُخ کیا ٹانگیں توڑ دینگے ‘‘، کئی وزراء جھٹ سے بولے ۔
ویسے پاکستان کانام ’’ رائیونڈ ‘‘ رکھ دینا چاہیے ۔
٭ جی
ماں باپ اپنے بچوں کو اخلاق و آداب کا درس رہے تھے :
ــ’’ دیکھو بچو! بڑوں کا ادب واحترام کرتے ہیں ،ان سے تمیز سے بات کرتے ہیں ۔ جب بھی کوئی آواز دے تو ’’جی ‘‘ کہتے ہیں ۔ہمیشہ ’’جی ‘‘ کر کے بولتے ہیں ،جیسے ابو جی ،امی جی ،دادا جی ،نانی جی ‘‘۔
سب بچے یک زبان بولے:’’ ٹھیک ہے امی جی ، ابو جی،اب ہم ایسے ہی بولیں گے ‘‘۔
اگلے دن دروازے پر دستک ہوئی تو ماں نے آواز دی:
’’ پپو! بیٹاذرا دیکھنا تو دروازے پر کون ہے ؟‘‘
پپو: ’’ امی جی ! چاچو جی آئے ہیں اورساتھ ’’کتے جی ‘‘ بھی ہیں ۔
٭ تجویز
بیوی نے جب اپنے شوہر کودیکھا کہ وہ خوشگوار موڈ میں ہے توکہنے لگی :
’’ اے جی ! ہم نا ،ہفتے کو شاپنگ کے لئے جائیں گے ، اتوار کو امی کے گھر ، سوموار کو بیوٹی پارلر ، منگل کو پارک جائیں گے اور کسی اچھے سے ریسٹورنٹ سے ڈنر کریں گے ، بدھ کو جو نئی فلم آئی ہے وہ دیکھنے جائیں گے اور جمعرات کو لانگ ڈرائیو پر چلیں گے ، ٹھیک ہے نا!‘‘
’’ اور جمعہ کو مسجد چلیں گے ‘‘، شوہر نے ’’تجویز ‘‘پیش کی ۔
’’ وہ کیوں ؟ ‘‘، بیوی نے حیرت سے پوچھا ۔
’’ بھیک مانگنے کے لئے ‘‘ ، شوہر نے منہ بسورتے ہوئے کہا ۔

 
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Prof. Talib Ali Awan

Read More Articles by Prof. Talib Ali Awan: 50 Articles with 53415 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
12 Sep, 2016 Views: 1685

Comments

آپ کی رائے
Aap yehi story PTI kay khilaf likhen to apko iss se ziada bura response milta, PMLN ne punjab me work kia hai tabhi 8 sal se hakumat mai hai... sirf yeh arz hai zaib sahab ki bat ko samjhen aap ki iss story se sabaq kam or fasad ziada huwa hai agar dekha jaye to... Rahi bat Ali sahab ki to zahiri bat hai ap kisi maqbool party kay head quarter per fazool me tanqid karogy to resistance zahir hogi. baqya aap log PTI wale ho ap logo ko samjhana bekar hy
By: M. Akbar, Sargodha, Pakistan on Oct, 26 2016
Reply Reply
0 Like
میرے خیال کے مطابق پروفیسر صاحب نے کوئی غلط بات نہیں کی ہے۔
انہوں نے جو بات کہی ہے آپ خود ہی اسے صحیح ثابت کر رہے ہیں کہ پاکستان کو جو مرضی کہو رائےونڈ یا شریف خاندان کو کچھ نہیں کہنا۔
بات پارٹی کی نہیں ہونی چاہیے ۔ ملک کا سوچنا چاہیے۔ اگر پی ٹی آئی نے خیبر پختونخواہ میں تین سالوں سے کچھ نہیں کیا تو ان لوگوں نے تیس سالوں میں پنجاب میں کیا کر لیا ہے۔ نہ ماننے والوں کا کوئی علاج ہوتا۔
بات دلیل سے کرنی چاہیے ہٹ دھرمی سے نہیں
By: Muhammad Ali, Islamabad on Oct, 21 2016
Reply Reply
49 Like
nice stories
By: Abdullah Shabbir, Rawalpindi, Punjab, Pakistan on Oct, 21 2016
Reply Reply
22 Like
کوئی شک نہیں کہ سو لفظوں کی کہانی لکھنا بہت مشکل ہے پر زیب اسلام آباد والے دوست کی بات غلط نہیں سر جس چیز میں آپ سیاست کو لے آئیں گے وہ بدبودار ہو جائے گی آپ تحریک انصاف کے ہیں مگر سب کی رائے کا احترام کیا کریں محترم
By: باقی آزاد, Hyderabad, Sindh on Oct, 20 2016
Reply Reply
3 Like
Zaib bhai per itni tanqeed ki wajah yeh hai keh PTI wale sirf social media per hi hen they cant change even KPK, so jo koi in kay khilaf social media per bolyga us ko shadid tanqid ka nishana bnya jata hy beshaq wo sach bol raha ho
By: Bilal Hassan, Sambrial on Oct, 20 2016
Reply Reply
3 Like
Please avoid to convert your moral stories into politics. if you write against any party then be ready for their response also. I hope you will write good moral stories in future despite any political affiliation.
