رمضان المبارک

(پیر آف اوگالی شریف, Khushab)

رمضان المبارک حضور انور سرکار کل جہاںصلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ارشاد فرماتے ہیں کہ ماہ رمضان المبارک اللہ تعالی کا مہینہ ہے۔ بہت ہی بابرکت اور فضیلت والا مہینہ ہے اور یہ صبر و شکر اور عبادت کا مہینہ ہے۔ اس ماہ مبارک کی عبادت کا ثواب ستر درجہ زیادہ عطا ہوتا ہے۔ جو کوئی اپنے پروردگار کی عبادت کرکے اس کی خوشنودی حاصل کرے گا اس کی بڑی جزا خداوند تعالی عطا فرمائے گا

خاص تحفہ رمضان شریف اسی طرح ایک روایت میں آتا ہے: جب بندہ مومن رمضان المبارک میں سحری کے وقت بیدار ہوجائے پھروضو کرے اور دو رکعت نماز ادا کرے تو اللہ تعالیٰ وتبارک اس کے پیچھے فرشتوں کی سات صفیں بنادیتاہے نماز سے فارغ ہونے کے بعد جب وہ دعا کے لئے ہاتھ اٹھاتا ہے تو فرشتے اس کی دعا پر آمین کہتے ہیں اور اللہ تعالیٰ عزوجل فرشتوں کی تعدادپر اس کو نیکیوں سے مالا مال فرماتا ہے اورفرشتوں کی تعداد کے مطابق اس کے گناہوں کو مٹاتا ہے ملائکہ اس کے لئے تاقیامت رحمت ومغفرت کی دعا کرتے رہتے ہیں

