واٹس ایپ کی متنازع پالیسی کے بعد سگنل ایپ اسٹور پر سرِ فہرست

واٹس ایپ کی متنازع پالیسی کے بعد بہت سے صارفین ایسی ہی ایک ایپ ’’سگنل‘‘ کی جانب تیزی سے بڑھ رہے ہیں جبکہ برطانوی عوام ٹیلی گرام ایپ میں دلچسپی ظاہر کررہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ’سگنل‘ ایپ اسٹور پر پہلے نمبر پر آچکی ہے اور واٹس ایپ کا دور و دور تک کوئی پتا نہیں کیونکہ  دوسرے نمبر پر ایسی ہی ایک ایپ ٹیلی گرام ہے۔

دوسری جانب واٹس ایپ کی سخت لیکن مبہم پالیسیوں کی وجہ سے لوگ اسے ترک کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پیغام رسانی اور انٹرنیٹ آڈیو، ویڈیو کالنگ کے لیے استعمال ہونے والی دنیا کی مقبول ترین ایپ واٹس ایپ انتظامیہ نے پرائیویسی پالیسی کی تبدیلی کے حوالے سے پھیلنے والی افواہوں کی تردید کردی ہے۔

متعلقہ خبرنئی پالیسی پر تنقید کے بعد واٹس ایپ بانی کی وضاحت

معروف سوشل اینڈ میسجنگ موبائل ایپلی کیشن واٹس ایپ کی نئی پرائیویسی...

واٹس ایپ کی نئی پرائیویسی پالیسی کا اطلاق ابھی ہوا نہیں مگر ابھی سے وہ دنیا بھر میں متنازع بن چکی ہے، اس پالیسی کا نفاذ 8 فروری 2021 سے ہونا تھا اور صارفین کے پاس اسے قبول کرنے کے لیے نوٹیفکیشنز بھیجنے کا سلسلہ جنوری کے آغاز سے شروع ہوگیا تھا۔

واٹس ایپ کی اس پالیسی پر لوگوں کی جانب سے شدید تنقید کی جارہی ہے اور مختلف افواہیں بھی سوشل میڈیا پر گردش کررہی ہیں جبکہ اس کی حریف ایپس جیسے سگنل اور ٹیلیگرام کو ڈاؤن لوڈ کرنے والے افراد کی تعداد میں حالیہ دنوں میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر واٹس ایپ کی جانب سے وضاحت جاری کی گئی ہے جس کو انہوں نے کچھ افواہوں کا جواب قرار دیتے ہوئے کہا کہ صارفین کا ڈیٹا مکمل محفوظ ہے، اُن کے پیغامات انکرپٹڈ ہی رہیں گے۔

We want to address some rumors and be 100% clear we continue to protect your private messages with end-to-end encryption. pic.twitter.com/6qDnzQ98MP

— WhatsApp (@WhatsApp) January 12, 2021

اس سے قبل واٹس ایپ کے سربراہ بھی صارفین کے ذہنوں میں پیدا ہونے والے شکوک و شبہات کا تفصیلی جواب دے چکے ہیں مگر سوشل میڈیا پر یہ معاملہ تاحال زیر بحث ہے۔

-->

 

WATCH LIVE NEWS

Samaa News TV PTV News Live Express News Live 92 NEWS HD LIVE Pakistan TV Channels

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.

280