سوڈان: فوجی بغاوت کے خلاف فسادات پھوٹ پڑے، متعدد افراد جاں بحق

image

سوڈان میں فوجی بغاوت کے خلاف فسادات  کے نتیجے میں متعدد افراد مارے گئے۔ واقعہ عبوری سویلین حکومت کی بحالی کے لئے امریکی سفارت کاروں کی آمد سے قبل پیش آیا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ برس ملک میں ہونے والی فوجی بغاوت کے خلاف پیر کے روز دارالحکومت خرطوم میں ہزاروں افراد نے فوج مخالف مظاہرے میں شرکت کی۔

مظاہرین جب صدارتی محل کی طرف جا رہے تھے تو سیکورٹی فورسز نے ان پر آنسو گیس کی شیلنگ اور فائرنگ کی۔

جوابا پیر کے روز ہزاروں افراد دارالحکومت کی سڑکوں پر ایک بار پھر نکل آئے۔

یاد رہے کہ اس ماہ کے اوائل میں سوڈانی وزیر اعظم عبداللہ حمدوک کے مستعفی ہونے کے باعث صورت حال مزید پیچیدہ ہوگئی تھی۔

سوڈان کی جمہوریت نواز تحریک نے فوجی طاقت کے استعمال کی مذمت کی ہے۔

دوسری جانب سلامتی کونسل نے امن کو ہر صورت برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔

 اقوام متحدہ نے اس ماہ کے اوائل میں اعلان کیا تھا کہ وہ سوڈان کے سیاسی بحران کو ختم کرنے کا راستہ تلاش کرنے پر غور کررہے ہیں۔

امریکی وزارت خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے ٹوئٹر پر ایک بیان میں کہا کہ امریکا مظاہرین کے خلاف تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات کی خبروں سے فکر مند ہیں

 سیکورٹی فورسز کو تشدد ختم کرنے کے لیے آمادہ کرنے کے غرض سے دو امریکی سفارت کار خرطوم جا رہے ہیں۔

فوجی آمر جنرل برہان کا کہنا ہے کہ اقتدار پر فوج کا قبضہ کوئی فوجی بغاوت نہیں ہے بلکہ عمر البشیر کے اقتدار چھوڑنے کے بعد کی عبوری صورت حال کو ”درست” کرنے کی کوشش ہے۔

Square Adsence 300X250


News Source   News Source Text

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
عالمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.