دہلی میں ہوئے تشدد کے لئے مرکزی حکومت قصوروار، امت شاہ استعفی دیں: سونیا گاندھی

کانگریس صدر سونیا گاندھی نے دہلی میں ہوئے تشدد کے لئے مرکزی حکومت کو قصوروار ٹھہراتے ہوئے وزیر داخلہ امت شاہ سے استعفی اور دارالحکومت میں امن بحال کرنے کے لئے فوری طور پر اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

سونیا گاندھی نے آج اچانک کانگریس ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس طلب کرکے راجدھانی کی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے یہ مطالبہ کیا۔

کانگریس کی رہنما نے کہا کہ ’تمام حالات کو دیکھتے ہوئے کانگریس ورکنگ کمیٹی کا ماننا ہے کہ موجودہ حالات کے لیے مرکزی حکومت اور خاص طور پر وزیر داخلہ امیت شاہ ذمہ دار ہیں۔

دہلی کے وزیر اعلیٰ اور دہلی حکومت بھی امن و امان قائم رکھنے میں بری طرح ناکام رہی ہے اور ذمہ دار ہے۔ دونوں حکومتوں کی ناکامی کے سبب دلی اس المیے کا شکار بنی۔‘

انھوں نے اس حوالے سے چند سوالات بھی پوچھے کہ گذشتہ اتوار سے جب سے پرتشدد واقعات شروع ہوئے ہیں وزیر داخلہ کیا کر رہے تھے؟

نئی دہلی میں فسادات، ہلاکتوں کی تعداد 20 ہوگئی، سیکڑوں زخمیدہلی کے وزیر اعلیٰ کہاں تھے کیا کر رہے تھے؟ دہلی کے انتخابات کے بعد انٹیلی جنس ایجنسیوں نے کیا معلومات دیں اور ان پر کیا کارروائی کی گئی؟

ریس کانفرنس میں سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ اور سینئر لیڈر غلام نبی آزاد کے علاوہ کانگریس کے سینئر لیڈر بھی موجود تھے۔

کانگریس کے ترجمان رنديپ سرجےوالا نے اس دوران بتایا کہ کانگریس کا ایک اعلی سطحی وفد اس سلسلے میں آج راشٹرپتی بھون کی جانب مارچ کرکے صدر کو ایک میمو دینے والا تھا لیکن صدر سے آج صبح ملاقات نہ ہو پانے کی وجہ سے مارچ اب کل نکالا جائے گا۔

کانگریس ورکنگ کمیٹی میں ایک قرارداد بھی منظور کی گئی جس میں دہلی میں ہو رہے تشدد، جان و مال کے نقصان اور ہر روز ابتر ہوتی صورت حال پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔

قرارداد میں کہا گیا کہ دردناک حادثوں کے پیچھے ایک سوچی سمجھی سازش ہے۔ مرکز اور دہلی حکومت نے جان بوجھ کر کارروائی کرنے میں تاخیر کی، جس سے 20 سے زائد زندگیاں تلف ہو چکی ہیں۔

کانگریس ورکنگ کمیٹی سبھی کنبوں کے ساتھ گہری تعزیت کا اظہار کرتی ہے اور سبھی زخمیوں کے جلد صحت مند ہونے کی تمنا کرتی ہے۔ قرار داد کے مطابق دہلی کی حالت کافی سنجیدہ ہے اور اس پر فوری طور پر نوٹس لئے جانے کی ضرورت ہے۔

صورت حال کو کنٹرول میں کرنے کے لئے فوری طور پر اضافی سیکورٹی فورس تعینات کی جانی چاہیے۔ میٹنگ کے بعد پرینکا گاندھی نے دلی کے شہریوں سے امن برقرار رکھنے اور تشدد سے دور رہنے کی اپیل کی۔

انھوں نے نیم فوجی دستوں کی تعیناتی کا بھی مطالبہ کیا ہے اور خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اموات میں اضافہ ہو سکتا ہے اور فسادات دوسری ریاستوں میں بھی پھیل سکتے ہیں۔

دہلی اور گردونواح کے علاقوں میں پرتشدد واقعات سے ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 23 ہو چکی ہے جب کہ 189 افراد زخمی ہوئے ہیں۔


 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.