By: Khawar Azeem, Haripur on Oct, 20 2016
Reply Reply
3 Like
Mai jahan tak samjha hun to zaib sahb yeh kehna chahte they keh sahafi ko neutral rehna chahiye jo key bilkul galat bat nahi hai, agar aap 1 party ka writer ho kar likhengain to fasad to macheyga
By: Khurram Imtiaz, Dadu on Oct, 17 2016
Reply Reply
5 Like
Muhtram Janab Khurram Imtiaz Sb!
Mein Koi Sahafi (Journalist) nahi hon, Mein Ek Teacher hon.
Baqi apni apni samjh Ki Baat hai.
By: Pro. Talib Ali Awan, Sialkot on Oct, 18 2016
2 Like
hamaray liyai kahaniyan likhna asan hay magar so lafzi kahani may alfaaz ka jis terha qayal rakhna parhta hay wo kum az kam mujh jaisi likhari kay liyai mushkil hay ..... khair Allah Allah kerkay aik kahani likh ker post to kerdi magar yaqeen janiyai hummay aisa hi luga jaisay hum nay Himalaya sir kiya ho ..... Professor sahab aap nay bohoth hi khoobsurath kahaniya taqleek ki hain or wo bhi paanch aik saath wow ... baishak aap dad kay mustahiq hain ..... bila wajah ki tanqeed amooman her kissi likhari kay hissay may ati hi rehti hay ..... kehtay hain na baaz baton ko sun ker doosray kaan say nikal daina cha yai to aap bhi yahi ki jiyai .... in baytukay tubsaron per nigah-e-ghalath daltay huay agay barh jai yai .... Jazak Allah HU Khairan Kaseera
By: farah ejaz, Karachi on Oct, 15 2016
Reply Reply
6 Like
جی محترمہ فرح اعجاز صاحبہ آپ نے بلکل درست فرمایا ہے
کمنٹس کرنے کا بہت بہت شکریہ
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Oct, 16 2016
2 Like
زیب ، اسلام آباد کے کمنٹس اور ان سے اتفاق کرنے والے قابل افسوس ہیں ۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ سو لفظوں کی کہانیوں کے موجد مبشر علی زیدی صاحب ہیں ۔ تو انہوں نے کون سا نثر کی اس صنف کو اپنے نام پر پیٹنٹ کرا لیا ہے اور کسی دوسرے کو اس طرح لکھنے کا کوئی حق نہیں ہے ۔ مبشر صاحب کو تو کوئی اعتراض نہیں ہے ۔ وہ تو اپنی نقل اتارے جانے پر کوئی احتجاج نہیں کر رہے ۔ بلکہ ان کے لئے تو یہ ایک اعزاز ہے کہ لکھنے کی یہ نئی جہت ان کی ذات سے منسوب و مستند ہے اور ان کے نام کو ہمیشہ زندہ رکھنے کا باعث بنی رہے گی ۔ چاہے لاکھوں ایسی کہانیاں لکھ لی جائیں مبشر صاحب کی پہچان ختم نہیں ہو گی ۔ ہماری ویب پر سید انور محمود صاحب اب تک پچھتر ایسی کہانیاں لکھ چکے ہیں ۔ اور ہماری ویب کی جانب سے بھی ابھی حال ہی میں اس نوع کی کہانیوں کے ایک انعامی مقابلے کا آغاز کر دیا گیا ہے اور چند تحریریں شائع بھی ہو چکی ہیں تو پھر پروفیسر صاحب ہی نشانہء تنقید کیوں؟ جبکہ تحریر کا یہ انداز بہت محنت اور وقت مانگتا ہے کسی کہانی کو الفاظ کی ایک مخصوص تعداد کی قید میں رہتے ہوئے پوری جامعیت اور توازن کے ساتھ قلمبند کرنا اب ایسا کوئی حلوہ بھی نہیں اور نہ ہی ہر ایک کے بس کی بات ہے ۔ ہم نے بھی پہلی بار اس صنف تحریر میں طبع آزمائی کی ۔ لفظوں کے چناؤ اور ان کو ترتیب دینے میں جتنا وقت لگا اس میں ہم غیر مقید لفظوں پر مشتمل کئی کمنٹس لکھ لیتے ہیں ۔ اس تجربے کا متحمل ہونا اب اتنا سہل بھی نہیں ۔ کسی پر بےجا تنقید کر دینا بہت آسان ہوتا ہے جبکہ اس کا کوئی مقصد ہو نہ جواز ۔
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA on Oct, 15 2016
Reply Reply
12 Like
جی الحمداللہ.....!
