کورونا کی نئی قسم ’اومی کرون‘ سے نمٹنے کے لیے انگلینڈ میں ماسک لازمی

image
انگلینڈ میں کورونا کے نئے ویریئنٹ اومی کرون کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ماسک لازمی قرار دے دیا گیا ہے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق انگلینڈ میں ماسک مینڈیٹ اور دیگر حفاظتی اقدامات کا نفاذ منگل کو ہوا جبکہ وزیراعظم بورس جانسن کووڈ19 کے خلاف تحفظ کو بڑھانے میں مدد کے لیے ایک توسیعی بوسٹر پروگرام شروع کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

انگلینڈ میں منگل کی صبح سے ٹرانسپورٹ، دکانوں بینکوں اور ہیئر سیلونز میں چہرے کے ماسک لازمی ہیں۔

تمام بین الاقوامی مسافروں کو انگلینڈ پہنچنے کے بعد دوسرے دن کے آخر تک پی سی آر ٹیسٹ کرانا ہو گا اور جب تک وہ ٹیسٹ کا رزلٹ نہیں لے لیتے خود کو الگ تھلگ رکھیں گے۔

یہ 10 جنوبی افریقی ممالک سے آنے والوں پر پابندیوں کے علاوہ ہے، ان ممالک سے آنے والوں کو ہوٹل کے قرنطینہ میں داخل ہونا پڑے گا۔

برطانیہ میں اب تک اومی کرون کی مختلف حالتوں کے 11 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جب کہ حکومت کا کہنا ہے کہ یہ تعداد بڑھے گی۔

بورس جانسن نے ایک بیان میں کہا کہ ’آج جو اقدامات نافذ ہو رہے ہیں وہ مناسب اور ذمہ دارانہ ہیں۔‘

انہوں نے کہا کہ ’آج کے اقدامات نہ صرف اس نئے ویریئنٹ کے پھیلاؤ کو کم کرنے میں ہماری مدد کریں گے بلکہ وہ ہماری ان چیزوں کی حفاظت میں مدد کریں گے جن کے لیے ہم سب نے بہت محنت کی ہے۔‘

برطانیہ میں اب تک اومی کرون کی مختلف حالتوں کے 11 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ (فائل فوٹو: اے ایف پی)

بورس جانسن نے مزید کہا ہے کہ تین ہفتوں کے بعد ان اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا۔

پیر کو ویکسین سے متعلق مشیروں نے تمام بالغ افراد کے لیے ایک بوسٹر پروگرام کو آگے بڑھانے کی منظوری بھی دی اور وزیر صحت ساجد جاوید نے کہا کہ اس ہفتے اس پر عمل درآمد کے بارے میں مزید تفصیلات سامنے آئیں گی۔

توقع کی جا رہی ہے کہ بوسٹر شاٹس سے شدید بیماری سے حفاظت میں مدد ملے گی۔


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.