سیاسی غیر یقینی، سٹاک مارکیٹ میں اُتار چڑھاؤ کے باعث معمولی مندی

لاہور:  ملکی فضائوں میں چھائی غیر یقینی سیاسی صورتحال نے پاکستان سٹاک مارکیٹ کو اپنے اندر جکڑ لیا۔ کاروباری ہفتے کے دوسرے روز بھی اُتار چڑھاؤ کے باعث 100 انڈیکس 11.63 پوائنٹس گر گیا۔

تفصیلات کے مطابق میں میں چھائی غیر یقینی سیاسی صورتحال کے اثرات پاکستان سٹاک مارکیٹ پر اثر انداز ہونے لگے، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی وفاقی حکومت کے اتحادیوں (ایم کیو ایم، جی ڈی اے، مسلم لیگ ق) کے ساتھ اختلافات کی خبروں نے انویسٹرز کے ہاتھ روکے ہوئے ہیں جس کے باعث سرمایہ کار دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

آج کاروبار کا آغاز مثبت انداز میں ہوا، پہلے دو گھنٹوں کے دوران 100 انڈیکس میں 130 پوائنٹس کی تیزی دیکھی گئی جس کے بعد حصص مارکیٹ کا انڈیکس 43356.86 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا تھا، اس کا تسلسل اگلے ڈیڑھ گھنٹے کے دوران بھی دیکھنے کو ملا جس کے باعث ٹریڈنگ کے دوران 43400 کی حد بھی بحال ہو گئی تھی اور انڈیکس 46468.22 پوائنٹس کی سطح پر دیکھا گیا۔

تاہم اس دوران غیر یقینی سیاسی صورتحال کے باعث ایک مرتبہ پھر مندی نے سٹاک مارکیٹ میں ڈیرے ڈالے اور انڈیکس میں 250 پوائنٹس کی مندی دیکھی گئی جس کے باعث انڈیکس دوبارہ 43200 پوائنٹس کی سطح پر آ گیا تھا ۔تنزلی کا تسلسل چلتا رہا اور انڈیکس 43095.41 پوائنٹس کی سطح پر آ گیا۔

سٹاک مارکیٹ میں کاروبار کا اختتام 11.63 پوائنٹس کی مندی پر ہوا اور انڈیکس 43218 پوائنٹس سے گر کر 43207.04 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا۔ پورے کاروباری روز کے دوران 0.03 فیصد کی تنزلی دیکھی گئی جبکہ 15 کروڑ 11 لاکھ 27 ہزار 510 شیئرز کا لین دین ہوا۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ سٹاک مارکیٹ میں اس وقت غیر یقینی صورتحال چھائی ہوئی ہے، ملک میں سیاسی غیر یقینی کے باعث ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کار پیسے لگانے سے گریزاں ہیں، حالانکہ عالمی سطح پر معیشت کے حوالے سے اچھی خبروں نے کاروبار کے دوران اچھے اثرات ڈالے تاہم ایم کیو ایم، جی ڈی اے اور عدالتی فیصلے کے اثرات کے باعث سرمایہ کار دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ قوی امکان ہے کہ گراوٹ کے باعث سرمائے کے انخلاء کو انویسٹرز آئندہ روز میں بہتر کریں اور اگلے ٹریڈنگ سیشنز کے دوران تیزی دیکھنے کو ملے۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.