میں بھی اب تک سو لفظوں کی 30 کہانیاں لکھ چکا ہوں، جن میں سے 20 ہماری ویب پر بھی موجود ہیں اور باقی بھی انشاءاللہ چند دنوں تک آن لائن ہو جائیں گی.
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Oct, 16 2016
2 Like
جی محترم رانا تبسم پاشا صاحب آپ نے بجا فرمایا ہے، یہ سب لوگوں کی سمجھ سے بالا ہے
کمنٹس کرنے کا بہت بہت شکریہ جناب
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Oct, 16 2016
2 Like
PTI walo ko harr jaga raiwand hi yad rehta nawaz phobia hogya hy
By: Mustansar Baloch, Lasbela on Oct, 14 2016
Reply Reply
3 Like
سر آپ اپنا کام کرتے رہیں. مجھے تو کمنٹس سے ہی پتا چل گیا ہے کہ زیب صاحب کا کس پارٹی سے تعلق ہے. سر بہتر ہو گا کہ آپ ایسے کمنٹس کا جواب نہ دیا کریں
By: Usama, Islamabad on Sep, 28 2016
Reply Reply
19 Like
Meray iss (100 Lafzon Ki Kahani) fun k Ustaad-e-Muhtaram Dr Mubashir Ali Zaidi Sb Kehtay hain:
"Jitna damagh 100 Lafzon Ki Kahani ko likhnay k liye chahye, itna parhnay aur samjhnay k liye b chahye hota hai."
Akhlaqi Kahanian jitni b hoti hain, zaroori nahi k woh sachi hon. Maqsad akhlaqi sabaq dena hota hai.
Misaal k taur per:
"A hare and a tortoise, A farmer and his son, A greedy Dog."etc...
Jin ko Samjh na aaye, unn say Maazrat.
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Sep, 30 2016
12 Like
It's okay.......
Mein hamesha koshish karta hon k kisi ki dil-azari na ho.
Har insaan nay apni aqal k mutabiq sochna hota hai. Hum nay apna kaam karna hai aur dosron nay apna.
Thank you
By: Pro. Talib Ali Awan, Sialkot on Sep, 29 2016
9 Like
aap ne jung newspaper waly sahafi ki nakal karny ki nakam koshish ki.. Allah Paak apko such likhny ki tofiq dai or neutral ho kar likhen to shaid koi faida ho warna siyasi bedhangi kahania to har koi likh sakta hai... anyway not impressive!
By: Zaib, Islamabad, Pakistan on Sep, 28 2016
Reply Reply
15 Like
زیب صاحب نے ٹھیک کہا ہے
By: Munkad haq, Rawalakot on Oct, 08 2016
7 Like
Strongly agree with zaib
By: Khawaja Nayab, Multan (Punjab) on Sep, 29 2016
9 Like
Alhamd-o-Lillah, Hamesha such hi likhnay ki koshish ki hai. Hamara kaam akhlaqi Sabaq dena Maqsood hota hai. Allah Kareem Aap ko such son'nay aur bardashat karnay ki tofeeq ataa farmaiy. Aameen
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Sep, 28 2016
10 Like
Hahahaha..........
Janab Zaib Sb!
Kaash k Aap Tasub ki ainak utaar kar parhtay.
Alhamd-o-Lillah.....Mein Allah k Fazal-o-Karm apnay Asaatza aur Waldain ki duaon say 2012 say likh raha hon. JANG aur DUNYA NEWSPAPERS mein 100 k qareeb Articles likh chuka hon. Abhi Chund din pehlay HAMARIWEB per b 3rd Prize jeet hasil kia hai. Aap k kehnay say Kia ho ga. Dunya ka sub say asaan kaam Nuqas nikalna hota hai.
Allah hamein Hadayat day....
By: Pro. Talib Ali Awan , Sialkot on Sep, 28 2016
10 Like
Bundles of Thanks to all for precious comments.....
By: Pro. Talib Ali Awan, Sialkot on Sep, 16 2016
Reply Reply
2 Like
Sir Excellent
By: M Ali , Islamabad on Sep, 15 2016
Reply Reply
2 Like
بہت زبردست اور سبق آموز کہانیاں ہیں
By: Usama, Lahore on Sep, 15 2016
Reply Reply
4 Like