انٹرمیڈیٹ: ضمنی /خصوصی امتحانات کیلئے امتحانی فارم جمع کروانے کی تاریخوں میں بروز جمعہ 28 جنوری تک توسیع

image

اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کراچی کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر سعید الدین نے انٹرمیڈیٹ کے ضمنی /خصوصی امتحانات کیلئے امتحانی فارم جمع کروانے کی تاریخوں میں بروز جمعہ 28جنوری 2022ء تک توسیع کا اعلان کردیا ہے۔ انٹرمیڈیٹ کے تمام گروپس سائنس پری میڈیکل، پری انجینئرنگ، سائنس جنرل، کامرس، آرٹس، ہوم اکنامکس بشمول امپروومنٹ آف ڈویژن/گریڈ، بینیفٹ کیسز، ایڈیشنل سبجیکٹس، اسپیشل چانس اور ڈپلومہ ان فزیکل ایجوکیشن کے طلبہ و طالبات اب اپنے امتحانی فارم بروز جمعہ 28جنوری 2022ء تک بورڈ آفس میں جمع کرواسکتے ہیں۔ چیئرمین انٹربورڈ پروفیسر ڈاکٹر سعید الدین نے بتایا ہے کہ امپروومنٹ آف ڈویژن کے خواہشمند طلبہ و طالبات کو خصوصی رعایت دیدی گئی ہے، اب امپروومنٹ آف ڈویژن کے طلباء انٹرمیڈیٹ حصہ اول اور حصہ دوم کا ایک پرچہ یا دو پرچے بھی دے سکتے ہیں جبکہ حصہ اول کے تمام پرچے یا حصہ دوم کے تمام پرچے بھی دے سکتے ہیں۔ ایسے تمام طلباء جو کسی ایک مضمون یا دو مضامین میں حصہ اول کا امتحان دیں گے ان کیلئے حصہ دوم کے اسی مضمون یا مضامین کا امتحان دینا ضروری ہوگا۔ انہوں نے مزید بتایا کہ طالبات اپنے امتحانی فارم انٹربورڈ آفس کی مین بلڈنگ میں واقع یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ کے بوتھ میں جمع کروائیں گی جبکہ طلبہ اپنے امتحانی فارم اور فیس یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ کی بلاک اے نارتھ ناظم میں واقع ڈی سلوا برانچ اور بورڈ آفس کے مین گیٹ پر واقع جے ایس بینک (JS Bank) کی برانچ میں جمع کروائیں گے۔ طلبہ امتحانی فارم اور فیس واؤچر انٹربورڈ کی ویب سائٹ www.biek.edu.pk سے ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں۔انٹرمیڈیٹ کے امتحانات میں ناکام رہے والے امیدواروں سے حصہ اول یا حصہ دوم میں کسی ایک کا امتحان دینے پر 2100روپے اور حصہ اول و دوم باہم کے امتحانات کیلئے 3600روپے فیس وصول کی جائے گی جبکہ امپروومنٹ آف ڈویژن کے امتحانات دینے والوں کیلئے امتحانی فیس 6000 روپے رکھی گئی ہے۔ تمام طلبہ کو ہدایات دی جاتی ہیں کہ امتحانی فارم جمع کروانے کیلئے بورڈآفس میں کسی غیرمتعلقہ شخص سے ہرگز رابطہ نہ کریں۔


Click here for Online Academic Results

WATCH LIVE NEWS

مزید خبریں
تعلیمی خبریں
مزید خبریں

Meta Urdu News: This news section is a part of the largest Urdu News aggregator that provides access to over 15 leading sources of Urdu News and search facility of archived news since 2008.