دینے والا ہاتھ

(S.M Hashim, Karachi)
100لفظوں کی کہانی
 " بڑے ہو کر کیا بنو گے؟۔"
بس میں دورانِ سفر والدنے اپنے سات سالہ بیٹے سے پوچھا۔
بیٹے نے آنکھیں بند کی، سوچا ،پھرجھٹ سے جواب دیا۔
"بس کنڈیکٹر"
والد نے پوچھا۔
" کیوں؟"
" اُس کے پاس بہت سارے پیسے ہوتے ہیں۔"
بیٹے نے معصومانہ جواب دیا۔
ــ" پھر کنڈیکٹر ہاتھ پھیلاکر سب سے پیسے کیوں مانگتا ہے؟۔ـ"
والد نے سوال کرتے ہوئے بیٹے کی ہتھیلی کوپیار سے تھاما،
اور دوسرے ہاتھ کی پانچوں انگلیوں کو یکجا کر کے بیٹے کی ہتھیلی پر رکھا،
پھر اُسے سمجھایا۔
"بیٹا ! تمھارا ہاتھ، دینے والا ہونا چاہیئے، مانگنے اور چھیننے والا نہیں"۔
Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: Sheikh Muhammad Hashim

Read More Articles by Sheikh Muhammad Hashim: 77 Articles with 65503 views »
Ex Deputy Manager Of Pakistan Steel Mill & social activist
.. View More
05 Jan, 2017 Views: 613

Comments

آپ کی رائے
be inteha mutasir kun massage dia hy ap ne sirf 100 lafzoon mein.Lagta hy ap Mubashir Ali zaidi se kafi mutasir hey un ka rang charh raha hy ap per Allah mazeed zor qalam ata farmaey ap ko
By: Rabia Rizwan, Karachi on Jan, 07 2017
Reply Reply
0 Like
بہت عمدہ انداز پیغام
By: Hamida Ghanghro, Karachi on Jan, 07 2017
Reply Reply
0 Like