طلاق ایک ناسور

(mini, mindi bhauddin)
ہمارے معاشرے کے بڑ ھتے ہوئے مسا ئل میں سے ایک بڑا مسئلہ طلاق ہے۔ طلاق کے معنی ازدواجی تعلق کا ٹوٹ جانا، وہ تعلق جو اللہ اور اس کے رسول کو گواہ بنا کر قائم ہوتا ہے۔ اسلام میں طلاق کی سہولت اس لیے دی گئ، کہ اگرمرد اور عورت ایک دوسرے سے اس قدر بے زار ہو جائیں ،کہ ازواجی تعلق کو قائم نہ رکھ پائیں تو طلاق کے ذریعے علیدگی اختیار کر لیں،نہ کہ اس لیے کہ جب دل چاہے اپنی مرضی سے اس لفظ کو استعمال کریں، پیارے نبی نے فرمایا، کہ؛اللہ تعالی کے نزدیک حلال چیزوں میں سب سے نا پسندیدہ چیز طلاق ہے؛ اس کا اندازہ اس بات سے کیا جاسکتا ہے کہ جب طلاق کے الفاظ کہے جاتے ہیں،تو عرش بھی کانپ جاتا ہے، آج کل یہ چیز بہت عام ہو چکی ہے ذرا ذرا سی بات پر ، کھڑے کھڑے طلاق جیسے قبیح الفاظ کا استعمال ایک معمول بن چکا ہے،،،،،، یہ حوا کی بیٹی کے ساتھ بہت ظلم ہے،، طلاق کے اس قدر بڑھتے ہوئے رجحان کا بڑا سبب وٹہ سٹہ ہے جس سے ایک ساتہ دو گھر اجڑتے ہیں،،، دوسرا بڑا سبب نا خواندگی ہے،، لوگوں کو اس بارے میں کوئی شعور نہیں،،،، آج کل مرد اسے ہتھیار کے طور پر استعمال کرتے ہیں، طلاق کی دھمکی سے عورت کی زندگی اجیرن کر دی جاتی ہے،،،، حقیقت تو یہ ہے، کہ ٢١ صدی میں ہوتے ہوئے بھی ہماری سوچ صدیوں پرانی ہے،، مرد خود کو حاکم سمجھتاہے اور عورت کو محکوم ،،،،اس سوچ کو بدلنے کی ضرورت ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: mini

Read More Articles by mini: 57 Articles with 35647 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
23 Nov, 2016 Views: 683

Comments

آپ کی رائے
yes it is
By: HuKhan, Karachi on Dec, 07 2016
Reply Reply
0 Like
thanks a lot
By: mini, mindi bhauddin on Dec, 07 2016
0 Like
nice
By: umama khan, kohat on Nov, 27 2016
Reply Reply
0 Like
thanks , umama sis
By: mini, mindi bhauddin on Nov, 27 2016
0 Like