ماہ رمضان المبارک کی پہلی شب بعد نماز عشا ایک مرتبہ سورة فتح پڑھنا بہت افضل ہے۔ ماہ رمضان کی پہلی شب بعد نماز تہجد آسمان کی طرف منہ کرکے بارہ مرتبہ یہ دعا پڑھنی بہت افضل ہے۔ لآ اِلٰہَ اِلَّا اللہُ الْحُیُّ الْقَیُّوْمُ الْقَآئِمُ عَلیٰ کُلِّ نَفْسِِ بِمَا کَسَبَتْ۔ ماہ رمضان المبارک میں روزانہ ہر نماز کے بعد اس دعائے مغفرت کو تین مرتبہ پڑھنا بہت افضل ہے۔ اَسْتَغْفِرُا للّٰہَ الْعَظِیْمَ الَّذِیْ لَآاَلٰہَ اِلَّا ھُوَالْحَیُّ الْقَیُّوْمُ ط اِلَیْہِ تَوْبَةَ عَبْدِِ ظَالِمِِ لَا یَمْلِکُ نَفْسَہ ضَرََّاوَّلَا نَفْعََا وَّلَا مَوْتََاوَّلَا حَیٰوةََ وَّ لَا نُشُوْرََاط o رمضان شریف میں ہر نماز عشا کے بعد روزانہ تین مرتبہ کلمہ طیب پڑھنے کی بہت فضیلت ہے۔ اول مرتبہ پڑھنے سے گناہوں کی مغفرت ہوگی۔دوسری دفعہ پڑھنے سے دوزخ سے آزاد ہوگا۔ تیسری مرتبہ پڑھنے سے جنت کا مستحق ہوگا۔ ماہِ رمضان کی کسی بھی شب میں بعد نمازِ عشا سات مرتبہ سورة قدر پڑھنا بہت افضل ہے۔ انشا اللہ تعالی اس کے پڑھنے سے ہر مصیبت سے نجات حاصل ہوگی۔ شب قدر : شب قدر ایک مبارک رات ہے جو رمضان المبارک کے آخری عشرہ میں ہوتی ہے۔ اس رات کی عبادت ایک ہزار مہینے کی عبادت سے بھی بہتر ہے۔ اس لیے شب قدر بہت ہی فضیلت والی رات ہے۔ لیلة القدر کے معنی عظیم رات کے ہیں۔ حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضورصلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ شب قدر اکیسویں یا تئیسویں یا پچیسویں یا ستائیسویں رات یا انتیسویں رات میں تلاش کرو۔ اس سے معلوم ہوا کہ آخری عشرہ کی پانچوں راتیں بڑی برکت اور فضیلت والی ہیں۔ اکیسویں رات: اکیسویں رات کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے ہر رکعت میں بعد سور ةفاتحہ کے سورة قدر ایک ایک بار، سورة اخلاص ایک ایک مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے ستر مرتبہ درود پاک پڑھے۔ انشا اللہ تعالی اس نماز کے پڑھنے والے کے حق میں فرشتے دعائے مغفرت کریں گے۔ اکیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر ایک ایک بار، سورة اخلاص تین تین مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے نماز ختم کرکے ستر مرتبہ استغفارپڑھے۔ انشا اللہ تعالی اس نماز اور شب قدر کی برکت سے اللہ پاک اس کی بخشش فرمائے گا۔ ماہ رمضان المبارک کی اکیسویں شب کو اکیس مرتبہ سورة قدر پڑھنا بھی بہت افضل ہے۔ تئیسویں رات: ماہ مبارک کی تئیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر ایک بار اور سورة اخلاص تین تین مرتبہ پڑھے۔ پھر بعد سلام کے ستر مرتبہ درود شریف پڑھے۔ انشا اللہ تعالی مغفرتِ گناہ کیلئے یہ نماز بہت افضل ہے۔ تئیسویں شب کو آٹھ رکعت نماز چار سلام سے پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سور ةفاتحہ کے سورة قدر ایک ایک دفعہ، سورة اخلاص ایک ایک بار پڑھے اور بعد سلام کے ستر مرتبہ کلمہ تمجید پڑھے اور اللہ تعالی سے اپنے گناہوں کی بخشش طلب کرے۔ اللہ تعالی اس کے گناہ معاف فرما کر انشا اللہ تعالی مغفرت فرمائے گا۔ تئیسویں شب کو سورة یسین ایک مرتبہ، سورة رحمن ایک دفعہ پڑھنی بہت افضل ہے۔ پچیسویں رات: ماہ رمضان کی پچیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے۔ بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر ایک ایک بار، سور ةاخلاص پانچ پانچ مرتبہ ہر رکعت میں پڑھے۔ بعد سلام کے کلمہ طیب ایک سو دفعہ پڑھے۔ درگاہِ رب العزت سے انشا اللہ بے شمار عبادت کا ثواب عطا ہوگا۔ پچیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر تین تین مرتبہ، سورة اخلاص تین تین مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے ستر دفعہ استغفار پڑھے۔ یہ نماز بخشش کیلئے بہت افضل ہے۔ پچیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر ایک ایک مرتبہ، سورة اخلاص پندرہ پندرہ مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے ستر دفعہ کلم شہادت پڑھے۔ یہ نماز عذاب قبر سے نجات کیلئے بہت افضل ہے۔ ماہ رمضان کی پچیسویں شب کو سات مرتبہ سورة دخان پڑھے۔ انشا اللہ اس سورة کے پڑھنے کے باعث عذاب قبر سے اللہ پاک محفوظ رکھے گا۔ پچیسویں شب کو سات مرتبہ سورة فتح پڑھنا ہر کسی کیلئے بہت ہی افضل ہے۔ ستائیسویں رات: ستائیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة الم نشرح ایک ایک بار سورة اخلاص تین تین مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام 27مرتبہ سورة قدر پڑھے۔ انشا اللہ بے شمار عبادت کا ثواب ملے گا۔ یہ نماز بہت افضل ہے۔ جو شخص دو رکعت نماز میں ہر رکعت میں الحمد شریف، سورة قدر ایک بار سورة اخلاص تین بار پڑھے تو اس کو شب قدر کا ثواب حاصل ہوگا اور ثواب حضرت ادریس علیہ السلام، حضرت شعیب علیہ السلام، حضرت ایوب علیہ السلام، حضرت داؤد علیہ السلام، حضرت نوح علیہ السلام جیسا عطا ہوگا اور اس کو ایک شہر جنت میں دیا جائے گا جو مشرق سے مغرب تک لمبا ہوگا۔ (فضائل ایام و الشہور)حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ جو شخص شب قدر میں دو رکعت نماز پڑھے۔ ہر رکعت میں الحمد شریف کے بعد سات مرتبہ سورة اخلاص بعد سلام کے اَسْتَغْفِرُ اللّٰہَ الْعَظِیْمَ الَّذِی ْ لَآ اِلٰہَ اِلَّا ھُوَ الْحَیُّ الْقَیُّوْمُ وَاَتُوْبُ اِلَیْہِ ط ستر مرتبہ پڑھے تو یہ اپنے مصلے سے نہ اٹھے گا کہ اللہ تعالی اس کے اور اس کے والدین کے گناہوں کی مغفرت فرما دے گا اور فرشتوں کو حکم ہوگا کہ اس کیلئے جنت میں میووں کا درخت لگاتے رہیں۔ محل تعمیر کرتے رہیں، نہریں بناتے رہیں۔ یہ پڑھنے والا ان کو جب تک اپنی آنکھ سے خواب میں نہ دیکھ لے گا اس وقت تک اس کو موت نہ آئے گی۔ (تفسیر یعقوب چرخی)جو شخص چار رکعت پڑھے۔ ہر رکعت میں الحمد شریف کے بعد ایک بار سورة تکاثر اور سورة اخلاص تین بار پڑھے اس پر موت کی سختی آسان ہوگی۔ عذاب قبر اٹھ جائے گا۔ اس کو جنت میں چار ستون ملیں گے۔ جن کے ہر ستون پر ہزار محل ہوں گے۔ (نذہةالمجالس)جو شخص ستائیسویں شب رمضان کو چار رکعت پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد الحمد شریف کے سورة قدر تین بار اور سورة اخلاص پچاس مرتبہ پڑھے اور بعد نماز کے سُبْحَانَ اللّٰہَ وَالْحَمْدُ لِلّٰہِ وَلَآ اِلٰہَ اِلَّا اللہُ وَاللہُ اَکْبَر ط پڑھے تو جو دعا مانگے قبول ہوگی۔ جو شخص ستائیسویں شب میں چار رکعت پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد الحمد شریف کے سورة قدر ایک بار، سور ةاخلاص ستائیس بار پڑھے۔ وہ گناہوں سے ایسا پاک ہوجاتا ہے گویا ابھی پیدا ہوا ہے اور اس کو جنت میں ہزار محل ملیں گے۔ امیرالمؤمنین اولین والآخرین مولائے کائنات ایمان کل مولاعلی ابنِ ابی طالب علیہم السلام فرماتے ہیں کہ جو شخص شب قدر میں بعد نماز عشا سات مرتبہ سورہ قدر پڑھے اسے ہر مصیبت سے نجات ملے گی۔ ہزار فرشتے اس کیلئے جنت کی دعا کرتے ہیں۔ (نزہتہ المجالس، فضائل الشہور)ستائیسویں شب کو ساتوں حم پڑھے۔ یہ ساتوں حم عذاب قبر سے نجات اور مغفرت گناہ کیلئے بہت افضل ہیں۔ ستائیسویں شب کو سورة ملک سات مرتبہ پڑھنا مغفرتِ گناہ کیلئے بہت فضیلت کی بات ہے۔ انتیسویں رات: انتیسویں رات کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے۔ ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورة قدر ایک ایک بار، سورة اخلاص تین تین مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے سورة الم نشرح ستر مرتبہ پڑھے۔ یہ نماز کامل ایمان کے واسطے بہت افضل ہے۔انشا اللہ اس نماز کے پڑھنے والے کو دنیا سے مکمل ایمان کے ساتھ اٹھایا جائے گا۔ ماہِ رمضان کی انتیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھے اور ہر رکعت میں بعد سورة فاتحہ کے سورةقدر ایک ایک بار، سورة اخلاص پانچ پانچ مرتبہ پڑھے۔ بعد سلام کے درود شریف ایک سو دفعہ پڑھے۔ انشا اللہ تعالی اس نماز کے پڑھنے والے کو دربارِ خداوندی سے بخشش و مغفرت عطا کی جائے گی۔ ماہِ رمضان کی انتیسویں شب کو سات مرتبہ سورة واقعہ پڑھے۔ انشا اللہ تعالی ترقی رزق کیلئے بہت افضل ہے-
 

Comments Print Article Print
 PREVIOUS
NEXT 
About the Author: پیرآف اوگالی شریف

Read More Articles by پیرآف اوگالی شریف: 821 Articles with 819844 views »
Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
25 May, 2019 Views: 524

Comments

آپ کی رائے

مزہبی کالم نگاری میں لکھنے اور تبصرہ کرنے والے احباب سے گزارش ہے کہ دوسرے مسالک کا احترام کرتے ہوئے تنقیدی الفاظ اور تبصروں سے گریز فرمائیں - شکریہ